عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Sunday, December 5,2021 | 1443, جُمادى الأولى 0
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
weekly آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
نواقضِ اسلام کو پڑھنے پڑھانے کی تین سطحیں
:عنوان

مخاطبین کو عقیدہ کی خرابیوں وغیرہ سے خوب خوب متنبہ و خبردار کیا جاتا ہے البتہ ان پر، یا ان کے علاوہ کسی اور پر، حکم لگانے سے گریز کیا جاتا ہے۔ حکم لگانے سے مراد، سادہ لفظوں میں، فتویٰ لگانا

. اصولعقيدہ :کیٹیگری
حامد كمال الدين :مصنف

نواقضِ اسلام کو پڑھنے پڑھانے کی تین سطحیں

حامد کمال الدین

انٹرنیٹ پر موصول ہونے والا ایک سوال:

نواقض اسلام کے مرتکب اشخاص کے بارے میں آپ کیا کہتے ہیں؟

 

جواب:

"نواقضِ اسلام" کو پڑھنا یا زیر بحث لانا فی الحقیقت تین سطحوں پر ہوتا ہے:

ایک:

نواقضِ اسلام کا یہ مضمون خود اپنے فائدہ کےلیے پڑھنا اور سمجھنا۔ تاکہ خود آپ روشنی میں آ جائیں اور ایسے امور سے کوسوں دور رہیں جو آپ کے ایمان کے حق میں خطرہ ہیں۔ ہر آدمی کو چاہئے وہ ان باتوں سے خوب آگاہ اور متنبہ ہو تاکہ خدا سے اس حالت میں ملے کہ کوئی بدعقیدگی اس کے دامن پر نہ ہو۔

دوسری سطح:

لوگوں کو تعلیم اور دعوت دینے کے عمل میں نواقضِ اسلام سے آگاہ کرنا۔ تاکہ اسلامی معاشرہ ان تباہ کن امور سے محفوظ و مامون کر دیا جائے اور حقیقی معنوں میں توحید کا قلعہ ہو۔ معاشرے میں لوگوں کو ایسے سنجیدہ امور کی بابت آگاہی دینا البتہ ہر شخص کا بس نہیں۔ اس کےلیے ضروری ہے، آدمی ذرا اچھے درجے کا طالبعلم ہو اور اہل علم کی راہنمائی میں چلنے والا ہو؛ ورنہ یقینی طور پر ‘تعلیم’ سے زیادہ وہ ‘حادثات’ کر کے آنے والا ہے؛ اور اِن اشیاء کو معاشرے میں فائدہ کی بجائے فتنہ کا ذریعہ بنانے والا۔ مختصراً، اس میں مخاطبین کو عقیدہ کی خرابیوں وغیرہ سے خوب خوب متنبہ و خبردار کیا جاتا ہے (اور یہ نواقض اسلام پڑھانے کی اہم ترین اور مفیدترین جہت ہے)۔ البتہ ان پر، یا ان کے علاوہ کسی اور پر، حکم لگانے سے گریز کیا جاتا ہے۔ حکم لگانے سے مراد، سادہ لفظوں میں، فتویٰ لگانا۔ لوگ آپ کو ‘اُدھر’ لے جانا بھی چاہیں تو آپ اپنی طالبعلمانہ حدود سے واقف ہونے کے باعث، نیز تعلیم اور دعوت کے چیلنج سے آگاہ ہونے کی بدولت، اُس روٹ پر چڑھنے سے دامن کش رہتے ہیں۔ اس سلسلہ میں، ہم کوشش کریں گے، چند اقتباسات محمد قطب کے آپ کے ساتھ شیئر کیے جا سکیں، تاکہ معلوم ہو سکے دعوت اور تعلیم فی الحقیقت دانا لوگوں کا کام ہے، اور داناؤں کی سرکردگی ہی میں رہ کر انجام دینے کا۔ دانائی یعنی بصیرت۔ أدعو إلی اللہ علیٰ بصیرۃٍ أنا ومن اتبعنی۔

ہاں یہ واضح کردیں، کہ ایک عامی کے طور پر، آپ نے بھی ان داعیوں کی آواز میں آواز ملانی ہوتی ہے جو معاشرے میں لوگوں کو شرک یا الحاد کی خطرناکیوں سے خبردار کرتے ہیں۔ اہل علم، یا طلبۂ علم کی سرکردگی میں، خود آپ کو ماحول میں خدا کی ہر نافرمانی سے روکنے والوں کے اندر شامل ہی رہنا ہوتا ہے۔ اور شرک کے راستے میں ایک آہنی دیوار کھڑی کرنی ہوتی ہے۔ شرک کو ’ناں‘ کرنے کے معاملہ میں زوردارترین لہجے لے کر آنے ہوتے ہیں، بغیر اس کے کہ لوگوں خاص طور پر غافل اور بےعلم طبقوں کے ساتھ آپ کی محبت اور ان کےلیے آپ کی رحمت اور شفقت میں کوئی ذرہ بھر فرق آئے۔

تیسری سطح:

نواقضِ اسلام کو زیرِ بحث لانے کی تیسری سطح وہ ہے جہاں کسی شخص یا اشخاص پر باقاعدہ حکم لگایا جاتا ہے۔ یہ قطعی طور پر "راسخون فی العلم" کا کام ہے۔ عام آدمی کا تو بالکل نہیں؛ طلبہ اور داعیوں کا بھی نہیں۔ آپ کے دور کے وہ أئمۂ عقیدہ اور فقہائے سنت، جن کے علم اور فتویٰ کی معاشرے میں ایک دھاک ہے، اگر آپ کو یہ فتویٰ دے چکے ہیں کہ فلاں شخص یا اشخاص نواقضِ اسلام میں سے کسی ناقض کی زد میں آنے کے باعث دین سے خارج ٹھہرایا جا چکا ہے، تو آپ اِس فتویٰ میں ان کی پیروی کیجئے۔ نہیں؛ تو لوگوں کا حکمِ اصلی جوں کا توں رہے گا۔ یعنی وہ مسلمان ہیں، اور ان کے سب احکام مسلمانوں والے ہیں، اگرچہ آپ ان کو کیسے ہی سنگین عمل میں ملوث کیوں نہ پائیں۔

بنا بریں؛ معاشرے کے جن عام لوگوں کے بارے میں آپ نے سوال کیا ہے، ان میں سے اگر کچھ لوگ بالفرض آپ کی نظر میں نواقضِ اسلام کے مرتکب بھی ہوں، تو آپ زیادہ سے زیادہ جوکام ان کے ساتھ کریں گے وہ یہ کہ حکمت اور موعظہ حسنہ کے ساتھ، انہیں ان اشیاء کی سنگینی سے متنبہ کریں اور ان کو مسلسل تعلیم دیں۔ آج بھی، کل بھی اور پرسوں بھی۔ اس کے سوا کسی بات کی جلدی نہ کریں۔ اس تمام عرصہ کے دوران، ان کو مسلمان ہی مانیں اور ان کے سب حقوق اور احکام مسلمانوں والے رکھیں۔ کیونکہ قاعدہ یہ ہے کہ جب تک فتویٰ کی مجاز اتھارٹی کسی شخص پر حکم لگا نہ دے، اسے تمام حقوق اور عصمت مسلمانوں والی حاصل رہے گی۔

یہاں، بطورِ خاص میں ایک گروہ سے خبردار کروں گا جو انٹرنیٹ وغیرہ پر ائمۂ توحید کی بدنامی کا باعث بن رہا ہے۔ ایک طرف یہ حضرت آپ کو فرمائیں گے کہ میں تو کسی پر حکم لگا ہی نہیں رہا، لیکن دوسری طرف جیسے ہی آپ ایک شخص کےلیے ’’رحمہ اللہ‘‘ بولیں گے، یا اس کا جنازہ پڑھ آئیں گے، یا اس کا کوئی اور معاملہ مسلمانوں والا رکھیں گے، تو یہ اس پر سیخ پا ہو جائیں گے، گویا آپ نے ایک ناجائز کام کر دیا۔ یعنی فتویٰ لگائے بغیر یہ حضرات آدمی کے احکام غیرمسلموں جیسے رکھنے میں مہارت رکھتے ہیں۔ آدمی کےلیے استغفار کر آنے پر آپ کے ساتھ لمبی لمبی بحثیں کرتے ہیں۔ (ممتاز قادری مرحوم تک کو اِن خدا کے بندوں نے نہیں بخشا اور اس کا جنازہ پڑھ آنے والوں پر کئی ہفتے نکیر کرتے رہے)۔ اس طبقے کی کچھ تفصیل آپ ہمارے اس مضمون میں دیکھ سکتے ہیں:

یہ سب کچھ.. اور ابھی فتویٰ نہیں لگایا!


Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
فقہ الموازنات، ایک تصویر کو پورا دیکھ سکنا
اصول- منہج
حامد كمال الدين
فقہ الموازنات، ایک تصویر کو پورا دیکھ سکنا حامد کمال الدین برصغیر کا ایک المیہ، یہاں کے کچھ۔۔۔
شخصیات اور پارٹیوں کے ساتھ تھوک کا معاملہ نہ کرنا
اصول- منہج
تنقیحات-
حامد كمال الدين
پراپیگنڈہ وار propaganda war میں سیگ منٹیشن segmentation (جزء کاری) ناگزیر ہوتی ہے۔ یعنی معاملے کو ای۔۔۔
شرکِ ’’ہیومن ازم‘‘ کی یلغار.. اور امت کا طائفہ منصورہ
اصول- عقيدہ
اداریہ-
حامد كمال الدين
شرکِ ’’ہیومن ازم‘‘ کی یلغار..  اور امت کا طائفہ منصورہ حالات کو سرسری انداز میں پڑھنا... واقعات م۔۔۔
پاکستانی سیاست میں اسلامی سیکٹر کے آگے بڑھنے کے آپشنز
Featured-
احوال-
اصول- منہج
راہنمائى-
حامد كمال الدين
پاکستانی سیاست میں اسلامی سیکٹر کے آگے بڑھنے کے آپشنز تحریر: حامد کمال الدین میری نظر میں، اس۔۔۔
رسالہ اصول سنت از امام احمد بن حنبلؒ
اصول- عقيدہ
اصول- منہج
ادارہ
رســـــــــــــــــــــالة اصولِ سنت از امام احمد بن حنبل اردو استفاده: حامد كمال الدين امام ۔۔۔
’خطاکار‘ مسلمانوں کو ساتھ چلانے کا چیلنج
اصول- منہج
تنقیحات-
حامد كمال الدين
’خطاکار‘ مسلمانوں کو ساتھ چلانے کا چیلنج سوال: ایک مسئلہ جس میں افراط و تفریط کافی ہو ر۔۔۔
واقعۂ یوسف علیہ السلام کے حوالے سے ابن تیمیہ کی تقریر
تنقیحات-
Featured-
اصول- منہج
حامد كمال الدين
قارئین کے سوالات واقعۂ  یوسف علیہ السلام کے حوالے سے ابن تیمیہ کی تقریر ہمارے کچھ نہایت عزیز ۔۔۔
’’آسمانی شریعت‘‘ نہ کہ ’سوشل کونٹریکٹ‘۔۔۔ ’’جماعۃ المسلمین‘‘ بہ موازنہ ’ماڈرن سٹیٹ‘
اصول- منہج
حامد كمال الدين
تعلیق 12   [1]   (بسلسلہ: خلافت و ملوکیت، از ابن تیمیہ) ’’آسمانی شریعت‘‘ نہ کہ ’سوشل ۔۔۔
"کتاب".. "اختلاف" کو ختم اور "جماعت" کو قائم کرنے والی
اصول- منہج
حامد كمال الدين
تعلیق 11   [1]   (بسلسلہ: خلافت و ملوکیت، از ابن تیمیہ) ’’کتاب‘‘ ’’اختلاف‘‘ کو خت۔۔۔
ديگر آرٹیکلز
تنقیحات-
احوال-
حامد كمال الدين
کل جس طرح آپ نے فیصل آباد کے ایک مرحوم کا یوم وفات "منایا"! حامد کمال الدین قارئین کو شاید ا۔۔۔
Featured-
احوال-
حامد كمال الدين
’بندے‘ کو غیر متعلقہ رکھنا آپ کے "شاٹ" کو زوردار بناتا! حامد کمال الدین لبرلز کے ساتھ اپنے ا۔۔۔
بازيافت- سلف و مشاہير
حامد كمال الدين
"حُسینٌ منی & الحسن والحسین سیدا شباب أھل الجنة" صحیح احادیث ہیں؛ ان پر ہمارا ایمان ہے حامد۔۔۔
بازيافت- تاريخ
بازيافت- سيرت
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
ہجری، مصطفوی… گرچہ بت "ہوں" جماعت کی آستینوں میں! حامد کمال الدین ہجرتِ مصطفیﷺ کا 1443و۔۔۔
جہاد- مزاحمت
جہاد- قتال
حامد كمال الدين
صلیبی قبضہ کار کے خلاف چلی آتی ایک مزاحمتی تحریک کے ضمن میں حامد کمال الدین >>دنیا آپ۔۔۔
احوال-
Featured-
حامد كمال الدين
مضمون کا پہلا حصہ پڑھنے کےلیے یہاں کلک کیجیےمزاحمتوں کی تاریخ میں کونسی بات نئی ہے؟ صلیبی قبضہ کار کے خلاف۔۔۔
حامد كمال الدين
8 دینداروں کے معاشرے میں آگے بڑھنے کو، جمہوریت واحد راستہ نہیں تحریر: حامد کمال الدین ۔۔۔
حامد كمال الدين
7 "اقتدار" سے بھی بڑھ کر فی الحال ہمارے پریشان ہونے کی چیز تحریر: حامد کمال الدین مض۔۔۔
حامد كمال الدين
6 جمہوری راستہ… اور اسلامی انقلاب تحریر: حامد کمال الدین مضمون: خلافتِ نبوت سے۔۔۔
حامد كمال الدين
5 جمہوریت کو "کلمہ" پڑھانا کیا ضروری ہے؟ تحریر: حامد کمال الدین مضمون: خلافتِ ۔۔۔
حامد كمال الدين
4 جمہوریت… اور اسلام کی تفسیرِ نو تحریر: حامد کمال الدین مضمون: خلافتِ نبوت سے۔۔۔
حامد كمال الدين
3 جمہوری پیکیج، "کمتر برائی"… یا "آئیڈیل"؟ تحریر: حامد کمال الدین مضمون: خلافتِ نبوت سے عد۔۔۔
حامد كمال الدين
2 جمہوری راستہ اختیار کرنے پر، دینداروں کے یہاں دو انتہائیں تحریر: حامد کمال الدین ۔۔۔
حامد كمال الدين
1 کامل خلافتِ نبوت سے عدولی، ملوکیتی ادوار پر جمہوری فارمیٹ کا قیاس؟ تحریر: حامد ک۔۔۔
حامد كمال الدين
جاہلیت کے سب دستور آج میرے پیر کے نیچے! تحریر: حامد کمال الدین  خطبۂ حجة الوداع، جس کی باز۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
"نفس کی اطاعت" شرک کب بنتی ہے؟ حامد کمال الدین برصغیر کے فکری رجحانات صوفیت کے زیرِاثر رہے۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
ایک "عقیدہ بیسڈ" aqeedah-based بیانیہ جو "اعمال" میں نرمی اور تدریج پر کھڑا ہو حامد ک۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
"دلیل ازم" کا ایک ٹپیکل مغالطہ حامد کمال الدین سوال: کیا آپ اس عبارت سے متفق ہیں؟ [ر۔۔۔
کیٹیگری
Featured
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
منہج
حامد كمال الدين
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
سلف و مشاہير
حامد كمال الدين
تاريخ
حامد كمال الدين
سيرت
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
باطل
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
فرقے
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
معاشرہ
حامد كمال الدين
خواتين
حامد كمال الدين
خواتين
ادارہ
مزيد ۔۔۔
جہاد
قتال
حامد كمال الدين
مزاحمت
حامد كمال الدين
مزاحمت
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم حديث
حامد كمال الدين
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز