عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Saturday, August 17,2019 | 1440, ذوالحجة 15
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
ویران ہوتا اسرائیل
:عنوان

. باطلكشمكش :کیٹیگری
محمد زکریا خان :مصنف
ویران ہوتا اسرائیل
 
محمد زکریا
 

اسرائیل سے دیگر ممالک میں جانے والے یہودیوں کی تعداد سات لاکھ سے تجاوز کر گئی۔ ان میں سے بیشتر وہ خاندان ہیں جو اسرائیل میں ثواب کی نیت سے نقل مکانی کرکے آئے تھے۔

بین الاقوامی مؤقر جرائد یہودیوں کی اس معکوس نقل مکانی پر مضامین لکھتے رہتے ہیں۔ حکومت اسرائیل اور اس کے سیاستدان اس نقل مکانی سے سخت تشویش میں مبتلا ہیں۔ اس سے پہلے وہ دُنیا بھر سے یہودیوں کو فلسطین کی طرف ہجرت کی ترغیب دیا کرتے تھے۔ اور ان کے پرزور اصرار اور پراپیگنڈے سے متاثر ہو کر یہ خاندان فلسطین میں آباد ہوئے تھے۔

گزشتہ یہودیوں کے بین الاقوامی اجتماع کا اہم موضوع یہ رہا کہ کس طرح اسرائیل سے نقل مکانی کے رحجان کو روکا جائے۔ اس اجتماع میں چار ہزار یہودی شریک ہوئے، جن میں امریکہ اور کینیڈا کے یہودیوں کی تعداد بھی کم نہیں تھی۔

اخبارات کے مطابق وہ خاندان جن کی ایک نسل اسرائیل میں جوان ہوئی ہے، انتہائی مایوسی کا شکار ہیں۔ کیونکہ یہ نوجوان یورپ میں آسودہ زندگی کو رشک کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ اور وہاں سکونت پذیر ہونے کے جتن کرتے ہیں۔ انہیں ایک طرف امریکہ، کینیڈا اور یورپ کی پُرآسائش زندگی میں کشش نظر آتی ہے تو دوسری طرف اسرائیل میں اقتصادی تنگی کے علاوہ بڑھتے ہوئے استشہادی حملوں سے خوف لاحق ہے۔

سن ٢٠٠٠ عیسوی میں جہاں امریکہ میں نئی ہزاری کی خوشی میں خوب دھوم مچی ہوئی تھی، اسرائیل سے اسی سال پانچ لاکھ سے زائد یہودی نقل مکانی کر گئے، جس کا بڑا سبب تحریک انتفاضہ کی جہادی کارروائیاں تھیں۔ سن ٣٠٠٢ میں یہ تعداد ساڑھے سات لاکھ سے بھی تجاوز کر گئی۔

اسرائیل میں یہودی آبادی کی کمی کو دور کرنے کے لیے حکومت اسرائیل نے فلسطین میں ہجرت کرنے والے یہودیوں کے لیے شہری سہولتوں میںاضافہ اور دیگر مراعات کا اعلان کیا ہے۔ لیکن اسرائیل سے نقل مکانی کرنے کے رحجان میں کوئی کمی نہیں ہوئی۔

اسرائیل کے سنجیدہ طبقوں میں ایک اصطلاح فلسطینی آبادی کا بم رائج پا گئی ہے۔ اس اصطلاح کے رائج ہونے کی وجہ یہ ہے کہ اسرائیلی شماریاتی اداروں کی تحقیق کے مطابق ٠٢٠٢ءتک اسرائیلی نو آبادیاتی علاقوں میں رہنے والے فلسطینیوں کی تعداد یہودیوں سے بڑھ جائے گی۔ یعنی صرف سترہ برس بعد۔ اسرائیل کے انتہا پسند ابھی سے چیخ رہے ہیں کہ سترہ برس بعد ہم کس علاقے کو اسرائیل کہیں گے۔ اگر اسرائیل میں رہنے والے ہر شہری کو ووٹ کا حق دیا جاتا ہے تو سن ٠٢٠٢ءمیں یہ سارے ووٹ فلسطینی لے جائیں گے اور یہودی محض ایک چھوٹی سی اقلیت رہ جائیں گے۔

مقبوضہ فلسطین سے نقل مکانی کرنے والے یہودیوں سے ایک سروے کیا گیا ہے جس میں ان سے اسرائیل چھوڑنے کی وجہ پوچھی گئی تھی۔ بیشتر لوگوں نے تحریک انتفاضہ کے بڑھتے ہوئے حملوں کو اپنی نقل مکانی کا سبب قرار دیا۔ ایک یہودی عورت کے الفاظ یہ ہیں: ”میں نے اسرائیل میں صہیونیت میں پختہ ہونے کی وجہ سے نقل مکانی کی تھی مگر یہاں کی ثقافت میرے لیے بے حد اجنبی ثابت ہوئی اور میں یہاں اپنے آپ کو غیر قوم کا سمجھتی ہوں۔ میری اولاد جوان ہو کر یورپ جا چکی ہے۔ میرا بڑا بیٹا کبھی کبھار یہ کہتا ہے کہ اگر اسرائیل میں حملے رک جائیں اور اقتصادی ترقی ہو جائے تو پھر وہ شاید اسرائیل لوٹنے کے بارے میں سوچ سکے“۔

آسٹریلیا جانے والی ایک دوسری عورت نے کہا کہ میں اپنے جواں سال بیٹوں کو خودکش حملوں کی بھینٹ نہیں چڑھنے دوں گی۔

برطانیہ کا اخبار ”گارڈین“ لکھتا ہے اسرائیل میں رہنے والے بیشتر یہودیوں کے پاس دوہری شہریت ہے۔ جس کی وجہ سے وہ جب چاہیں اسرائیل چھوڑ کر دوسرے ملک میں سکونت پذیر ہو سکتے ہیں۔ اخبار کے مطابق مشرقی یورپ کے سفارت خانوں میں ویزا حاصل کرنے والے اسرائیلی یہودیوں کی لمبی قطار دیکھنے کو ملتی ہے۔ ان میں اکثریت ان نوجوانوں کی ہے جو اپنے والدین کے آبائی ملکوں کی شہریت چاہتے ہیں۔ نوے کی دہائی میں روس سے لاکھوں کی تعداد میں یہودی مقبوضہ فلسطین میں آکر آباد ہو گئے تھے، جس سے فلسطینی آبادی کا توازن بری طرح متاثر ہوا تھا۔ لیکن آج کل روس میں رہنے والے یہودی اپنا رخ جرمنی کی طرف کرتے ہیں۔ اس کی بڑی وجہ یہ ہے کہ یہ تعلیم یافتہ یہودی اپنے معیار کے مطابق اسرائیل میں ملازمت نہیں پا سکتے۔ اگرچہ انتہا پسند یہودی پورے فلسطین کو اسرائیل میں ضم کرنے کا عہد کر چکے ہیں مگر فلسطینی مسلمانوں کی بڑھتی ہوئی تعداد اور خوفزدہ یہودیوں کی اسرائیل سے نقل مکانی ایک اور سچائی کو آشکار کرنے والی ہے۔

 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

 
Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
ایک ٹھیٹ عقائدی تربیت ہماری سب سے بڑی ضرورت
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
Featured-
اصول- منہج
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
اصول- عقيدہ
حامد كمال الدين
ایک ٹھیٹ عقائدی تربیت ہماری سب سے بڑی ضرورت حامد کمال الدین اسے فی الحال آپ ایک ناقص استقر۔۔۔
کچھ مسلم معترضینِ اسلام!
باطل- جدال
حامد كمال الدين
کچھ ’مسلم‘ معترضینِ اسلام! تحریر: حامد کمال الدین پچھلے دنوں ایک ٹویٹ میرے یہاں سے  ہو۔۔۔
فیمینسٹ جاہلیت کو جھٹلاتی ایک نسوانی تحریر
ثقافت- خواتين
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
ادارہ
فیمینسٹ جاہلیت کو جھٹلاتی ایک نسوانی تحریر اجالا عثمان انٹرنیٹ سے لی گئی ایک تحریر جو ہمیں ا۔۔۔
غامدى اور عصر حاضر ميں قتال
باطل- فرقے
اعتزال
ادارہ
ایک فیس بکی بھائی نے غامدی صاحب کی جہاد کے موضوع پر ویڈیو کا ایک لنک دے کر درخواست کی تھی کہ میں اس ویڈیو کو ۔۔۔
زیادتی زیادتی میں فرق ہے
باطل- فرقے
احوال- وقائع
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین ایک بڑی خلقت واضح واضح اشیاء میں بھی فرق کرنے کی روادار نہیں۔ مگر تعجب ہ۔۔۔
دین پر کسی کا اجارہ نہ ہونا.. تحریف اور من مانی کےلیے لائسنس؟
باطل- كشمكش
حامد كمال الدين
تحریر: حامد کمال الدین کہتا ہے میں اوپن ایئر میں کیمروں کے آگے جنازے کی اگلی صف کے اندر ۔۔۔
اب اس کےلیے اہلِ دین آپس میں الجھیں!؟
احوال-
باطل- شخصيات و انجمنيں
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین ’’تنگ نظری‘‘ کی ایک تعریف یہ ہو سکتی ہے کہ: ایک چیز جس کی دین میں گنجائش۔۔۔
شرک کے تہواروں پر مبارکباد دینے والے حضرات کے دلائل، ایک مختصر جائزہ
باطل- اديان
شیخ خباب بن مروان الحمد
شرک کے تہواروں پر مبارکباد دینے والے حضرات کے دلائل، ایک مختصر جائزہ تحریر: شیخ خباب بن مروان ا۔۔۔
دیوالی کی مٹھائی
باطل- اديان
حامد كمال الدين
دیوالی کی مٹھائی تحریر: سرفراز فیضی(داعی: صوبائی جمعیت اہل حدیث ممبئی ) *سوال*: کیا دیوالی کی مبارک باد دینا ۔۔۔
ديگر آرٹیکلز
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
ماتریدی-سلفی نزاع، یہاں کے مسلمانوں کو ایک نئی آزمائش میں ڈالنا حامد کمال الدین ایک اشع۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
منہجِ سلف کے احیاء کی تحریک میں ’مارٹن لوتھر‘ تلاش کرنا! حامد کمال الدین کیا کوئی وجہ ہے کہ۔۔۔
Featured-
احوال-
حامد كمال الدين
      کشمیر کاز، قومی استحکام، پختہ اندازِ فکر کی ضرورت حامد ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
مشكوة وحى- علوم حديث
حامد كمال الدين
غیر متخصص ہاتھ درایت! صحیح مسلم کی ایک حدیث پر اٹھائے گئے اشکال کے ضمن میں حامد کمال الدین ۔۔۔
راہنمائى-
حامد كمال الدين
(فقه) عشرۃ ذوالحج اور ایامِ تشریق میں کہی جانے والی تکبیرات ابن قدامہ مقدسی رحمہ اللہ کے متن سے۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
ثقافت- معاشرہ
حامد كمال الدين
کافروں سے مختلف نظر آنے کا مسئلہ، دار الکفر، ابن تیمیہ اور اپنے جدت پسند حامد کمال الدین دا۔۔۔
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
Featured-
اصول- منہج
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
اصول- عقيدہ
حامد كمال الدين
ایک ٹھیٹ عقائدی تربیت ہماری سب سے بڑی ضرورت حامد کمال الدین اسے فی الحال آپ ایک ناقص استقر۔۔۔
ثقافت- خواتين
ثقافت-
حامد كمال الدين
"دردِ وفا".. ناول سے اقداری مسائل تک حامد کمال الدین کوئی پچیس تیس سال بعد ناول نام کی چیز ہاتھ لگی۔ وہ۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
امارات کا سعودی عرب کو یمن میں بیچ منجدھار چھوڑنے کا فیصلہ حامد کمال الدین شاہ سلمان کے شروع دنوں میں ی۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
پاک افغان معاملہ.. تماش بینی نہیں سنجیدگی حامد کمال الدین وہ طعنے جو میرے کچھ مخلص بھائی او۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
کلچرل وارداتیں اور ہماری عدم فراغت! حامد کمال الدین ظالمو! نہ صرف یہاں کا منبر و محراب ۔۔۔
Featured-
احوال-
Featured-
ادارہ
تحریر:   تحریم افروز یوں تو امریکا سے مسلمانوں  کے معاملے میں کبھی خیر کی توقع رہی ہی&۔۔۔
احوال-
ادارہ
تحریر: فلک شیر کچھ عرصے سے فلسطین کے مسئلے کے حل کے لیے امریکی صدر ٹرمپ کی "صدی کی ڈیل" کا شہرہ ہے۔دو سال ۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین بعض مباحث بروقت بیان نہ ہوں تو پڑھنے پڑھانے والوں کے حق میں ایک زیادتی رہ جاتی ہے۔ جذبہ۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
https://twitter.com/Hamidkamaluddin کچھ چیزوں کے ساتھ ’’تعامل‘‘ کا ایک مناسب تر انداز انہیں نظر۔۔۔
باطل- جدال
حامد كمال الدين
کچھ ’مسلم‘ معترضینِ اسلام! تحریر: حامد کمال الدین پچھلے دنوں ایک ٹویٹ میرے یہاں سے  ہو۔۔۔
اصول- منہج
تنقیحات-
حامد كمال الدين
پراپیگنڈہ وار propaganda war میں سیگ منٹیشن segmentation (جزء کاری) ناگزیر ہوتی ہے۔ یعنی معاملے کو ای۔۔۔
بازيافت-
ادارہ
ہجرت کے پندرہ سو سال بعد! حافظ یوسف سراج کون مانے؟ کسے یقیں آئے؟ وہ چار قدم تاریخِ ان۔۔۔
کیٹیگری
Featured
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
ادارہ
تاريخ
ادارہ
سلف و مشاہير
مہتاب عزيز
مزيد ۔۔۔
باطل
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
جدال
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
ادارہ
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
معاشرہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
خواتين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
جہاد
مزاحمت
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم حديث
حامد كمال الدين
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز