عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Sunday, December 5,2021 | 1443, جُمادى الأولى 0
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
AmericanAmpaire آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
اسلامی منظر نامے کی بحالی!
:عنوان

کچھ اتنے بڑے بڑے سوال ہیں کہ پچھلی دوتین صدیوں میں اتنے بڑے اور دلچسپ سوال دنیا کے اندر شاید کبھی کھڑے نہ ہوئے ہوں، حتیٰ کہ عالمی جنگوں کے خاتمے پر بھی نہیں!

. Featured :کیٹیگری
حامد كمال الدين :مصنف

گزشتہ


اسلامی منظر نامے کی بحالی!

 

 

2007ء شروع ہوتے ہی، پاکستان سمیت ہمارے کئی اسلامی خطوں کے اندر سنسنی خیز اور تشویشناک واقعات کا جو ایک نیا سلسلہ نکل کھڑا ہوا تھا، اور یہ سلگتی چنگاریاں جن کو کئی ایک جانب سے مسلسل ہوا دی جاتی رہی 2008ء کے وسط تک ایک بے قابو الاؤ کی صورت دھارگئیں، اور جوکہ اپنی افتاد میں اس قدر خطرناک ہیں کہ بعید نہیں یہ مغرب کو کھٹکنے والے ہمارے اس مسلم خطے کو ہی دولخت کر جائیں.... یہ تشویشناک سلسلۂ واقعات شاید ایک نئے چیلنج کی شروعات ہے اور تاریخِ عالم میں ایک نئے خوبصورت مرحلے کو روک دینے کیلئے عالمی سامراج کی جانب سے ہاتھ پیر مارنے کی ایک کوشش.. نیز اسلامی قیادتوں کے صبر وحوصلہ، زیرک پن اور دور رس سوچ رکھنے کا ایک کٹھن امتحان۔

2006ء کے اواخر کو پہنچتے پہنچتے عراق اور افغانستان کی صورت حال آخری حد تک واضح کرچکی تھی کہ امریکی تسلط یہاں پر اب کوئی دیر کی بات ہے اور یہ کہ امریکہ کی تاریخ میں آئندہ ہزیمت اور پسپائی کیلئے حوالہ اب ’ویتنام‘ اور ’ویتنامی گوریلے‘ نہیں بلکہ ’عراق و افغانستان‘ اور ’جہاد و مجاہدین‘ دیئے جایا کریں گے، گو یہ حوالہ امریکی تاریخ میں جس حقیقت کیلئے ذکر ہوگا وہ ’ہزیمت و پسپائی‘ سے بھی بڑی اور ڈراؤنی کوئی حقیقت ہے!

وہ کیا حقیقت ہے اور یہ جنگ جو اس وقت جاری ہے اس کی گرد بیٹھنے کے ساتھ دنیا کو کیا کچھ دیکھنے کو مل سکتا ہے؟ اس کیلئے اسلام اور مغرب کی اس کشمکش کے ماضی و مستقبل کی کئی جہتیں سامنے ہونا ضروری ہیں۔ یہ مضمون ان جہتوں کو نظر میں لے آنے کی ہی چھوٹی سی ایک کوشش ہے۔ ان دنوں میں، خصوصا آنے والے دنوں کے اعتبار سے، یہ موضوع بلا شبہہ ایک غیر معمولی اہمیت اختیار کر گیا ہے۔

یہ سوال، کہ مغرب کی ہم پر مسلط کی ہوئی اس حالیہ جنگ کے ’پسِ اختتام‘ دنیا کو دیکھنے کیلئے کیا سیناریو ملنے والا ہے؟ بلکہ یہ کہ مغرب کا مستقبل اب کیا ہے؟ اور عالم اسلام کو آئندہ عالمی منظر نامے میں کہاں رکھ کر دیکھا جائے؟ یہ کچھ سوال جو بڑی شدت کے ساتھ اٹھ کھڑے ہوئے ہیں اور جن کی بابت سوچنا تک مغرب اپنے لئے سوہانِ روح جانتا ہے، کچھ اتنے بڑے بڑے سوال ہیں کہ پچھلی دوتین صدیوں میں اتنے بڑے اور دلچسپ سوال دنیا کے اندر شاید کبھی کھڑے نہ ہوئے ہوں، حتیٰ کہ عالمی جنگوں کے خاتمے پر بھی نہیں!

اپنے گھروں سے ہزاروں میل دور، ’پردیس‘ کے تپتے صحراؤں اور دشوار پہاڑی سلسلوں میں یہ جنگ جاری رکھنا ان کے ناز ونعم میں پلے ہوئے جوانوں کیلئے بے حد مشکل ہو رہا ہے مگر اس جنگ کو ’ختم‘ سمجھنا ان کیلئے اس سے زیادہ بھیانک اور خوفناک! جس جنگ کے مابعد کا سیناریو ’موت‘ سے ملتی جلتی کوئی چیز ہو، اس کو آخر تک لڑنا بے حد ضروری ہوجاتا ہے!

مغرب بلا شبہہ اس جنگ میں ظالم اور سرکش ہے مگر یہ جنگ اس کیلئے ہرگز کوئی عیاشی نہیں بلکہ ’مجبوری‘ کا درجہ رکھتی ہے۔ ایک ایسی دنیا جس میں ظالم مظلوم کو بے بس نہ پائے اور اشیا کے لین دین میں ’حساب کتاب‘ رکھا جانے لگے اور معاملے عدل کے ساتھ طے ہوں اور کسی کے گھر میں آنے جانے اور تصرف کرنے کے باقاعدہ ”اصول“ پائے جانے لگیں.. ایک ایسی دنیا ظالم کو نری جہنم نظر آتی ہے اور وہ اس کے وجود میں آنے کو ٹال دینے کی اچھی خاصی قیمت دے دینے پر تیار ہوجاتا ہے! ایک آزاد دنیا کا تصور ستم گروں کیلئے ہرگز کسی موت سے کم نہیں!

مغرب جس چیز کواپنے لئے ’موت‘ جانتا ہے، ہمارے اس مضمون کے اندر وہ اِسی حوالے سے بیان ہوئی ہے۔ وگرنہ عالم اسلام کا اپنا پیغام کسی کی ’موت‘ نہیں۔ عالم اسلام کے پاس مغرب سمیت پوری انسانیت کو دینے کیلئے کچھ ہے تو وہ زندگی اور امن وسلامتی ہے، اس دنیا کا سکون وسلامتی بھی اور آخرت کے ابدی جہان کا سکون وسلامتی بھی.. گو آخرت کا سکون وسلامتی ”ایمان“ سے مشروط ہے جس کو کسی پر مسلط نہیں کیا جاسکتا، جبکہ دنیا کے امن و سلامتی کی ضمانت اسلام ہر کسی کو دیتا ہے، خواہ کافر اور خواہ مسلم، سوائے یہ کہ کوئی شخص اسلام کے ساتھ جنگ پر، یا دنیا کے کسی بھی فریق کے ساتھ ناحق جنگ پر، ہی آخری حد تک آمادہ ہو۔

چنانچہ مغرب، جس کے پاس لڑنے کیلئے سوائے ہتھیاروں کے آج کوئی ایک بھی کارآمد چیز ایسی نہیں جوکہ جنگوں کے فیصلے کرا دینے کیلئے قوموں کی حقیقی ضرورت ہوا کرتی ہے، اس وقت جان مار کر لڑنے پر پھر بھی پوری طرح آمادہ نظر آتا ہے تو وہ کچھ اسی لئے کہ ’پسِ جنگ سیناریو‘ اس کیلئے آخری حد تک ناقابل قبول ہے....یہ ایک ایسے منظر نامے کی بحالی ہے جو دنیا میں کم از کم بھی آج سے کوئی پانچ صدیاں پیشتر پایا جاتا تھا، یعنی: دنیا کے وسط میں بیٹھا عالم اسلام آپ اپنی قسمت کا مالک ہو اور آخری آسمانی شریعت اس کے طول عرض میں حاکم ہو، جس کے ثمرات وبرکات صرف عالم اسلام نہیں پوری دنیا کو چکھنے کو مل رہے ہوں، اور گلوبلائزیشن کے اس دور میں کرۂ ارض پر جہاں کہیں بھی ظلم واستحصال کی ماری ہوئی قومیں پائی جائیں وہ اپنی فریاد رسی کیلئے قرآن پڑھنے والوں کا سہارا پھر سے اپنی دنیا میں میسر پائیں، بلکہ تو قرآنی معاشرے ہی ان کیلئے جنت ارضی کا نقشہ پیش کرنے کو موجود ہوں!

دنیا کے توازن کا کئی صدیاں پہلے والے اس نقطے پر آجانا آخر کار تو ضرور انشاءاللہ ایک حقیقت بننے والی ہے، بلکہ نوشتۂ دیوار ہے، مگر اس نقطے کے آجانے تک کئی دور سر کئے جانا ابھی بلا شبہہ باقی ہے۔ جب ایسا ہے تو مغرب اس کو جہاں تک ممکن ہو موخر یا ہمیں ہی اس سے منحرف کردینے کی کوشش بہر حال کرسکتا ہے، جبکہ ہمیں بھی عالم اسلام کو اس قابل بنانے کیلئے ابھی بہت کچھ کرنا ہے، جس کے نہ کیا جانے کی صورت میں اس نقطہ کا ہماری زندگی میں آجانا کئی نسل تک موخر ہوسکتا ہے۔ لہٰذا اس جنگ کا آخری نتیجہ گو واضح ہے مگر بیچ کے مرحلے نہایت سنسنی خیز اور چیلنج کن ہوسکتے ہیں، بلکہ ہر دو فریق کے کام کو متاثر کردینے میں حد درجہ اہمیت کے حامل.. اور اس جنگ کے طول کھینچنے یا اپنے حتمی انجام کو پہنچنے کے معاملہ میں، بڑی حد تک فیصلہ کن۔

بلا شبہہ ایک ایسی دنیا جہاں اس امت کا تاریخی کردار پوری طرح بحال ہو اور اس کا یہ تاریخی منصب بحال ہو جانے کے باعث انسانی دنیا کو اپنا کھویا ہوا توازن پھر سے واپس ملے، اور نتیجتاً ہر شخص __ کافر کیا مسلم __ زندگی سے اپنا پورا پورا حق پائے ... بلا شبہہ ایک ایسی دنیا، اپنے ظہور میں آنے کیلئے، آج ہماری اسلامی تحریکوں کے وجود میں پرزور کروٹیں لے رہی ہے اور اسی وجہ سے آج ان تحریکوں کا ہر قیمت پر خاتمہ کردیا جانا، ظالموں کے ایجنڈے میں سر فہرست ہے۔ مگر امت کی اس بیداریِ نو (صحوۃ) کو روک دینا، لگتا ہے اب کسی کے بس کی بات نہیں رہی اور ایک بڑے تعطل کے بعد، عنقریب، یہ پھر سے جہانِ انسانی کے اندر اپنا کردار بحال کرنے والی ہے.. اور انسانیت پھر سے اس خوبصورت واقعہ کے ثمرات سے حظ اٹھانے والی ہے۔

عالم اسلام کو بلحاظِ صلاحیت اس مرحلہ کے قابل بنانا جن بنیادی خصائص کا ضرورت مند ہے اور جوکہ اصل چیلنج ہے، الگ سے ایک موضوع ہے۔ اس کے فکری و تہذیبی وسماجی پہلو اس کتابچہ میں ہمارا موضوع نہیں بنیں گے(1)۔ البتہ اس جنگ کے بعض سٹرٹیجک پہلو ہم اس کتابچہ کے اندر زیر بحث لائیں گے، جن پر غور و فکر سے عمل اور حکمتِ کار کی کئی ایک جہتیں ضرور واضح ہوسکیں۔سب سے اہم یہ کہ اس جنگ کا تعارف اور اس کا پس منظر واضح ہوجانا بذات خود اس جنگ کے طبعی انجام کی طرف ایک پیشرفت ہے۔

 


(1) اس حوالے سے محمد قطب کی کتاب ’دعوت کا منہج کیا ہو؟‘، ہماری کتب ’موحد معاشرہ نہ کہ تیسری دنیا‘ (زیر طباعت) اور ’مسلم ہستی کا احیاء‘ فائدہ مند ہوسکتی ہیں، علاوہ ازیں ایقاظ میں شائع ہونے والے ہمارے کچھ اداریئے: ’جہاد افغانستان کے تناظر میں‘، ’وہ ذہنی تبدیلی جس کی ضرورت ہے‘ ، ’عقیدہ سے فکر اور ثقافت تک‘ اور ’پندرھویں صدی کا ربع دوئم شروع ہوتا ہے‘، علاوہ ازیں، مضمون: انتخابات میں اسلام پسندوں کی جیت‘۔

 

اگلی فصل

Print Article
  روبزوال امیریکن ایمپائر
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
‘بندے’ کو غیر متعلقہ رکھنا آپکے "شاٹ" کو زوردار بناتا
Featured-
احوال-
حامد كمال الدين
’بندے‘ کو غیر متعلقہ رکھنا آپ کے "شاٹ" کو زوردار بناتا! حامد کمال الدین لبرلز کے ساتھ اپنے ا۔۔۔
مزاحمتوں کی تاریخ میں کونسی بات نئی ہے؟
احوال-
Featured-
حامد كمال الدين
مضمون کا پہلا حصہ پڑھنے کےلیے یہاں کلک کیجیےمزاحمتوں کی تاریخ میں کونسی بات نئی ہے؟ صلیبی قبضہ کار کے خلاف۔۔۔
خلافتِ راشدہ کے بعد کے اسلامی ادوار، متوازن سوچ کی ضرورت
Featured-
تنقیحات-
حامد كمال الدين
خلافتِ راشدہ کے بعد کے اسلامی ادوار، متوازن سوچ کی ضرورت حامد کمال الدین مثالی صرف خلافت۔۔۔
"اقوالِ سلف" کا ایک متناقض اطلاق: نظام ڈیموکریسی اور احکام خلافت کے!
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
https://twitter.com/Hamidkamaluddin کچھ چیزوں کے ساتھ ’’تعامل‘‘ کا ایک مناسب تر انداز انہیں نظر۔۔۔
پاکستانی سیاست میں اسلامی سیکٹر کے آگے بڑھنے کے آپشنز
Featured-
احوال-
اصول- منہج
راہنمائى-
حامد كمال الدين
پاکستانی سیاست میں اسلامی سیکٹر کے آگے بڑھنے کے آپشنز تحریر: حامد کمال الدین میری نظر میں، اس۔۔۔
"نبوی منہج" سے متعلق ایک مغالطہ کا ازالہ
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
"نبوی منہج" سے متعلق ایک مغالطہ کا ازالہ حامد کمال الدین ایک تحریکی عمل سے متعلق "نبوی منہج۔۔۔
واقعۂ یوسف علیہ السلام کے حوالے سے ابن تیمیہ کی تقریر
تنقیحات-
Featured-
اصول- منہج
حامد كمال الدين
قارئین کے سوالات واقعۂ  یوسف علیہ السلام کے حوالے سے ابن تیمیہ کی تقریر ہمارے کچھ نہایت عزیز ۔۔۔
فصل 6: "عوامِ امت" پر کڑی شرطیں اہلسنت کا منہج نہیں
Featured-
اصول- منہج
حامد كمال الدين
شرح ’’تعامل اہل قبلہ‘‘ 6 عام دُہائی[1] کے وقت عوامِ امت پر کڑی شرطیں.. اہلسنت کا ۔۔۔
نیا اسلامی دور..عالمی بساط سے ظالموں کا پسپا ہونااب ٹھہر گیا ہے
Featured-
حامد كمال الدين
گزشتہ فصل ان مع العسر یسرا نیا اسلامی دور..عالمی بساط سے ظالموں کا پسپا ہونااب ٹھہر گیا ہے!   امریکہ کے۔۔۔
ديگر آرٹیکلز
تنقیحات-
احوال-
حامد كمال الدين
کل جس طرح آپ نے فیصل آباد کے ایک مرحوم کا یوم وفات "منایا"! حامد کمال الدین قارئین کو شاید ا۔۔۔
Featured-
احوال-
حامد كمال الدين
’بندے‘ کو غیر متعلقہ رکھنا آپ کے "شاٹ" کو زوردار بناتا! حامد کمال الدین لبرلز کے ساتھ اپنے ا۔۔۔
بازيافت- سلف و مشاہير
حامد كمال الدين
"حُسینٌ منی & الحسن والحسین سیدا شباب أھل الجنة" صحیح احادیث ہیں؛ ان پر ہمارا ایمان ہے حامد۔۔۔
بازيافت- تاريخ
بازيافت- سيرت
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
ہجری، مصطفوی… گرچہ بت "ہوں" جماعت کی آستینوں میں! حامد کمال الدین ہجرتِ مصطفیﷺ کا 1443و۔۔۔
جہاد- مزاحمت
جہاد- قتال
حامد كمال الدين
صلیبی قبضہ کار کے خلاف چلی آتی ایک مزاحمتی تحریک کے ضمن میں حامد کمال الدین >>دنیا آپ۔۔۔
احوال-
Featured-
حامد كمال الدين
مضمون کا پہلا حصہ پڑھنے کےلیے یہاں کلک کیجیےمزاحمتوں کی تاریخ میں کونسی بات نئی ہے؟ صلیبی قبضہ کار کے خلاف۔۔۔
حامد كمال الدين
8 دینداروں کے معاشرے میں آگے بڑھنے کو، جمہوریت واحد راستہ نہیں تحریر: حامد کمال الدین ۔۔۔
حامد كمال الدين
7 "اقتدار" سے بھی بڑھ کر فی الحال ہمارے پریشان ہونے کی چیز تحریر: حامد کمال الدین مض۔۔۔
حامد كمال الدين
6 جمہوری راستہ… اور اسلامی انقلاب تحریر: حامد کمال الدین مضمون: خلافتِ نبوت سے۔۔۔
حامد كمال الدين
5 جمہوریت کو "کلمہ" پڑھانا کیا ضروری ہے؟ تحریر: حامد کمال الدین مضمون: خلافتِ ۔۔۔
حامد كمال الدين
4 جمہوریت… اور اسلام کی تفسیرِ نو تحریر: حامد کمال الدین مضمون: خلافتِ نبوت سے۔۔۔
حامد كمال الدين
3 جمہوری پیکیج، "کمتر برائی"… یا "آئیڈیل"؟ تحریر: حامد کمال الدین مضمون: خلافتِ نبوت سے عد۔۔۔
حامد كمال الدين
2 جمہوری راستہ اختیار کرنے پر، دینداروں کے یہاں دو انتہائیں تحریر: حامد کمال الدین ۔۔۔
حامد كمال الدين
1 کامل خلافتِ نبوت سے عدولی، ملوکیتی ادوار پر جمہوری فارمیٹ کا قیاس؟ تحریر: حامد ک۔۔۔
حامد كمال الدين
جاہلیت کے سب دستور آج میرے پیر کے نیچے! تحریر: حامد کمال الدین  خطبۂ حجة الوداع، جس کی باز۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
"نفس کی اطاعت" شرک کب بنتی ہے؟ حامد کمال الدین برصغیر کے فکری رجحانات صوفیت کے زیرِاثر رہے۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
ایک "عقیدہ بیسڈ" aqeedah-based بیانیہ جو "اعمال" میں نرمی اور تدریج پر کھڑا ہو حامد ک۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
"دلیل ازم" کا ایک ٹپیکل مغالطہ حامد کمال الدین سوال: کیا آپ اس عبارت سے متفق ہیں؟ [ر۔۔۔
کیٹیگری
Featured
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
منہج
حامد كمال الدين
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
سلف و مشاہير
حامد كمال الدين
تاريخ
حامد كمال الدين
سيرت
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
باطل
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
فرقے
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
معاشرہ
حامد كمال الدين
خواتين
حامد كمال الدين
خواتين
ادارہ
مزيد ۔۔۔
جہاد
قتال
حامد كمال الدين
مزاحمت
حامد كمال الدين
مزاحمت
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم حديث
حامد كمال الدين
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز