عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Thursday, September 19,2019 | 1441, مُحَرَّم 19
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
PamphHumanism آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
’بتانِ رنگ و خوں‘ میں ایک اور اضافہ... ’مذہب‘! (فصل 4 فتنۂ ہیومن ازم)
:عنوان

کسی کے رنگ، نسل، خون، مذہب اور جنس کو تبدیل کرنا ہیومن ازم کے مقاصد میں شامل نہیں ۔ البتہ یہ کسی ’’تفریق‘‘ یا ’’تمییز‘‘ کی بنیاد نہیں ہوگی۔ یہ بنیاد جس پر ’’تفریق‘‘ کرنا جائز ہوسکتا ہے، جہاں ضرورت ہو، ’’ہیومن اسٹ‘‘ عقیدہ آپ کو خود تجویز کرکے دے گا!

. باطلفكرى وسماجى مذاہب :کیٹیگری
حامد كمال الدين :مصنف

’بتانِ رنگ و خوں‘ میں ایک اور اضافہ... ’مذہب‘!

فصل 4۔ فتنۂ ہیومن ازم

یہ ہے وہ وجہ جو بار بار ہمیں ’’انسان‘‘ بننے اور اشیاء کو ’’انسان‘‘ کی نظر سے دیکھنے کے سبق دیے جارہے ہیں۔ اِس ’’انسان‘‘ کا مطلب کون نہیں جانتا... بشرطیکہ آپ نے ’’ہیومن ازم‘‘ سے کچھ واقفیت پا رکھی ہو؟ اس اصل کہانی کو تو پیچھے رکھا جارہا ہے البتہ ’’انسانیت‘‘ کے اسباق کی ہم پر بھرمار کردی گئی ہے۔  آخر ہمارے مبلغین کہاں ہیں جو اِس ’’انسانیت‘‘ کا پردہ چاک کریں کہ دراصل اس سے مراد ’’انسان پرستی‘‘ ہے جو ’’خداپرستی‘‘ کا باقاعدہ متبادل ہے۔ ’’خداپرستی‘‘ جس کو ہم اپنے الفاظ میں ’’توحید‘‘ یا ’’اسلام‘‘ کہتے ہیں، یہ ہیومن ازم اس کا باقاعدہ متبادل ہے۔  یہ ہے وہ مطلب جو ہمارے ذہنوں میں ہی نہیں ہمارے رویوں کے اندر اتارا جا رہا ہے کہ ہم اشیاء کو ’’مسلمان‘‘ کے طور پر نہیں بلکہ ’’انسان‘‘ کے طور دیکھیں! ملتوں کے فرق کو ایک ’’مسلم‘‘ اور ’’موحد‘‘ کی نظر سے نہیں ایک ’’انسان‘‘ کی نظر سے لیں! یہ تو دین بدلنا ہوا؛ یعنی ہم دنیا کے جملہ امور اور مسائل کو، خصوصاً ملتوں کے فرق کو، ’’اسلام‘‘ کی بجائے کسی اور پیمانے پر جانچیں۔ یہ سب ’چھوٹے موٹے‘ مظاہر جو فی الوقت ہمارے سامنے لائے جارہے ہیں، درحقیقت ایک نئے دین کی ترویج ہے۔

چنانچہ اب تابڑتوڑ، آپ کے بچوں، جوانوں اور ’باشعور‘ عوام پر اِنہی ’تعلیمات‘ کی بوچھاڑ ہورہی ہے...  بھائی خدارا  پیار کرو۔ محبت کرو۔ انسانوں کو ’’انسان‘‘ کے سوا کسی اور نظر سے دیکھنا حرام جانو۔ بلکہ کفر جانو (کفر اَب دنیا میں ہے تو بس یہی ہے کہ لوگوں کو ’’انبیاء کا پیروکار‘‘ یا ’’انبیاء کا منکر‘‘ میں بانٹ کر دیکھو!)۔  انسانوں کو صرف اِس ایک نظر سے دیکھو کہ یہ ’’انسان‘‘ ہیں؛ اِس کے علاوہ یہ کچھ نہیں۔ مسلم ہیں، ہندو ہیں، سکھ ہیں، یہودی ہیں، عیسائی ہیں، مجوسی ہیں، دہریہ ہیں... سب ’بعد کی بات‘ ہے... بہت ہی ’بعد کی بات‘۔ بلکہ ’بعد کی بات‘ بھی تب تک ہے جب تک ’دینی حمیت‘ کے وہ پرانے باقیات تمہارے اپنے دماغوں سے کھرچ نہیں دیے جاتے اور جوکہ ایک لانگ ٹرم پراجیکٹ ہے، ہاں یہ پراجیکٹ سرے لگے تو کسی کا مسلم ہونا، یا ہندو یا سکھ ہونا، یا یہودی، عیسائی، مجوسی یا دہریہ ہونا، انبیاء سے وابستہ یا انبیاء کا انکاری ہونا ’بعد کی بات‘ بھی نہیں رہے گی بلکہ ایک ’’بیہودہ‘‘ بات ہوجائے گی۔ آپ آنکھیں کھول کر دیکھنے پر تیار ہوں تو سب معاملہ بڑی تیزی اور کامیابی کے ساتھ ادھر ہی  کو جا رہا ہے؛ جہاں ’’دین‘‘ ایک اضافی چیز ہو جائے گا؛ انسانوں کو پہچاننے اور ممیز کرنے کے حوالے سے ایک ’غیراہم‘ نہیں بلکہ ’’غیرمعقول‘‘ بنیاد قرار پائے گی۔

 یعنی ایک نئی ملت، جس میں سب دوسری ملتیں ضم ہوجانے والی ہیں۔ ’بتانِ رنگ و خوں‘[1]  کی طرح اس میں گم ہوجانے والی ہیں۔  یہ سب پہچانیں اس نئی ’’ملت‘‘ (ہیومن ازم) کے اندر اپنی ایک کمتر حیثیت میں رہیں گی ضرور، کیونکہ کسی کے رنگ، نسل، خون، مذہب اور جنس کو تبدیل کرنا اس کے مقاصد میں شامل نہیں ۔  البتہ یہ کسی ’’تفریق‘‘ یا ’’تمییز‘‘ کی بنیاد نہیں  ہوگی۔  یہ بنیاد جس پر ’’تفریق‘‘ کرنا جائز ہوسکتا ہے، جہاں ضرورت ہو، ’’ہیومن اسٹ‘‘ عقیدہ آپ کو خود تجویز کرکے دے گا!

آپ غور فرمائیں تو ’’ملت‘‘ کا تصور ہی درحقیقت یہاں سے آتا ہے یعنی انسانوں کو جوڑنے اور توڑنے کی بنیاد۔ وہ کہتے ہیں کہ یہ بنیاد ’’اسلام‘‘ (خدا کا بندہ ہونا) نہیں بلکہ ’’انسانیت‘‘ خود ہے یا ’’انسانیت‘‘ کی اپنی پاس کی ہوئی کوئی چیز مانند ’’وطن‘‘ وغیرہ۔ یعنی وہ خدا کا بندہ ہو یا خدا کے کسی شریک اور ہمسر کا بندہ بن گیا ہو، انسانوں کے مابین تمییز کی یہ بنیاد بہرحال نہیں۔  ہمارے نام نہاد دانشور جو ہمارے سادہ لوح نوجوانوں کے حلق سے ’’ہیومن ازم‘‘ کی یہ خوراکیں اتار رہے ہیں مکاری سے کام نہ لیں تو آپ کو بتائیں گے کہ ان کی اِس نئی ملت میں ’’دین‘‘ کو انسانوں کے مابین تمییز کے حوالہ سے وہ حیثیت بھی حاصل نہیں جو ’بتانِ رنگ و خون‘ کو حاصل ہے؛ کیونکہ رنگ، خون، ملک وغیرہ ثابت وغیر متغیر قدریں ہیں یعنی ان کو آپ تبدیل نہیں کرسکتے لہٰذا انسانوں کے مابین تمییز اور پہچان کے حوالے سے یہ پھر کسی درجے میں معتبر ہیں۔ البتہ آدمی کا ’’دین‘‘ چونکہ بڑی آسانی کے ساتھ تبدیل ہوسکتا ہے اور اس کو تبدیل کرنے پر اتنی بھی تکلیف یا لاگت نہیں آتی جتنی ’جنس‘ کی تبدیلی پر، لہٰذا دین کی یہ حیثیت کہ یہ انسانوں کے مابین لکیر کھینچ ڈالنے کی بنیاد ہو آخری درجے کی رد ہونے والی چیز ہے۔  یعنی ملتِ ہیومن ازم کے اندر ’’دین‘‘ جس حیثیت میں قبول ہے وہ ’خون‘ اور ’چمڑی کے رنگ‘ سے بھی کمتر ہوگی۔ پس جہالت کا عذر دینا ہو تو اور بات ہے ورنہ ہیومن ازم پر صاف صاف ایمان رکھنے والے شخص کا مسلمان رہنا ناممکنات میں ہے۔ یہ لوگ جو کچھ کہلانا چاہیں کہلائیں مگر ’’مسلمان‘‘ ایک شرعی حقیقت ہے، یہ کوئی ’سماجی محاورہ‘ بہرحال نہیں۔ 



[1]   ہر ملت کا یہی دستور ہے۔ وہ خود تو انسانوں کے مابین تفریق کی ایسی ’عظیم‘ بنیاد ہوتی ہے جو نہ صرف جائز بلکہ واجب بلکہ اوجب الواجبات ہو۔  البتہ انسانوں کے مابین تمییز کے باقی حوالوں (رنگ، خون، نسل، جنس وغیرہ) کو ظاہر ہے ختم تو کر نہیں سکتی، مگر ان کی یہ حیثیت ضرور ختم کردیتی ہے کہ وہ انسانوں کے مابین فرق کی کوئی اہم  بنیاد ہو۔

فہرست موضوعات

مقدمہ:فتنۂ ہیومن ازم

ڈھا دے مسجد، ڈھا دے مندر

مذاہب حاضر کیے جائیں

ادیان کی ریفارم

بتانِ رنگ و خوں میں ایک اور اضافہ: ’مذہب‘!

ہیومن ازم کےلیے ’اسلامی‘ بنیادوں کی فراہمی

کفر کو گھناؤنی چیز بنا کر بھی پیش مت کرو!

مـنــشـــــــــــــوراتِ ايقــــــــــــــــــــاظ

پوسٹ بکس نمبر  10262 لاہور   matbooateqaz@gmail.com      

http://www.eeqaz.org/
Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
ریاستی حقوق؛ قادیانیوں کا مسئلہ فی الحال آئین کے ساتھ
Featured-
باطل- اديان
حامد كمال الدين
ریاستی حقوق؛ قادیانیوں کا مسئلہ فی الحال آئین کے ساتھ حامد کمال الدین اعتراض: اسلامی۔۔۔
ایک ٹھیٹ عقائدی تربیت ہماری سب سے بڑی ضرورت
اصول- منہج
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
اصول- عقيدہ
حامد كمال الدين
ایک ٹھیٹ عقائدی تربیت ہماری سب سے بڑی ضرورت حامد کمال الدین اسے فی الحال آپ ایک ناقص استقر۔۔۔
کچھ مسلم معترضینِ اسلام!
باطل- جدال
حامد كمال الدين
کچھ ’مسلم‘ معترضینِ اسلام! تحریر: حامد کمال الدین پچھلے دنوں ایک ٹویٹ میرے یہاں سے  ہو۔۔۔
فیمینسٹ جاہلیت کو جھٹلاتی ایک نسوانی تحریر
ثقافت- خواتين
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
ادارہ
فیمینسٹ جاہلیت کو جھٹلاتی ایک نسوانی تحریر اجالا عثمان انٹرنیٹ سے لی گئی ایک تحریر جو ہمیں ا۔۔۔
غامدى اور عصر حاضر ميں قتال
باطل- فرقے
اعتزال
ادارہ
ایک فیس بکی بھائی نے غامدی صاحب کی جہاد کے موضوع پر ویڈیو کا ایک لنک دے کر درخواست کی تھی کہ میں اس ویڈیو کو ۔۔۔
زیادتی زیادتی میں فرق ہے
باطل- فرقے
احوال- وقائع
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین ایک بڑی خلقت واضح واضح اشیاء میں بھی فرق کرنے کی روادار نہیں۔ مگر تعجب ہ۔۔۔
دین پر کسی کا اجارہ نہ ہونا.. تحریف اور من مانی کےلیے لائسنس؟
باطل- كشمكش
حامد كمال الدين
تحریر: حامد کمال الدین کہتا ہے میں اوپن ایئر میں کیمروں کے آگے جنازے کی اگلی صف کے اندر ۔۔۔
اب اس کےلیے اہلِ دین آپس میں الجھیں!؟
احوال-
باطل- شخصيات و انجمنيں
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین ’’تنگ نظری‘‘ کی ایک تعریف یہ ہو سکتی ہے کہ: ایک چیز جس کی دین میں گنجائش۔۔۔
شرک کے تہواروں پر مبارکباد دینے والے حضرات کے دلائل، ایک مختصر جائزہ
باطل- اديان
شیخ خباب بن مروان الحمد
شرک کے تہواروں پر مبارکباد دینے والے حضرات کے دلائل، ایک مختصر جائزہ تحریر: شیخ خباب بن مروان ا۔۔۔
ديگر آرٹیکلز
Featured-
بازيافت-
حامد كمال الدين
تاریخِ خلفاء سے متعلق نزاعات.. اور مدرسہ اہل الأثر حامد کمال الدین "تاریخِ خلفاء" کے تعلق س۔۔۔
Featured-
باطل- اديان
حامد كمال الدين
ریاستی حقوق؛ قادیانیوں کا مسئلہ فی الحال آئین کے ساتھ حامد کمال الدین اعتراض: اسلامی۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
لفظ  "شریعت" اور "فقہ" ہم استعمال interchangeable    ہو سکتے ہیں ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
ماتریدی-سلفی نزاع، یہاں کے مسلمانوں کو ایک نئی آزمائش میں ڈالنا حامد کمال الدین ایک اشع۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
منہجِ سلف کے احیاء کی تحریک میں ’مارٹن لوتھر‘ تلاش کرنا! حامد کمال الدین کیا کوئی وجہ ہے کہ۔۔۔
Featured-
احوال-
حامد كمال الدين
      کشمیر کاز، قومی استحکام، پختہ اندازِ فکر کی ضرورت حامد ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
مشكوة وحى- علوم حديث
حامد كمال الدين
اناڑی ہاتھ درایت! صحیح مسلم کی ایک حدیث پر اٹھائے گئے اشکال کے ضمن میں حامد کمال الدین ۔۔۔
راہنمائى-
حامد كمال الدين
(فقه) عشرۃ ذوالحج اور ایامِ تشریق میں کہی جانے والی تکبیرات ابن قدامہ مقدسی رحمہ اللہ کے متن سے۔۔۔
تنقیحات-
ثقافت- معاشرہ
حامد كمال الدين
کافروں سے مختلف نظر آنے کا مسئلہ، دار الکفر، ابن تیمیہ اور اپنے جدت پسند حامد کمال الدین دا۔۔۔
اصول- منہج
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
اصول- عقيدہ
حامد كمال الدين
ایک ٹھیٹ عقائدی تربیت ہماری سب سے بڑی ضرورت حامد کمال الدین اسے فی الحال آپ ایک ناقص استقر۔۔۔
ثقافت- خواتين
ثقافت-
حامد كمال الدين
"دردِ وفا".. ناول سے اقداری مسائل تک حامد کمال الدین کوئی پچیس تیس سال بعد ناول نام کی چیز ہاتھ لگی۔ وہ۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
امارات کا سعودی عرب کو یمن میں بیچ منجدھار چھوڑنے کا فیصلہ حامد کمال الدین شاہ سلمان کے شروع دنوں میں ی۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
پاک افغان معاملہ.. تماش بینی نہیں سنجیدگی حامد کمال الدین وہ طعنے جو میرے کچھ مخلص بھائی او۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
کلچرل وارداتیں اور ہماری عدم فراغت! حامد کمال الدین ظالمو! نہ صرف یہاں کا منبر و محراب ۔۔۔
احوال-
ادارہ
تحریر:   تحریم افروز یوں تو امریکا سے مسلمانوں  کے معاملے میں کبھی خیر کی توقع رہی ہی&۔۔۔
احوال-
ادارہ
تحریر: فلک شیر کچھ عرصے سے فلسطین کے مسئلے کے حل کے لیے امریکی صدر ٹرمپ کی "صدی کی ڈیل" کا شہرہ ہے۔دو سال ۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین بعض مباحث بروقت بیان نہ ہوں تو پڑھنے پڑھانے والوں کے حق میں ایک زیادتی رہ جاتی ہے۔ جذبہ۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
https://twitter.com/Hamidkamaluddin کچھ چیزوں کے ساتھ ’’تعامل‘‘ کا ایک مناسب تر انداز انہیں نظر۔۔۔
کیٹیگری
Featured
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
حامد كمال الدين
ادارہ
تاريخ
ادارہ
مزيد ۔۔۔
باطل
اديان
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
جدال
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
معاشرہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
خواتين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
جہاد
مزاحمت
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم حديث
حامد كمال الدين
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز