عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Sunday, November 17,2019 | 1441, رَبيع الأوّل 19
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
weekly آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
کشمیر کےلیے چند کلمات
:عنوان

بالی وڈ کی دھنوں، اسکے سستے آلوؤں ٹماٹروں اور اسکی شوگر منڈیوں پر ہماری کیسی کیسی رال نہ بہتی! یہاں حمیت کچھ جاگ اٹھتی ہے اور مسلم فاعلیت اپنے تاریخی دھارے کا کچھ پتہ پوچھتی ہے تو کشمیریو تمہارے دم سے

. جہادمزاحمت . احوالامت اسلام :کیٹیگری
حامد كمال الدين :مصنف

کشمیر کےلیے چند کلمات

حامد کمال الدین

برصغیر پاک و ہند میں ملتِ شرک کے ساتھ ہمارا ایک سٹرٹیجک معرکہ آج کشمیر میں لڑا جا رہا ہے۔ دو ملتوں کی یہ صدیوں سے چلی آتی جنگ جو پیچھے ان گنت موڑ مڑ آئی ہے اور بہت سے عظیم الشان موڑ اللہ کی توفیق سے ابھی اسے مڑنے ہیں، اس وقت البتہ کشمیر ہی کے موڑ پر کھڑی ’بیداریِ مسلمان‘ کی منتظر ہے۔

یقیناً اللہ کے ہر کام میں حکمت ہے جس کا صحیح علم اُسی کے پاس ہے؛ ہم بندوں کو اُس کی تقدیر میں خیر کے پہلو تلاش کرنا اور ان میں اپنے کردار کا تعین کرنا ہوتا ہے۔ یہ ’کشمیر‘ نامی مسئلہ 1947 ہی میں سرے لگ جاتا تو کیا معلوم جنوب ایشیا میں شرک اور توحید کی  یہ جنگ مسلمان کو آواز دینے میں آج اپنے اِس تہذیبی انحطاط کے وقت کیسی کیسی رکاوٹیں پاتی! برصغیر کا مسلمان فی الوقت میدانِ عمل میں نظر نہیں آ رہا تو اس کے پیچھے ہمیں لاحق وہ تہذیبی ضُعف ہی ہے، ورنہ آج جب یہ اپنا ’’غوری‘‘ اور ’’غزنوی‘‘ میدان میں لا چکا اور ’’تکبیر‘‘ سے موسوم اپنی ایٹمی دفاعی صلاحیت جہان کو دکھا چکا، حق یہ تھا کہ دنیا آج اِسی کو سنتی، کہ یہ نہتا دنیا پر غالب آتا رہا ہے، مگر بطور مسلمان یہ آج اِس رزم سے تقریباً روپوش ہے۔ یہ اِس تہذیبی عدم فاعلیت کا شکار آج نہ ہوتا تو دیویوں مورتیوں کی عبادت کا دین ہندوستان میں اِس اکیسویں صدی کے اندر جس قابل ترس حالت میں ہوتا وہ تصور کرنے کا ہے۔ پس سب سے مشکل کام آج اس مسلمان کو جگانا اور ایک ’پیچھے سے چلی آتی‘‘ کہانی میں اس کا وہ کھویا ہوا کردار بحال کروانا ہے۔ کشمیریو! ہم تمہارے شکر گزار ہیں جو اپنی ان بےتحاشا قربانیوں سے تم اس مسلمان کو بیدار کرنے کا ذریعہ بن رہے ہو۔ برصغیر میں دو ملتوں کی تاریخی آویزش میں اُس ’ڈیڈ لاک‘ کا عنوان بنے ہوئے ہو جو اِس آویزش کی سب سے صحیح اور سچی حقیقت ہے۔ تم نہ ہوتے تو ’ممبئی‘ کی سکرینوں میں محو اس مسلمان کو بھلا ہم کیا حوالہ دے کر اٹھاتے اور کس نام سے اس کی غیرت کو جگاتے!

مغربی برصغیر کا ہر مسلمان یہاں اپنےآپ کو کسی قرض کا زیر بار جانتا ہے تو اُسی ’سن سنتالیس‘ والی کہانی کے حوالے سے جو ’’کشمیر‘‘ کے عنوان سے ابھی ناتمام چلی آتی ہے۔ پس کچھ بیداری ہے یا اس کا امکان ہے تو کشمیریو تمہارے دم سے! تصور کرو تم نہ ہوتے تو ’امن کی آشا‘ کے سُروں پر ہم کس بری طرح اپنا آپ ہارتے! ’بالی وڈ‘ کی دھنیں ہمارے لیے کیسی مست قبریں ہوتیں! اُس کے سستے آلوؤں اور ٹماٹروں اور اُس کی حدِّنگاہ شوگر منڈیوں پر ہماری کیسی کیسی رال نہ بہتی! یہاں حمیت کچھ جاگ اٹھتی ہے اور مسلم فاعلیت اپنے تاریخی دھارے کا کچھ پتہ پوچھتی ہے تو تمہارے بہتے لہو کے معجزے سے! اس کشمیری بیٹی اور بہن کے آنچل پر ہمارے نوجوان کیوں فدا نہ ہوں جو رشتوں کی ’’اسلامیت‘‘ کا آج واحد حوالہ رہ گیا ہے اور ’’اسلام‘‘ سے بڑھ کر بھلا کیا رشتہ ہے! تم ہمارے محسن اور ہراول ہو اور تمہاری نصرت ہم پر ایک دیرینہ قرض اور ایک شرعی خدائی عہد؛ جس کےلیے ہم نہ صرف خدا کے آگے بلکہ تاریخ کی عدالت میں بھی جوابدہ ہیں۔ اس خاص پہلو سے؛ ہمالیہ اور بحیرۂ عرب کے مابین واقع اِس وسیع و عریض خطے میں اسلامی احیاء کا ایک قومی حوالہ آج صرف اور صرف ’’کشمیر‘‘ ہے۔ البتہ یہ ایک ایسا احیاء ہے جس کی بیل کسی چھوٹےموٹے عمل سے منڈھے چڑھنے کی نہیں۔ یہ تکمیل پاتا ہے برصغیر کے اُسی تاریخی ریلے کو بحال کروانے سے جو اگر لوٹ آتا ہے تو وہ اپنی نہاد میں اس قدر عظیم الشان ہے کہ ’کشمیر‘ کی حیثیت تب اس کےلیے صرف ایک نقطۂ ابتدا کی ہو سکتی ہے۔ اور کشمیر کےلیے یہ کوئی معمولی شرف نہیں۔

ایک ایسا ہی دشوار تاریخی مقام جہاں آج ہماری ناؤ جا پھنسی ہے اس کا نام ’’کشمیر‘‘ ہے، جو اِس پورے خطے میں ’’مسلمان‘‘ کی پیدائشِ نو کی بنیاد rationale   کچھ ایسے دلگداز اور ناگزیر انداز میں پیش کرتا ہے.. کہ  اسے ناں کرنے کی گنجائش ہمارے ایک گناہگار سے گناہگار شخص کے پاس باقی نہیں رہ گئی ہے۔ سب ایک بات کو سمجھنے لگے ہیں، اور اللہ کے فضل سے کسی نہ کسی سطح پر اس کےلیے سنجیدہ ہونے بھی جا رہے ہیں، گو اس راہ میں بڑھنے کےلیے ہر شخص اور ادارے کو اپنی اپنی پوزیشن نگاہ میں رکھنی ہے.. کہ مسئلہ صرف سامنے کھڑے ایک بےرحم دیوہیکل دشمن کا نہیں بلکہ اس کی پشت پر کھڑی عالمی اسٹیبلشمنٹ کا بھی ہے جس کے ہاتھ آج مسلم ملکوں کے گلیوں محلوں اور یہاں کے میڈیا مائیکروفونوں اور تعلیمی نصابوں تک جا پہنچے ہوئے ہیں۔ البتہ یہ طے ہے کہ ایک ایسی مشکل گھاٹی عبور کرنے کا فوری اور براہِ راست حوالہ immediate and desperate  reference  میرے مبارک کشمیری بھائیو اور بہنو آج تم ہو؛ اور تمہارے سوا کوئی نہیں۔ تم وہ داعیۂ عمل ہو جو بخدا یہاں بہت سے باہمت نفوس کو ساری ساری رات جگاتا اور بہت سے باعزیمت اداروں، جماعتوں اور انجمنوں کو شبانہ روز سرگرم رکھتا ہے۔ یقین کرو، یہاں کا کسان اپنی گندم اٹھاتے وقت ’’کشمیر‘‘ کا حصہ نہیں بھولتا اور یہاں کے تاجر نے اپنی دکان کے کسی گوشے میں ’’کشمیر‘‘ کی صندوقچی بالعموم رکھ چھوڑی ہوتی ہے... ان تمام پابندیوں کے باوجود جو ہمارے کلمہ گو حکمرانوں نے اپنی ’بین الاقوامی‘ ذمہ داریوں کے تحت یہاں کے قومی و ایمانی جذبوں پر شدت کے ساتھ عائد کر رکھی ہیں!

*****

ایک بات کشمیر کی صحوۃ مبارکہ (بابرکت اسلامی بیداری) کےلیے مجھے ضرور کرنی ہے۔ درون سے ہم پر حملہ آور فتنے اس وقت ایک نہیں دو ہیں: جدت پسند اور شدت پسند۔ یہ دونوں بھیانک ’’بیانیے‘‘ عالم اسلام میں اپنے وجود کےلیے ایک دوسرے پر باقاعدہ سہارا کرتے اور اپنی پزیرائی کےلیے ایک دوسرے سے عملاً مدد پاتے ہیں۔ دونوں کا ’چین ری ایکشن‘ chain reaction  بڑے طریقے سے ایک خطے کی اسلامی بیداری کو تباہ کرتا ہے۔ یہ جہاں گیا وہاں کی لہلہاتی فصلوں کو اجاڑ آیا۔ داخلی طور پر یہ دونوں بےشک ہمارے کچھ پرانے عقائدی فتنوں کا احیاء یا تسلسل ہوں، مگر بیرونی سطح پر دشمن ان دونوں سے اپنے اپنے انداز اور ضرورت کی مدد پانے لگا ہے۔ ان دونوں کا جدل dialect   ایسا خوفناک ہے کہ ہم اپنی ایک سائڈ بچاتے بچاتے دوسری سائڈ تباہی کی زد میں دے بیٹھتے ہیں اور پھر ادھر سے بچتےبچتے اپنی پہلی سائڈ گنوا بیٹھتے ہیں۔ ایک آپ پر کافر کی تلوار کو وجہِ جواز بخشتا ہے اور دوسرا مسلمان کے خلاف مسلمان کی تلوار کو بےنیام کرواتا اور اس کےلیے ’علمی بنیادیں‘ فراہم کرتا ہے۔ اپنی مبارک بیداری کو پس جہاں آپ کو آج کچھ غامدی اور شذوذی افکار سے بچانا ہے وہاں ٹی ٹی پی اور داعش وغیرہ ایسے رجحانات سے بھی اتنا ہی اس کا تحفظ کرنا ہے۔ اس ’’وسطیت‘‘ پر رہنے اور فتنے کے ان دونوں رخوں سے بیک وقت دامن کش رہنے کےلیے بطورِ خاص ان علماء کا دامن تھامنا ضروری ہے جو آپ کو سنت و سلف کے علمی ورثہ کے ساتھ صحیح معنیٰ میں جوڑ سکیں؛ کہ فہم کا توازن دینا ایسے ہی علماء کے بس میں ہے، ورنہ آپ کے خطے کا اسلامی عمل ایک پنڈولم بنا افراط اور تفریط کے مابین ڈولتا رہتا اور ہر دو جانب سے شیطان کو اپنے اندر راستہ دیتا چلا جاتا ہے۔ یہ دونوں فتنے (جدت پسند و شدت پسند) اپنے اس بنیادی مضمون میں ایک ہیں کہ مذہبی نوجوان اس وقت امت کے مین اسٹریم علماء سے ایک بڑی سطح پر برگشتہ کروا دیے جائیں، ہاں پھر جیسے مرضی ان کو خراب کرو! ان دونوں کی مصنوعات، مسلم نوجوان کا علمائےامت سے ٹانکہ تڑوائے بغیر، نہیں بکنے کی۔ فالحذر الحذر۔

 (مقبوضہ کشمیر کے اسیر عالم ڈاکٹر محمد قاسم کی تالیف ’’غامدی نظریات کا ایک تحقیقی و تنقیدی جائزہ‘‘ کےلیے لکھے گئے تقدیمی کلمات سے چند پیرے)

Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
کشمیر کاز، قومی استحکام، پختہ اندازِ فکر کی ضرورت
Featured-
احوال-
حامد كمال الدين
      کشمیر کاز، قومی استحکام، پختہ اندازِ فکر کی ضرورت حامد ۔۔۔
امارات کا سعودی عرب کو یمن میں بیچ منجدھار چھوڑنے کا فیصلہ
احوال-
حامد كمال الدين
امارات کا سعودی عرب کو یمن میں بیچ منجدھار چھوڑنے کا فیصلہ حامد کمال الدین شاہ سلمان کے شروع دنوں میں ی۔۔۔
پاک افغان معاملہ.. تماش بینی نہیں سنجیدگی
احوال-
حامد كمال الدين
پاک افغان معاملہ.. تماش بینی نہیں سنجیدگی حامد کمال الدین وہ طعنے جو میرے کچھ مخلص بھائی او۔۔۔
کلچرل وارداتیں اور ہماری عدم فراغت!
احوال-
حامد كمال الدين
کلچرل وارداتیں اور ہماری عدم فراغت! حامد کمال الدین ظالمو! نہ صرف یہاں کا منبر و محراب ۔۔۔
ڈیل آف دی سینچری… مسئلۂ فلسطین کے ساتھ ٹرمپ کی زورآزمائی
احوال-
ادارہ
تحریر:   تحریم افروز یوں تو امریکا سے مسلمانوں  کے معاملے میں کبھی خیر کی توقع رہی ہی&۔۔۔
ڈیل آف سنچری ، فلسطین اور امریکہ
احوال-
ادارہ
تحریر: فلک شیر کچھ عرصے سے فلسطین کے مسئلے کے حل کے لیے امریکی صدر ٹرمپ کی "صدی کی ڈیل" کا شہرہ ہے۔دو سال ۔۔۔
طیب اردگان امیر المؤمنین نہیں ہیں، غلط توقعات وابستہ نہ رکھیں۔
احوال- امت اسلام
ذيشان وڑائچ
ہمارے کچھ نوجوان طیب اردگان کے بارے میں عجیب و غریب الجھن کے شکار ہیں۔ کوئی پوچھ رہا ہے کہ۔۔۔
’’سلفیوں‘‘ کے ساتھ تھوڑی زیادتی ہو رہی ہے!
احوال- امت اسلام
حامد كمال الدين
’’سلفیوں‘‘ کے ساتھ تھوڑی زیادتی ہو رہی ہے!    عرب داعی محترم ابو بصیر طرطوسی کے ساتھ بہت م۔۔۔
پاکستانی سیاست میں اسلامی سیکٹر کے آگے بڑھنے کے آپشنز
احوال-
اصول- منہج
راہنمائى-
حامد كمال الدين
پاکستانی سیاست میں اسلامی سیکٹر کے آگے بڑھنے کے آپشنز تحریر: حامد کمال الدین میری نظر میں، اس۔۔۔
ديگر آرٹیکلز
بازيافت- سلف و مشاہير
Featured-
شيخ الاسلام امام ابن تيمية
امارتِ حضرت معاویہؓ، مابین خلافت و ملوکیت نوٹ: تحریر کا عنوان ہمارا دیا ہوا ہے۔ از کلام ابن ت۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
سنت کے ساتھ بدعت کا ایک گونہ خلط... اور "فقہِ موازنات" حامد کمال الدین مغرب کے اٹھائے ہوئے ا۔۔۔
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
Featured-
حامد كمال الدين
"انسان دیوتا" کے حق میں پاپ! حامد کمال الدین دین میں طعن کر لو، جیسے مرضی دین کے ثوابت ۔۔۔
Featured-
بازيافت-
حامد كمال الدين
تاریخِ خلفاء سے متعلق نزاعات.. اور مدرسہ اہل الأثر حامد کمال الدین "تاریخِ خلفاء" کے تعلق س۔۔۔
Featured-
باطل- اديان
حامد كمال الدين
ریاستی حقوق؛ قادیانیوں کا مسئلہ فی الحال آئین کے ساتھ حامد کمال الدین اعتراض: اسلامی۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
لفظ  "شریعت" اور "فقہ" ہم استعمال interchangeable    ہو سکتے ہیں ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
ماتریدی-سلفی نزاع، یہاں کے مسلمانوں کو ایک نئی آزمائش میں ڈالنا حامد کمال الدین ایک اشع۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
منہجِ سلف کے احیاء کی تحریک میں ’مارٹن لوتھر‘ تلاش کرنا! حامد کمال الدین کیا کوئی وجہ ہے کہ۔۔۔
Featured-
احوال-
حامد كمال الدين
      کشمیر کاز، قومی استحکام، پختہ اندازِ فکر کی ضرورت حامد ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
مشكوة وحى- علوم حديث
حامد كمال الدين
اناڑی ہاتھ درایت! صحیح مسلم کی ایک حدیث پر اٹھائے گئے اشکال کے ضمن میں حامد کمال الدین ۔۔۔
راہنمائى-
حامد كمال الدين
(فقه) عشرۃ ذوالحج اور ایامِ تشریق میں کہی جانے والی تکبیرات ابن قدامہ مقدسی رحمہ اللہ کے متن سے۔۔۔
تنقیحات-
ثقافت- معاشرہ
حامد كمال الدين
کافروں سے مختلف نظر آنے کا مسئلہ، دار الکفر، ابن تیمیہ اور اپنے جدت پسند حامد کمال الدین دا۔۔۔
اصول- منہج
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
اصول- عقيدہ
حامد كمال الدين
ایک ٹھیٹ عقائدی تربیت ہماری سب سے بڑی ضرورت حامد کمال الدین اسے فی الحال آپ ایک ناقص استقر۔۔۔
ثقافت- خواتين
ثقافت-
حامد كمال الدين
"دردِ وفا".. ناول سے اقداری مسائل تک حامد کمال الدین کوئی پچیس تیس سال بعد ناول نام کی چیز ہاتھ لگی۔ وہ۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
امارات کا سعودی عرب کو یمن میں بیچ منجدھار چھوڑنے کا فیصلہ حامد کمال الدین شاہ سلمان کے شروع دنوں میں ی۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
پاک افغان معاملہ.. تماش بینی نہیں سنجیدگی حامد کمال الدین وہ طعنے جو میرے کچھ مخلص بھائی او۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
کلچرل وارداتیں اور ہماری عدم فراغت! حامد کمال الدین ظالمو! نہ صرف یہاں کا منبر و محراب ۔۔۔
احوال-
ادارہ
تحریر:   تحریم افروز یوں تو امریکا سے مسلمانوں  کے معاملے میں کبھی خیر کی توقع رہی ہی&۔۔۔
کیٹیگری
Featured
شيخ الاسلام امام ابن تيمية
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
سلف و مشاہير
شيخ الاسلام امام ابن تيمية
حامد كمال الدين
ادارہ
مزيد ۔۔۔
باطل
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
اديان
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
معاشرہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
خواتين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
جہاد
مزاحمت
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم حديث
حامد كمال الدين
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز