عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Sunday, July 21,2019 | 1440, ذوالقعدة 17
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
PamphHumanism آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
’ڈھا دے مسجد، ڈھا دے مندر...‘! (فصل 1 ’’فتنۂ ہیومن ازم‘‘)
:عنوان

جو حکم مردار کا وہ حکم تمہارے نزدیک اُس نفع بخش صحتمند رزق کا جو غیراللہ کے نام کردیا گیا! حقظانِ صحت کے اصولوں کے تحت اس میں کوئی ایک بھی تو کمی آئی ہو! اس میں بھی تو انسانوں ہی کے ساتھ بھلائی کی گئی ہے۔ وہ بھی تو غریبوں، یتیموں اور ناداروں

. باطلفكرى وسماجى مذاہب :کیٹیگری
حامد كمال الدين :مصنف

’ڈھا دے مسجد، ڈھا دے مندر...‘!

(فصل 1۔ فتنۂ ہیومن ازم)

بھائی کب تک انسانوں کو ’’مومن‘‘ اور ’’کافر‘‘ کی نظر سے دیکھو گے۔ چھوڑ بھی دو؛ اب تک ’وہیں‘ کھڑے ہو۔ آگے بڑھو۔ انسانوں کو پیار کی نظر سے دیکھنا سیکھو، مشرک ہوں کافر ہوں ہندو ہوں سکھ ہوں انبیاء کو ماننے والوں ہوں انبیاء کو جھٹلانے والے ہوں، اس سے  بھلا کیا فرق پڑتا ہے؟ یہ آخرت میں دیکھی جانے والی چیزیں ہیں دنیا میں نہیں! دنیا کو  پیسے، وسائل اور مواقع کی نظر سے دیکھو۔ مخلوق کو بانٹنا ہی ہے تو ’ترقی یافتہ وغیر ترقی یافتہ‘ اور ’مہذب و غیر مہذب‘ میں بانٹو؛ کم از کم اچھے تو لگو گے، کیونکہ یہ مطلق ’انسانی‘ قدریں ہیں، اس میں کوئی انسان تم سے اختلاف نہ کرے گا اور جو اختلاف کرے اس کو انکل سام خود دیکھ لے گا! ایسا کرتے ہوئے کوڑھ مغز تو نہیں لگو گے! البتہ ’’دین‘‘ کی نظر سے دیکھنا؟... جس میں انسانی ذوق اور رجحانات ہی متفق نہیں اور نہ کبھی  متفق ہوپائیں گے لہٰذا یہ ’تفرقہ‘ کی بنیاد کیسے بن سکتا ہے!؟

بھائی انسان کو انسان کے طور پر دیکھو اور صرف ’انسانی‘ قدروں کی میزان میں تولو۔ ’مطلق انسانی قدریں‘ جو اِن حالیہ صدیوں میں ہم پر یکلخت کہیں سے الہام ہوئی ہیں! ’فضیلت‘ اور ’بھلائی‘ کا مطلق آفاقی حوالہ کوئی ہوسکتا ہے تو بس یہی: انسان اور انسان کی متفق علیہ قدریں اور بس۔ اسلام کا بھی کوئی حوالہ دینا ہے تو وہ جو اِس ’آفاقی‘ فریم میں فٹ آئے۔ اسلام کے اپنے مستقل بالذات حوالے آخر کس کام کے؟!  باقی سب مذہبی گروہ اسی میں فٹ ہورہے ہیں تو اسلام کیوں نہیں؟!

مسلمانوں کی یہی عادت تکلیف دیتی ہے، ’نئی تبدیلیوں‘ کا ساتھ دینے میں بلاوجہ دیر کرنا؛ آئینِ نو سے ڈرنا، طرزِ کہن پہ اڑنا! نری ضد! اُدھر دیکھو اِس دینِ جدید میں عیسائیت والے کب کے اپنی عیسائیت کو فٹ کرا چکےاور تب سے وہ عیش کر رہے ہیں، کہو تو کوئی ان کی طرف انگلی بھی اٹھائے؛ کچھ اُنہی سے سیکھ لو۔ یہودیت والے اپنی یہودیت کے لیے اِس دین اکبری میں بھاری کوٹہ پا چکے؛ دیکھ لو کس آرام سے جی رہے ہیں۔ ہندو یہاں اپنی الاٹمنٹ کروانے میں لگے ہیں۔ سِکھ ہیں تو ان کے مزے ہیں۔ مجوسی، دہریے، ہم جنس پرست سب اپنی اپنی ’ڈومین‘ لے چکے؛ اپنی اپنی دنیا میں مگن، دن دگنی رات چوگنی ترقی... اور تم مسلمان، وہی ’’ایمان لانے‘‘ کی ضد! ’’کفر‘‘ چھوڑنے کی ہٹ!  ’’انبیاء‘‘ کو منوانے اور ان کا دامن تھامنے پر اصرار؛ جس کے بغیر نہ نیکی تمہارے ہاں نیکی ہے، نہ کوئی خوبی تمہارے ہاں خوبی ہے۔  کسی کا جنت اور جہنم پر ایمان نہیں تو بھی اس کی خیرات اور ’’چیریٹی‘‘ میں بھلا کیا نقص ہے جو تم اسے ذرہ بھر وقعت دینے کےلیے تیار نہیں! کسی کا مرنے کے بعد دوبارہ جی اٹھنے اور جوابدہی کےلیے خدا کے حضور پیش ہونے پر یقین نہیں تو اس کی ’’خدمتِ انسانیت‘‘ میں آخر کیا عیب ہے  جو اس کے ان اعلیٰ کارناموں کو تم رتی بھر وزن دینے پر آمادہ نہیں۔  کوئی اپنے بتوں کے نام پر چڑھاوا دے، خدا کے ساتھ ٹھہرائے ہوئے اپنے کسی شریک کے نام پر ذبیحہ کرے، دیویوں کی رضاجوئی میں ہسپتال کھولے، لنگر چلائے، انسانوں کو نفع پہنچائے تم اس کو بھی جہنم کی وعیدیں سنانے سے نہیں ٹلتے۔ خدا کا خوف کرو۔ یہ تمہارا کیسا خدا ہے جو غریب کے چہرے پر مسکراہٹ نہیں دیکھ سکتا، نادار کے پیٹ میں کھانا پڑتا برداشت نہیں کرسکتا محض اس لیے کہ وہ ذبیحہ یا چڑھاوا جو اس انسان کے پیٹ میں گیا خاص اُس کے نام پر ہونے کی بجائے اس کے کسی ’شریک‘ کے نام پر کرڈالا گیا تھا؟! رزق، وسائل اور انسانی جذبوں کی ایسی ناقدری؟!

جو حکم مردار کا وہ حکم تمہارے نزدیک اُس نفع بخش صحتمند ‘healthy’   رزق کا جو غیراللہ کے نام کردیا گیا! حفظانِ صحت کے اصولوں کے تحت اس میں کوئی ایک بھی تو کمی آئی ہو!  اس میں بھی تو انسانوں ہی کے ساتھ بھلائی کی گئی ہے۔ وہ بھی تو غریبوں، یتیموں اور ناداروں کو کھلایا جانا تھا۔  ایسا نخرہ؟!

نہ بھلائی تمہارے نزدیک بھلائی۔ نہ اچھائی تمہارے نزدیک اچھائی۔  انسان کا سارا ٹیلنٹ رُل جائے، احساسات خاک میں مل جائیں، سماجی میلانات مجروح ہوکر رہ جائیں، بس تمہاری یہ ایک شرط پوری نہیں ہوئی کہ اس آدمی نے اپنے باپ دادا کا دین چھوڑ کر تمہارے قرآن اور محمد (ﷺ) کا دم نہیں بھرا  تو تم اس کا سب کچھ اکارت ٹھہرا دیتے ہو۔  دو دل جڑیں تو تمہیں تکلیف ہونے لگتی ہے، تمہاری ’غیرت‘ جاگ اٹھتی ہے اور تمہارا یہ ’’ادیان کا فرق‘‘ ایک مسلم لڑکی اور ہندو لڑکے کے پیار میں آڑے آجاتا ہے؛ ذرا خود سوچو ’’پیار‘‘ ایسی آفاقی قدر، جس پہ دلوں کو اختیار ہی نہیں ہے! اور جس کے ’تقدس‘ پر ہمارے ادب اور شاعری نے ڈیڑھ سو سال تک تمہارے دماغ صاف کرنے کےلیے مغزماری کرلی، اسٹیج، فلم،  ڈرامے اور شوبز نے زور لگا لیا، تھیٹر روہانسا ہوگیا، ریڈیو نے گلا تھکا لیا،  لچر گانے بازگشت بنے تمہارے پیچھے پھرتے رہے، ہمارا آرٹ، فیشن، میڈیا سب بھاڑ جھونک بیٹھے  اور تمہاری وہی ایک رَٹ: لَا هُنَّ حِلٌّ لَهُمْ وَلَا هُمْ يَحِلُّونَ لَهُنَّ (الممتحنۃ: 10) ’’نہ یہ (مومن عورتیں) ان (مشرک مردوں) کےلیے حلال ہیں  اور نہ وہ (مشرک مرد) اِن (مومن عورتوں) کےلیے‘‘!

’’ملتوں کا فرق‘‘ کسی گہری خلیج کی طرح تم نے اپنے اور دوسرے انسانوں کے مابین ڈال رکھا ہے؛ اندازہ تو کرو اِکیسویں صدی میں بھی تم اِسی خلیج کو گہرا کرنے میں لگے ہو! ’’کفرواسلام‘‘ نام کی یہ فصیل تم اِس عہدِ گلوبل ازم میں اٹھانے کی سوچ رہے ہو؛ تمہاری یہ ہمت! ایسی اونچی فصیلیں یہاں تم ہمارے اُس مطلوبہ جہان کے راستے میں کھڑی کرنے لگے جس کے، ہمارے ’انسانیت‘ کے غم میں گھلنے والے میسونی  Freemasonic   دماغوں نے، صدیوں خواب دیکھے تھے اور جس کے راستے کی ایک فصیل ’’خلافت‘‘ کو ہم نے بمشکل تمام گرایا اور پھر اس کو گرانے کے بعد بھی سو سال تک  اپنی مطلوبہ تعمیرات کےلیے زمین ہموار کرتے رہے کہ تم ایک نئی فصیل کھڑی کر لائے: ملتوں کا فرق! کافر سے براءت! شرک اور اہل شرک سے بیزاری! ’’مغضوب علیہم‘‘ اور ’’ضالین‘‘ ایسی بھیانک اصطلاحیں جو ’پنجوقتہ نماز‘ سے ہی نکالی جانے لگیں! اور اس کی ایسی ایسی تفسیریں[1]   جو سوائے کچھ سرپھروں اور شدت پسندوں کے کسی کو ہضم ہونے کی نہیں اور جو اِس کرۂ ارض کو (’’ہمارے‘‘ مطلوبہ نقشے پر) کبھی امن کا گہوارہ[2]   بننے دینے والی نہیں!

یہ ہے نیا مذہب جس کا نام ہے ’’انسانیت‘‘ یا ’’انسان پرستی‘‘۔ ’’ہیومن ازم‘‘۔

ان کا کہنا ہے یہ ہیومن ازم ہر مذہب والوں کا ’’مذہب‘‘ ہوسکتا ہے، بلکہ یہ تمام مذاہب کی اچھائیوں کا نکالا ہوا سَت ہے اور انسانیت کے جملہ امراض کیلئے اکسیر۔ ہر مذہب کی اچھی چیز اس میں آپ سے آپ آگئی ہے۔ آپ عمل اس پر کریں،  پیراڈائم اِس کا قبول کریں، البتہ نیت چاہے جس بھی مذہب کی کریں۔  اچھائی کا آفاقی تصور یہاں سے لیں۔ بلکہ اچھائی ہے ہی آفاقی جو کسی ’اختلافی حوالے‘ کی پابند نہیں اور کسی نزاعی حوالے کی متحمل نہیں۔ لہٰذا اچھائی وہ جو ’یونیورسل‘ ہو، یہ کرلیں تو آپ دینِ ’ہیومن ازم‘ پر ہوئے۔ اضافی طور پر آپ کچھ اور ہوں، اس سے فرق نہیں پڑتا؛ مسلمان، ہندو، عیسائی، دہریہ، سب غیرمتعلقہ ہے؛ دیکھنا یہ ہے کہ آپ میں ’اچھائی‘ کتنی ہے۔ یہ ’اچھائی‘ ہیومن ازم کی چیز ہے، باقی مسئلے مذاہب کے اپنے اپنے ہیں۔ مذاہب کو اگر یہ دعویٰ ہے کہ وہ دنیا میں ’اچھائی‘ کو فروغ دیتے ہیں، اور ظاہر ہے کس مذہب کو یہ دعویٰ نہیں، تو وہ اپنے آپ کو ’ہیومن ازم‘ کی عدالت میں پیش کریں؛ کیونکہ ’اچھائی‘ کا سارا اِجارہ اِس کے پاس ہے!

آئیے اِس ’اِجارے‘ کی کچھ روداد سنیں...



[1]   تفسیر طبری سے چند ماثور اقوال (مستند تفسیری اقوال) بابت سورہ فاتحہ کی آخری آیت:

اثر نمبر 190: ابن عباس نے کہا: انعمتَ علیھم سے مراد ہے: ایمان لانے والے

اثر نمبر 191:   وکیع نے کہا: انعمت علیھم سے مراد ہے: مسلمان لوگ

اثر 192:  عبد الرحمن بن زید نے کہا: انعمت علیھم سے مراد ہے: محمد ﷺ اور آپؐ کے ساتھ والے۔

اثر 193، 194: عدیؓ بن حاتم سے روایت ہے، کہا: مجھ سے رسول اللہﷺ نے فرمایا تھا: المغضوب علیہم سے مراد ہے یہود۔

اثر 195: عدیؓ بن حاتم سے روایت ہے، کہا: میں نے رسول اللہﷺ سے دریافت کیا: اللہ کے کلام میں ’’غیر المغضوب علیھم‘‘ کا جو لفظ ہے اس سے مراد کون ہیں؟ فرمایا: یہود۔

اثر 200: روایت ابن عباسؓ سے، کہا: غیر المغضوب علیھم سے مراد ہے یہود، انہی پر اللہ کا غضب ہوا۔

اثر نمبر 201: ابن عباسؓ، ابن مسعودؓ اور دیگر صحابہ سے روایت ہے: کہا: غیر المغضوب علیھم سے مراد ہے: یہود۔

اثر 207: عدیؓ بن حاتم سے روایت ہے، کہا: رسول اللہﷺ نے مجھ سے فرمایا تھا: ولا الضالین سے مراد ہے: نصاریٰ۔

اثر 209: عدیؓ بن حاتم سے روایت ہے، کہا:  میں نے رسول اللہﷺ سے اللہ کے کلام میں ’’ولا الضالین‘‘ کے بارے میں دریافت کیا تو آپ نے فرمایا: اس سے مراد ہیں نصاریٰ۔

اثر 216: ابن جریج سے روایت ہے، کہا: فرمایا ابن عباسؓ نے: ضالین سے مراد ہیں نصاریٰ۔

اثر 217: ابو صالح حضرت عبد اللہ بن عباسؓ سے، اور مُرّہ ہمدانی حضرات عبد اللہ بن مسعود سے روایت کرتے ہیں، نیز دیگر صحابہؓ سے مروی ہے: کہ ضالین سے مراد ہے: نصاریٰ۔

       اِن مستند تفاسیر کی رو سے مسلمان ہر روز، بلاناغہ، پانچ بار نماز میں، اور نماز کی ہر رکعت میں، دست بستہ، خدا سے ملتجی ہوتا ہے کہ وہ اسے یہود اور نصاریٰ کی راہ سے اپنی پناہ میں رکھے اور صرف اور صرف محمدﷺ اور آپؐ کے ساتھیوں کے ہی راستے پر رکھے۔ یعنی ان دو راستوں کا تصادم اس قدر واضح ہے اور اس قدر واضح رکھا جا رہا ہے کہ ہر رکعت کا حصہ بنادیا گیا۔ پس ایک مسلمان ہر چند ساعت بعد یہود اور نصاریٰ سے اپنی بیزاری کا اعادہ کرتا اور انکے ساتھ راستے کا اشتراک رکھنے سے خدا کی پناہ مانگتا ہے۔

[2]  گویا اسلام کے عہد اول میں تو امن پایا ہی نہیں جاتا تھا! حالانکہ اسلام کے سائے میں یہود ونصاریٰ کو جو امن، آسودگی اور تحفظ میسر رہا اس کی تاریخ سے مثال نہیں ملتی۔ والحمد للہ علیٰ ذٰلک

فہرست موضوعات

مقدمہ:فتنۂ ہیومن ازم

ڈھا دے مسجد، ڈھا دے مندر

مذاہب حاضر کیے جائیں

ادیان کی ریفارم

بتانِ رنگ و خوں میں ایک اور اضافہ: ’مذہب‘!

ہیومن ازم کےلیے ’اسلامی‘ بنیادوں کی فراہمی

کفر کو گھناؤنی چیز بنا کر بھی پیش مت کرو!

مـنــشـــــــــــــوراتِ ايقــــــــــــــــــــاظ

پوسٹ بکس نمبر  10262 لاہور   matbooateqaz@gmail.com      

http://www.eeqaz.org/
Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
کچھ مسلم معترضینِ اسلام!
Featured-
باطل- جدال
حامد كمال الدين
کچھ ’مسلم‘ معترضینِ اسلام! تحریر: حامد کمال الدین پچھلے دنوں ایک ٹویٹ میرے یہاں سے  ہو۔۔۔
فیمینسٹ جاہلیت کو جھٹلاتی ایک نسوانی تحریر
Featured-
ثقافت- خواتين
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
ادارہ
فیمینسٹ جاہلیت کو جھٹلاتی ایک نسوانی تحریر اجالا عثمان انٹرنیٹ سے لی گئی ایک تحریر جو ہمیں ا۔۔۔
غامدى اور عصر حاضر ميں قتال
باطل- فرقے
اعتزال
ادارہ
ایک فیس بکی بھائی نے غامدی صاحب کی جہاد کے موضوع پر ویڈیو کا ایک لنک دے کر درخواست کی تھی کہ میں اس ویڈیو کو ۔۔۔
زیادتی زیادتی میں فرق ہے
باطل- فرقے
احوال- وقائع
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین ایک بڑی خلقت واضح واضح اشیاء میں بھی فرق کرنے کی روادار نہیں۔ مگر تعجب ہ۔۔۔
دین پر کسی کا اجارہ نہ ہونا.. تحریف اور من مانی کےلیے لائسنس؟
باطل- كشمكش
حامد كمال الدين
تحریر: حامد کمال الدین کہتا ہے میں اوپن ایئر میں کیمروں کے آگے جنازے کی اگلی صف کے اندر ۔۔۔
اب اس کےلیے اہلِ دین آپس میں الجھیں!؟
احوال-
باطل- شخصيات و انجمنيں
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین ’’تنگ نظری‘‘ کی ایک تعریف یہ ہو سکتی ہے کہ: ایک چیز جس کی دین میں گنجائش۔۔۔
شرک کے تہواروں پر مبارکباد دینے والے حضرات کے دلائل، ایک مختصر جائزہ
باطل- اديان
شیخ خباب بن مروان الحمد
شرک کے تہواروں پر مبارکباد دینے والے حضرات کے دلائل، ایک مختصر جائزہ تحریر: شیخ خباب بن مروان ا۔۔۔
دیوالی کی مٹھائی
باطل- اديان
حامد كمال الدين
دیوالی کی مٹھائی تحریر: سرفراز فیضی(داعی: صوبائی جمعیت اہل حدیث ممبئی ) *سوال*: کیا دیوالی کی مبارک باد دینا ۔۔۔
بائیکاٹ کا ہتھیار.. اور قومی یکسوئی کا فقدان
احوال-
باطل- كشمكش
تنقیحات-
حامد كمال الدين
بائیکاٹ کا ہتھیار.. اور قومی یکسوئی کا فقدان ہر بار جب کسی دردمند کی جانب سے مسلم عوام کو بائیکاٹ کا ۔۔۔
ديگر آرٹیکلز
ثقافت- خواتين
ثقافت-
Featured-
حامد كمال الدين
"دردِ وفا".. ناول سے اقداری مسائل تک حامد کمال الدین کوئی پچیس تیس سال بعد ناول نام کی چیز ہاتھ لگی۔ وہ۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
امارات کا سعودی عرب کو یمن میں بیچ منجدھار چھوڑنے کا فیصلہ حامد کمال الدین شاہ سلمان کے شروع دنوں میں ی۔۔۔
احوال-
Featured-
حامد كمال الدين
پاک افغان معاملہ.. تماش بینی نہیں سنجیدگی حامد کمال الدین وہ طعنے جو میرے کچھ مخلص بھائی او۔۔۔
Featured-
احوال-
حامد كمال الدين
کلچرل وارداتیں اور ہماری عدم فراغت! حامد کمال الدین ظالمو! نہ صرف یہاں کا منبر و محراب ۔۔۔
Featured-
احوال-
Featured-
ادارہ
تحریر:   تحریم افروز یوں تو امریکا سے مسلمانوں  کے معاملے میں کبھی خیر کی توقع رہی ہی&۔۔۔
Featured-
احوال-
ادارہ
کچھ عرصے سے فلسطین کے مسئلے کے حل کے لیے امریکی صدر ٹرمپ کی "صدی کی ڈیل" کا شہرہ ہے۔دو سال بل جب ٹرمپ نے اق۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین بعض مباحث بروقت بیان نہ ہوں تو پڑھنے پڑھانے والوں کے حق میں ایک زیادتی رہ جاتی ہے۔ جذبہ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
https://twitter.com/Hamidkamaluddin کچھ چیزوں کے ساتھ ’’تعامل‘‘ کا ایک مناسب تر انداز انہیں نظر۔۔۔
Featured-
باطل- جدال
حامد كمال الدين
کچھ ’مسلم‘ معترضینِ اسلام! تحریر: حامد کمال الدین پچھلے دنوں ایک ٹویٹ میرے یہاں سے  ہو۔۔۔
اصول- منہج
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
پراپیگنڈہ وار propaganda war میں سیگ منٹیشن segmentation (جزء کاری) ناگزیر ہوتی ہے۔ یعنی معاملے کو ای۔۔۔
بازيافت-
ادارہ
ہجرت کے پندرہ سو سال بعد! حافظ یوسف سراج کون مانے؟ کسے یقیں آئے؟ وہ چار قدم تاریخِ ان۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
میرے اسلام پسندو! پوزیشنیں بانٹ کر کھیلو؛ اور چال لمبی تحریر: حامد کمال الدین یہ درست ہے کہ۔۔۔
احوال- امت اسلام
ذيشان وڑائچ
ہمارے کچھ نوجوان طیب اردگان کے بارے میں عجیب و غریب الجھن کے شکار ہیں۔ کوئی پوچھ رہا ہے کہ۔۔۔
احوال- امت اسلام
حامد كمال الدين
’’سلفیوں‘‘ کے ساتھ تھوڑی زیادتی ہو رہی ہے!    عرب داعی محترم ابو بصیر طرطوسی کے ساتھ بہت م۔۔۔
اصول- عقيدہ
اداریہ-
حامد كمال الدين
شرکِ ’’ہیومن ازم‘‘ کی یلغار..  اور امت کا طائفہ منصورہ حالات کو سرسری انداز میں پڑھنا... واقعات م۔۔۔
احوال-
اصول- منہج
راہنمائى-
حامد كمال الدين
پاکستانی سیاست میں اسلامی سیکٹر کے آگے بڑھنے کے آپشنز تحریر: حامد کمال الدین میری نظر میں، اس۔۔۔
Featured-
ثقافت- خواتين
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
ادارہ
فیمینسٹ جاہلیت کو جھٹلاتی ایک نسوانی تحریر اجالا عثمان انٹرنیٹ سے لی گئی ایک تحریر جو ہمیں ا۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
"نبوی منہج" سے متعلق ایک مغالطہ کا ازالہ حامد کمال الدین ایک تحریکی عمل سے متعلق "نبوی منہج۔۔۔
کیٹیگری
Featured
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
منہج
حامد كمال الدين
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
ادارہ
تاريخ
ادارہ
سلف و مشاہير
مہتاب عزيز
مزيد ۔۔۔
باطل
جدال
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
ادارہ
فرقےاعتزال
ادارہ
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
حامد كمال الدين
خواتين
حامد كمال الدين
خواتين
ادارہ
مزيد ۔۔۔
جہاد
مزاحمت
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ابن علی
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
ادارہ
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز