عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Thursday, August 22,2019 | 1440, ذوالحجة 20
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
2015-09 آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
ایمان، ہجرت اور جہاد والا دین
:عنوان

وه جو ایمان لائے اور وہ جنہوں نے اللہ کے لئے اپنے گھر بار چھوڑے اور اللہ کی راہ میں لڑے وہ ہیں رحمت الٰہی کے امیداور۔ اور اللہ ہے بخشنے والا مہربان

. ایقاظ ٹائم لائن :کیٹیگری
ادارہ :مصنف

               ایمان، ہجرت اور جہاد والادین


إِنَّ الَّذِينَ آمَنُوا وَالَّذِينَ هَاجَرُوا وَجَاهَدُوا فِي سَبِيلِ اللَّهِ أُولَئِكَ يَرْجُونَ رَحْمَتَ اللَّهِ وَاللَّهُ غَفُورٌ رَحِيمٌ                    (البقرۃ: 218)

وه جو ایمان لائے اور وہ جنہوں نے اللہ کے لئے اپنے گھر بار چھوڑے اور اللہ کی راہ میں لڑے وہ ہیں رحمت الٰہی کے امیداور۔ اور اللہ ہے بخشنے والا مہربان

 

شیخ سعدیؒ:

ایمان، ہجرت اور جہاد۔

یہ تین اعمال سعادت کا عنوان ہوئے اور عبودیت کا بنیادی محور۔ اِس ایک ہی آیت کے آئینے میں: انسان خدا کے ہاں اپنی حیثیت کا تعین کر  سکتا ہے۔ نیز اپنے ممکنہ ٹھکانے کا اندازہ کر سکتا ہے۔ دنیا کی اِس امتحان گاہ میں انسان نے کیا پایا کیا کھویا، انہی تین اعمال کی روشنی میں جانچ سکتا ہے۔

پہلا عمل ہے ’’ایمان‘‘

کیا شان ہے اس عمل کی۔ یعنی خدا کو ماننا۔ آسمان سے اتری ہوئی حقیقتوں کو دل میں بسانا اور عملاً ان پر گام زن ہونا۔ بھلا بتاؤ اہل سعادت اور اہل شقاوت کے مابین اصل بنیادی فرق یہ کیوں نہ ہو؟ دوزخ اور جنت کے راستے اِسی ایک پوائنٹ سے کیوں الگ الگ نہ ہوں؟

’’ایمان‘‘ جس کی بدولت انسان کے اعمالِ خیر قبول ہوتے ہیں۔ عرش کی جانب بلند ہونے کےلیے طاقتِ پرواز پاتے ہیں۔ ’’ایمان‘‘ جو اگر ناپید ہو تو خواہ تم آسمان سے تارے توڑ لاؤ، پوری دنیا کی دولت خدا کے آگے ڈھیر کردو، خدا اسے قبول کرنے والا نہیں۔ ’’ایمان‘‘ جس کا کوئی متبادل نہیں۔ اس کی جگہ نہ کوئی تاوان قبول ہواور نہ جان بخشی کی کوئی اور صورت۔ جتنی سزا کاٹ لو؛ سزا پھر باقی کی باقی! ’’ایمان‘‘ جس کی غیرموجودگی میں نہ تمہارا ادا کیا ہوا کوئی فرض خدا کے ہاں قبول اور نہ کوئی نفل۔

دوسرا عمل: ’’ہجرت‘‘

یہ ہے آدمی کا مفارقت کر لینا اُن اشیاء سے جن سے وہ تمام تر زندگی وابستہ اور مانوس رہا، اس لیے کہ خدا کی رضا کہیں اور پائی جانے لگی ہے۔ یعنی خدا کی خاطر اپنی وابستگی ختم کر ڈالنا۔ اپنی محبتوں اور اپنے تعلقات کو خدا سے اپنی محبت اور خدا سے اپنے تعلق پر قربان کر لینا۔ یہاں؛ اس آدمی نے اپنے وطن کو بھی خیرباد کہہ ڈالا۔ اپنی جاگیر اور اپنے مال و دولت کو بھی۔ اپنے اہل و اقارب اور اپنے دوستوں عزیزوں کو بھی۔ اور تن تنہا خدا کی محبت اور اطاعت کی تلاش میں نکل کھڑا ہو۔ دنیا اور اس کی کھینچ رکھنے والی سب چیزوں کو تج دینے پر پوری طرح آمادہ۔ صرف فضلِ خداوندی کا خواستگار۔ کہ اِس کا مطلوب خدا ٹھہرا، اور اس کا مقصود خدا کے دین کی نصرت اور زمین میں اس کو تمکین دلوانا۔

تیسرا عمل ’’جہاد‘‘

یہ ہے آدمی کا خدا کے دشمن کو نیچا کرنے کےلیے اپنا پورا زور صرف کردینا۔ خدا کے دین کی نصرت اور اقامت کےلیے زمین میں دوڑدوپ کرتے پھرنا۔ روئے زمین پر شیطان کے دین کو مٹانے کےلیے سرگرم ہونا۔ یہ اعمالِ صالحہ کی معراج ہے اور اس کا بدلہ سب سے اعلیٰ۔ یعنی اعمالِ صالحہ انسان کی زندگی میں جب اپنی چوٹی پر جا پہنچتے ہیں تو اسے ہم کہیں گے جہاد فی سبیل اللہ۔ یہاں انسان اپنی جان ہتھیلی پر رکھ کر خدا کی طلب کرتا ہے۔ خدا کی خاطر دنیا میں مرنے اور مارنے تک چلے جانا۔ خدا سے وابستگی اور وفاداری کی یہ اعلیٰ ترین سطح ہے۔ اس کا بدلہ بھی ضرور اعلیٰ ہو گا۔ یہ خاص وہ عمل ہے جس کے سبب سے روئے زمین پر دین اسلام اپنا دائرہ وسیع کرتا ہے۔ بتوں اور ان کے پجاریوں کا سر نگوں ہوتا ہے۔ اور خدا کی عبادت کرنے والوں کو دنیا میں اپنی جانوں، مالوں اور اپنی اولادوں کا تحفظ حاصل ہوتا ہے۔

*****

پس جو شخص اِن تین عظیم اعمال میں پورا اتر لے گا، اور ان میں آنے والی مشقتوں اور قربانیوں کا مردانہ وار مقابلہ کرکے خدا کی وفاداری کا ثبوت دے لے گا، وہ خدا کے عائد کردہ دیگر فرائض اور اعمال کے اندر پورا اترنے میں کہیں زیادہ توانا ہو گا۔

تو پھر ایسے لوگوں کا حق بنتا ہے کہ یہ رحمتِ خداوندی ایسی عظیم شےء کے امیدوار ہوں۔ اس لیے کہ یہ خدا کی رحمت تک پہنچانے والے اسباب اختیار کرلینے میں کامیاب رہے۔

یہ آیت دلیل ہوئی کہ نیک بخت ہونے کی رجاء (امید)  درست نہیں جب تک کہ نیک بخت ہونے کے اسباب اختیار نہ کر لیے جائیں۔  رہ گئی وہ رجاء (امید) جو سستی اور کاہلی سے پھوٹتی ہو، یعنی جہاں اسباب ہی اختیار نہ کیے گئے ہوں، تو یہ ہے عجز اور فریبِ آرزو۔ یہ کم ہمتی اور کم عقلی کی دلیل ہے۔ یہ ایسا ہی ہے کہ ایک آدمی شادی بیاہ کیے بغیر ہی صاحبِ اولاد ہونے کی امید رکھے! یا بغیر فصل بوئے اور بغیر زمین سیراب کیے ہی غلے کی آس کیے بیٹھا ہو!

أُولَئِكَ يَرْجُونَ رَحْمَتَ اللَّهِ

’’یہ ہیں رحمتِ الٰہی کے امیدوار‘‘

کمال الفاظ ہیں۔ یہاں اشارہ ہے کہ آدمی خواہ کیسے ہی عظیم اعمال کیوں نہ کر لے، وہ ان اعمال پر بھروسہ بہرحال نہیں کر سکتا۔ سہارا اس کا اعمال نہیں ہیں۔ بلکہ یہ اعمال کر لینے کے بعد بھی امید ہے تو خدا کی رحمت سے۔ سہارا ہے تو خدا جس سے یہ آس رکھتا ہے کہ وہ اِس کے اعمال قبول فرما لے۔ اِس کے گناہ اور قصور بخش دے۔ اور عیوب پر اِس کی سترپوشی فرما دے۔ چنانچہ فرمایا: واللہُ غَفورٌ یعنی سچے دل سے توبہ کر آنے والے  کو بخش دینے والا۔ اور فرمایا: رَحِیمٌ یعنی وہ رحم سے متصف ہستی ہے۔ اس کی رحمت ہر چیز پر وسیع ہے۔ اور اس کی سخاوت اور احسان ہر زندہ مخلوق کو محیط ہے۔

یہ آیت دلیل ہوئی کہ جو آدمی یہ عظیم اعمال انجام دے گا خدا کی مغفرت اس کے حق میں واقع ہونے والی ہے۔ کیونکہ اُس کے حضور نیکیاں برائیوں کو ختم کر ڈالتی ہیں۔ نیز اُسے خدا کیرحمت حاصل ہونے والی ہے۔

اب جب مغفرت ملے گی تو سب دنیوی و اخروی سزائیں ختم ہو جائیں گی، جوکہ قصوروں اور گناہوں کا اصولی و طبعی انجام تھیں۔ اور جب رحمت ملی تو دنیا و آخرت کی سب خیر مل گئی۔

حق یہ ہے کہ بندوں کے یہ اعمال بھی دراصل اُس کی رحمت تھی جو اِنہیں ملی۔ خدا کی توفیق نہ ہوتی تو ان اعمالِ صالحہ کا ارادہ ہی اِن کے اندر جنم نہ لیتا۔  اِن اعمال پر اُس کی جانب سے اِنہیں قدرت نہ ملی ہوتی تو یہ اعمال کر ہی نہ سکتے۔ اُس کا احسان نہ ہوتا تو نہ یہ اعمال سرے لگتے اور نہ اُس کے ہاں قبولیت پاتے۔ سو ’سبب‘ بھی اُسی کا احسان اور ’مسبب‘ بھی۔

 

امام طبریؒ:

الَّذِینَ آمَنُوا

جن لوگوں نے اللہ اور اس کے رسول کو سچا مانا۔ رسولﷺ دنیا میں جو کچھ لے کر آئے اسے تسلیم کیا۔

وَالَّذِینَ ھَاجَرُوا

جو اس بات کے روادار نہ رہے کہ مشرکین کے ساتھ اُن کے شہروں اور بستیوں کے اندر مساکنت  رکھیں۔ مشرکین کے ساتھ اِن کا رہن سہن ہو۔ ہمسائیگی اور زندگی کا سانجھ ہو۔ تب یہ اُن کو خیرباد کہہ کر، اور ان کی ہمسائیگی اور ان کے شہروں اور بستیوں کو ناگواری کے ساتھ چھوڑ کر ایک ایسا جہان بنانے کےلیے نکلے جہاں ایمان بستا ہے۔ یہ ہے ہجرت۔

یہ لفظ ہر ایسی شےء کو چھوڑ دینے کےلیے مستعمل ہے جو آدمی کےلیے ناگوار ہوگئی ہو۔ اصحابِ رسول اللہﷺ کے مہاجرین کو مہاجر اسی لیے کہا گیا۔ کیونکہ یہ اپنے وہ گھربار اور اپنے سکونت کے وہ مقامات چھوڑ چھاڑ آئے تھے جہاں اب یہ مشرکین کے مابین اور ان کے زیراقتدار رہنے کے روادار نہ رہ گئے تھے۔ کیونکہ یہ اپنے اُن گھروں میں خود کو کفار کی فتنہ پردازی سے محفوظ نہ جانتے تھے۔ تب یہ ان بستیوں کی تلاش میں نکل کھڑے ہوئے جہاں انہیں اپنے ان برگزیدہ مطلوبات کا تحفظ حاصل ہو۔

وَجَاھَدُوا

یعنی لڑے اور جنگ کی۔

اس کے معنیٰ میں ایک دوسرے کو  زیر کرنے کےلیے زور لگانا آتا ہے۔

فِی سَبِیلِ اللّٰہ

سبیل اللہ۔ یعنی اللہ کا راستہ۔ اللہ کا دین۔

پس وَالّذِینَ ھَاجَرُوا وَجَاھَدُوا فِی سَبِیۡلِ اللّٰہ  کا مطلب ہوا: جو لوگ اہل شرک کے اقتدار کو چھوڑ آئے اس کو باقاعدہ خیرباد کہہ کر، اپنے دین کے فتنہ زدہ ہونے کا خطرہ محسوس کرتے ہوئے۔ پھر یہ مشرکین سے دین خداوندی کے معاملہ میں باقاعدہ برسرِ جنگ ہوئے، تاکہ یہ اُنہیں اس دین میں داخل کریں اور خدا کی رضاجوئی کے دائرہ میں لے کر آئیں۔

أُولٰئِکَ یَرۡجُونَ رَحۡمَۃَ اللہ

یعنی یہ آس رکھیں کہ اللہ انہیں اپنی رحمت عطا فرمانے والا ہے۔ اپنی اس رحمت کی بدولت ان کو اپنی بہشت میں داخل فرمانے والا ہے۔

وَاللہُ غَفُورٌ

یعنی اپنے بندوں کے گناہوں اور قصوروں پر پردہ ڈال دینے والا ہے، اپنے عفو و بخشش کی بدولت۔ ان پر اپنی رحمت سے فضل فرمانے والا۔

 

 

(نوٹ: ہمارے ان قرآنی اسباق میں تفسیر سعدی کو بنیاد بنا یا گیا۔ دیگر مراجع اضافی طور پر شامل ہوتے ہیں)

 

Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
سید قطب کی تحریریں فقہی کھپت کےلیے نہیں
تنقیحات-
ایقاظ ٹائم لائن-
حامد كمال الدين
سید قطب کی تحریریں فقہی کھپت کےلیے نہیں عرصہ ہوا، ہمارے ایک فیس بک پوسٹر میں استاذ سید قطبؒ کے لیے مصر کے مع۔۔۔
شیخ ابن بازؒ کی گواہی بابت سید قطبؒ
ایقاظ ٹائم لائن-
حامد كمال الدين
شیخ ابن بازؒ کی گواہی بابت سید قطبؒ ایقاظ ڈیسک یہ صاحب[1]  خود اپنا واقعہ سنا رہے ہیں کہ یہ طلبِ عل۔۔۔
معجزے کی سائنسی تشریح
ایقاظ ٹائم لائن-
ذيشان وڑائچ
معجزے کی سائنسی تشریح!              &nbs۔۔۔
جدت پسند: مرزا قادیانی کو ایک ’مسلم گروہ کا امام‘ منوانے کی کوشش! دنیوی اور اخروی احکام کے خلط سے ’دلیل‘ پکڑنا
ایقاظ ٹائم لائن-
باطل- فرقے
حامد كمال الدين
جدت پسند حضرات کی پریشانی: مرزا قادیانی کو ایک ’مسلم گروہ کا امام‘ منوانا! دنیوی اور اخروی احکام کے۔۔۔
طارق جمیل نے کیا برا کیا ہے؟
ایقاظ ٹائم لائن-
ادارہ
طارق جمیل نے کیا برا کیا ہے؟ مدیر ایقاظ اِس مضمون سے متعلق یہ واضح کر دیا جائے: ہمارا مقصد معاشرت۔۔۔
حوثی زیدی نہیں ہیں
ایقاظ ٹائم لائن-
شیخ ناصر القفاری
حوثی زیدی نہیں ہیں تحریر: ناصر بن عبد اللہ القفاری اردو استفادہ: عبد اللہ آدم بعض لوگ ۔۔۔
مسلم ملکوں میں تخریب کاری، استعماری قوتوں کا ایک ہتھکنڈا
ایقاظ ٹائم لائن-
ادارہ
مسلم ملکوں میں تخریب کاری استعماری قوتوں کا ایک ہتھکنڈا ایقاظ کے فائل سے یہ بات اظہر من الشمس ہ۔۔۔
’اَعراب‘ والا دین یا ’ہجرت و نصرت‘ والا؟
ایقاظ ٹائم لائن-
ادارہ
’اَعراب والا‘ دین... یا ’ہجرت و نصرت‘ والا؟  عَنْ بُرَيدَةَ رضی اللہ عنہ، قَالَ: كَانَ رَسُو۔۔۔
دبستانِ جدید اور فردپرست رجحانات
ایقاظ ٹائم لائن-
ادارہ
160 دبستانِ جدید اور "فردپرست" رجح۔۔۔
ديگر آرٹیکلز
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
ماتریدی-سلفی نزاع، یہاں کے مسلمانوں کو ایک نئی آزمائش میں ڈالنا حامد کمال الدین ایک اشع۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
منہجِ سلف کے احیاء کی تحریک میں ’مارٹن لوتھر‘ تلاش کرنا! حامد کمال الدین کیا کوئی وجہ ہے کہ۔۔۔
Featured-
احوال-
حامد كمال الدين
      کشمیر کاز، قومی استحکام، پختہ اندازِ فکر کی ضرورت حامد ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
مشكوة وحى- علوم حديث
حامد كمال الدين
اناڑی ہاتھ درایت! صحیح مسلم کی ایک حدیث پر اٹھائے گئے اشکال کے ضمن میں حامد کمال الدین ۔۔۔
راہنمائى-
حامد كمال الدين
(فقه) عشرۃ ذوالحج اور ایامِ تشریق میں کہی جانے والی تکبیرات ابن قدامہ مقدسی رحمہ اللہ کے متن سے۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
ثقافت- معاشرہ
حامد كمال الدين
کافروں سے مختلف نظر آنے کا مسئلہ، دار الکفر، ابن تیمیہ اور اپنے جدت پسند حامد کمال الدین دا۔۔۔
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
Featured-
اصول- منہج
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
اصول- عقيدہ
حامد كمال الدين
ایک ٹھیٹ عقائدی تربیت ہماری سب سے بڑی ضرورت حامد کمال الدین اسے فی الحال آپ ایک ناقص استقر۔۔۔
ثقافت- خواتين
ثقافت-
حامد كمال الدين
"دردِ وفا".. ناول سے اقداری مسائل تک حامد کمال الدین کوئی پچیس تیس سال بعد ناول نام کی چیز ہاتھ لگی۔ وہ۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
امارات کا سعودی عرب کو یمن میں بیچ منجدھار چھوڑنے کا فیصلہ حامد کمال الدین شاہ سلمان کے شروع دنوں میں ی۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
پاک افغان معاملہ.. تماش بینی نہیں سنجیدگی حامد کمال الدین وہ طعنے جو میرے کچھ مخلص بھائی او۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
کلچرل وارداتیں اور ہماری عدم فراغت! حامد کمال الدین ظالمو! نہ صرف یہاں کا منبر و محراب ۔۔۔
Featured-
احوال-
Featured-
ادارہ
تحریر:   تحریم افروز یوں تو امریکا سے مسلمانوں  کے معاملے میں کبھی خیر کی توقع رہی ہی&۔۔۔
احوال-
ادارہ
تحریر: فلک شیر کچھ عرصے سے فلسطین کے مسئلے کے حل کے لیے امریکی صدر ٹرمپ کی "صدی کی ڈیل" کا شہرہ ہے۔دو سال ۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین بعض مباحث بروقت بیان نہ ہوں تو پڑھنے پڑھانے والوں کے حق میں ایک زیادتی رہ جاتی ہے۔ جذبہ۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
https://twitter.com/Hamidkamaluddin کچھ چیزوں کے ساتھ ’’تعامل‘‘ کا ایک مناسب تر انداز انہیں نظر۔۔۔
باطل- جدال
حامد كمال الدين
کچھ ’مسلم‘ معترضینِ اسلام! تحریر: حامد کمال الدین پچھلے دنوں ایک ٹویٹ میرے یہاں سے  ہو۔۔۔
اصول- منہج
تنقیحات-
حامد كمال الدين
پراپیگنڈہ وار propaganda war میں سیگ منٹیشن segmentation (جزء کاری) ناگزیر ہوتی ہے۔ یعنی معاملے کو ای۔۔۔
بازيافت-
ادارہ
ہجرت کے پندرہ سو سال بعد! حافظ یوسف سراج کون مانے؟ کسے یقیں آئے؟ وہ چار قدم تاریخِ ان۔۔۔
کیٹیگری
Featured
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
ادارہ
تاريخ
ادارہ
سلف و مشاہير
مہتاب عزيز
مزيد ۔۔۔
باطل
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
جدال
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
ادارہ
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
معاشرہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
خواتين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
جہاد
مزاحمت
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم حديث
حامد كمال الدين
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز