عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Monday, September 23,2019 | 1441, مُحَرَّم 23
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
Shuroot2ndAdition آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
بعض اہل علم نے آٹھویں شرط ”کفر بالطاغوت“ ذکر کی ہے
:عنوان

:کیٹیگری
حامد كمال الدين :مصنف

بعض اہل علم نے آٹھویں شرط ”کفر بالطاغوت“ ذکر کی ہے

 
   

پیچھے یہ بات گزر چکی ہے، علمائے عقیدہ کے ہاں ”شروط لا الٰہ الا اللہ“ کو بیان کرنے کے متعدد اسلوب پائے جاتے ہیں، باوجود اِس کے کہ معانی اور مفاہیم کے حوالہ سے ان علماءمیں ہرگز کوئی اختلاف نہیں۔

داعیوں کو بھی بسا اوقات کسی خاص ماحول اور معاشرے کو سامنے رکھتے ہوئے اِس چیز کا خیال رکھنا ہوتا ہے۔ بات سمجھانے کا اسلوب بھی مخاطب کے احوال کی مناسبت سے اختیار کرنا ہی ضروری ہوتا ہے۔ خیال البتہ اِس بات کا رکھنا ہوتا ہے کہ نفسِ مضمون تبدیل نہ ہو۔

چنانچہ ہم دیکھتے ہیں کہ بعض علماءلَآ اِلٰہَ اِلاَّ اللہ کی ایک آٹھویں شرط بیان کرتے ہیں، جسے وہ ”کُفران“ یا ”کُفر بالطاغوت“ کا عنوان دیتے ہیں۔ کسی وقت اِسی شرط کو ”خدا کے ماسوا پوجی جانے والی ہستیوں کے ساتھ کفر کرنے“ کے الفاظ سے ذکر کرتے ہیں۔

علماءکے اِس فریق کی ذکر کردہ اِس شرط کا مقصد یہ ہے کہ جب تک آدمی نے باطل معبودوں کا صاف صاف انکار نہیں کیا تب تک اُسکا ”کلمہ“ ادا نہیں ہوا۔ جن جن زندہ یا مردہ ہستیوں کو خدا کے سوا پکارا جاتا ہے، جن جن ہستیوں کے آگے مراسم بندگی بجا لائے جاتے ہیں خواہ وہ طواف کی صورت میں ہو یا نذر و نیاز کی صورت میں یا سجدہ و کورنش کی صورت میں، جن جن ہستیوں کو خدا کے ماسوا مطاع اور پیشوا مانا جاتا ہے یعنی خدا کی بات کو چھوڑ کر ان کے قول کی طرف تحاکم کیا جاتا ہے، جب تک آدمی نے ان سب کے ساتھ کفر نہیں کیا، تب تلک اُس کا لا الٰہ الا اللہ کہنا معتبر نہیں۔

جہاں تک اِس ”شرط“ کے تحت بیان ہونے والی مذکورہ بالا حقیقت کا تعلق ہے تو اِس میں تو علمائے عقیدہ کے مابین ہرگز دو رائے نہیں۔ بلا شبہ جب تک آدمی خدا کے ماسوا پوجی جانے والی ہستیوں کے ساتھ کفر نہیں کرتا، خواہ وہ پوجا کی جو بھی شکل ہو، تب تک اُس کا لا الٰہ الا اللہ کہنا غیر معتبر ہے۔ تاہم بیشتر اہل علم اِس بات کو لَآ اِلٰہَ کے معنیٰ و مفہوم ہی کے اند بیان کر جاتے ہیں نہ کہ شرط کے طور پر (جوکہ قوی تر ہے)۔ یعنی لَآ اِلٰہَ اِلاَّ اللہ کا معنیٰ اور مفہوم ہی یہ ہے، جس کا علم لینا اور اس پر یقین ، اخلاص، صدق و وفاء، تسلیم اور انقیاد وغیرہ ایسے رویے اختیار کرنا ایک شرط کے طور پر آدمی سے مطلوب ہوتے ہیں۔ چنانچہ کسی اہل علم نے اگر اِس کو ایک علیحدہ ”شرط“ کے طور پر بیان نہیں کیا تو اُس نے اِسے ”شرط“ سے بھی زیادہ اہم چیز کے طور پر بیان کیا ہے، یعنی لَآ اِلٰہَ اِلاَّ اللہ کا وہ بنیادی ترین مفہوم جس پر آدمی کو ایمان لانا ہے۔

بنا بریں، اِس بات کو ہرگز محل نزاع نہیں ٹھہرایا جا سکتا کہ جب تک آدمی اُن ہستیوں کے ساتھ کفر نہیں کر لیتا جن کی خدا کو چھوڑ کر عبادت ہوتی ہے تب تک اُس کے لَآ اِلٰہَ اِلاَّ اللہ کہنے کا کوئی معنیٰ اور مفہوم ہی نہیں۔بات ہوسکتی ہے تو صرف اِس پر کہ آیا اِس بات کو لا الٰہ الا اللہ کے مفہوم کے طور پر بیان کیا جائے یا شرط کے طور پر؟ علمائے عقیدہ کی زیادہ بڑی تعداد نے اول الذکر طریقے کو اختیار کیا ہے (جن کی پیروی میں ہم نے بھی اِس کو لَآ اِلٰہَ اِلاَّ اللہ کے ”مفہوم“ ہی میں بیان کیا ہے نہ کہ ”شرط“ کے طور پر) جبکہ علماءکی ایک تعداد ایسی ہے جس نے ثانی الذکر طریقہ اختیار کیا ہے۔ مثال کے طور پر شیخ حمود بن العقلا اپنے رسالہ ”شرح شروط لا الہ الا اللہ“ میں کلمہ کی آٹھویں شرط کا عنوان دیتے ہیں: ”الکفر بالطاغوت“۔ اور اِس کی دلیل میں دو آیتیں لے کر آتے ہیں:

 

فَمَنْ يَكْفُرْ بِالطَّاغُوتِ وَيُؤْمِن بِاللّهِ فَقَدِ اسْتَمْسَكَ بِالْعُرْوَةِ الْوُثْقَىَ لاَ انفِصَامَ لَهَا وَاللّهُ سَمِيعٌ عَلِيمٌ (البقرۃ: 256)

”تو پھر جس نے کفر کیا طاغوت کے ساتھ، اور ایمان لایا اللہ کے ساتھ، تو یقینا تھام لیا اُس نے وہ مضبوط ترین سہارا جس کو ہرگز ٹوٹنا نہیں۔ اور اللہ سننے والا ہے جاننے والا“

 

وَلَقَدْ بَعَثْنَا فِي كُلِّ أُمَّةٍ رَّسُولاً أَنِ اعْبُدُواْ اللّهَ وَاجْتَنِبُواْ الطَّاغُوتَ (النحل: 36)

”اور بے شک ہم نے بھیجا ہر امت میں کوئی نہ کوئی رسول، کہ: عبادت کرو اللہ کی اور دامن کش ہو کر رہو طاغوت سے“۔

 

اِس کے بعد، رسول اللہ ﷺ کی یہ حدیث لے کر آتے ہیں:

مَنْ قَالَ لَآ اِلٰہَ اِلاَّ اللہ، وَکَفَرَ بِمَا یُعْبَدُ مِنْ دُوْنِ اللہ، حَرُمَ مَالُہُ وَدَمُہُ، وَحِسَابُہُ عَلَی اللہ“

(صحیح مسلم: کتاب الایمان، باب: الأمر بقتال الناس حتیٰ یقولوا أن لا اِلٰہ اِلا اللہ محمد رسول اللہ)

”جس شخص نے کہہ دیا ”نہیں کوئی عبادت کے لائق مگر اللہ“، اور وہ کفر کرنے لگا ہر اُس ہستی کے ساتھ جو اللہ کو چھوڑ کر پوجی جاتی ہے، اُس کا مال اور جان حرام ہوجاتی ہے، باقی اُس کا حساب کرنا اللہ کا کام“۔

 

اِسی طرح شیخ عبد العزیز الراجحی ایک سوال کے جواب میں کہتے ہیں:

سوال: بعض اہل علم بیان کرتے ہیں کہ شروطِ لا الٰہ الا اللہ آٹھ ہیں۔ یہ آٹھویں شرط کونسی ہے؟

جواب: کفران کرنا (طاغوت کا)۔ جیسا کہ ان کے بیان میں آیا ہے۔ یعنی خدا کے ماسوا پوجی جانے والی ہستیوں کے ساتھ کفر کرنا۔ اور یہ معروف ہے۔ اور دیگر شروط سے ماخوذ ہے۔

(شرح عقیدہ طحاویہ از شیخ عبد العزیز الراجحی حصہ اول 1، ص 26)

Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
ديگر آرٹیکلز
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
Featured-
حامد كمال الدين
"انسان دیوتا" کے حق میں پاپ! حامد کمال الدین دین میں طعن کر لو، جیسے مرضی دین کے ثوابت ۔۔۔
Featured-
بازيافت-
حامد كمال الدين
تاریخِ خلفاء سے متعلق نزاعات.. اور مدرسہ اہل الأثر حامد کمال الدین "تاریخِ خلفاء" کے تعلق س۔۔۔
Featured-
باطل- اديان
حامد كمال الدين
ریاستی حقوق؛ قادیانیوں کا مسئلہ فی الحال آئین کے ساتھ حامد کمال الدین اعتراض: اسلامی۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
لفظ  "شریعت" اور "فقہ" ہم استعمال interchangeable    ہو سکتے ہیں ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
ماتریدی-سلفی نزاع، یہاں کے مسلمانوں کو ایک نئی آزمائش میں ڈالنا حامد کمال الدین ایک اشع۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
منہجِ سلف کے احیاء کی تحریک میں ’مارٹن لوتھر‘ تلاش کرنا! حامد کمال الدین کیا کوئی وجہ ہے کہ۔۔۔
Featured-
احوال-
حامد كمال الدين
      کشمیر کاز، قومی استحکام، پختہ اندازِ فکر کی ضرورت حامد ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
مشكوة وحى- علوم حديث
حامد كمال الدين
اناڑی ہاتھ درایت! صحیح مسلم کی ایک حدیث پر اٹھائے گئے اشکال کے ضمن میں حامد کمال الدین ۔۔۔
راہنمائى-
حامد كمال الدين
(فقه) عشرۃ ذوالحج اور ایامِ تشریق میں کہی جانے والی تکبیرات ابن قدامہ مقدسی رحمہ اللہ کے متن سے۔۔۔
تنقیحات-
ثقافت- معاشرہ
حامد كمال الدين
کافروں سے مختلف نظر آنے کا مسئلہ، دار الکفر، ابن تیمیہ اور اپنے جدت پسند حامد کمال الدین دا۔۔۔
اصول- منہج
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
اصول- عقيدہ
حامد كمال الدين
ایک ٹھیٹ عقائدی تربیت ہماری سب سے بڑی ضرورت حامد کمال الدین اسے فی الحال آپ ایک ناقص استقر۔۔۔
ثقافت- خواتين
ثقافت-
حامد كمال الدين
"دردِ وفا".. ناول سے اقداری مسائل تک حامد کمال الدین کوئی پچیس تیس سال بعد ناول نام کی چیز ہاتھ لگی۔ وہ۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
امارات کا سعودی عرب کو یمن میں بیچ منجدھار چھوڑنے کا فیصلہ حامد کمال الدین شاہ سلمان کے شروع دنوں میں ی۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
پاک افغان معاملہ.. تماش بینی نہیں سنجیدگی حامد کمال الدین وہ طعنے جو میرے کچھ مخلص بھائی او۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
کلچرل وارداتیں اور ہماری عدم فراغت! حامد کمال الدین ظالمو! نہ صرف یہاں کا منبر و محراب ۔۔۔
احوال-
ادارہ
تحریر:   تحریم افروز یوں تو امریکا سے مسلمانوں  کے معاملے میں کبھی خیر کی توقع رہی ہی&۔۔۔
احوال-
ادارہ
تحریر: فلک شیر کچھ عرصے سے فلسطین کے مسئلے کے حل کے لیے امریکی صدر ٹرمپ کی "صدی کی ڈیل" کا شہرہ ہے۔دو سال ۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین بعض مباحث بروقت بیان نہ ہوں تو پڑھنے پڑھانے والوں کے حق میں ایک زیادتی رہ جاتی ہے۔ جذبہ۔۔۔
کیٹیگری
Featured
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
حامد كمال الدين
ادارہ
تاريخ
ادارہ
مزيد ۔۔۔
باطل
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
اديان
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
معاشرہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
خواتين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
جہاد
مزاحمت
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم حديث
حامد كمال الدين
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز