عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Friday, May 29,2020 | 1441, شَوّال 5
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
2014-10 TaamulAhleQibla آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
فصل1: ’’اہل قبلہ‘‘ کی اصطلاح
:عنوان

یہاں؛ ملت سےنسبت رکھنےوالےہر شخص کو – ابتداءً – ایک درجہ کی حرمت حاصل ہے خواہ اسکی بدعت یا اسکا پاپ کتنا ہی سنگین کیوں نہ ہو۔اسکی حرمت اگر کہیں ساقط ہوگی یا اس کےلیے نصرت اور احترام کا رشتہ اگر کہیں ساقط ہوگا..

:کیٹیگری
حامد كمال الدين :مصنف

Text Box: 75شرح ’’تعامل اہل قبلہ‘‘ 1

’’اہل قبلہ‘‘ کی اصطلاح

  (بسلسلہ حاشیہ 1، متن سفر الحوالی)

اللہ، قرآن، محمدﷺ پر ایمان کا دعویٰ رکھنے والے تمام طبقے، جماعتیں، گروہ، فرقے، افراد، جب تک کہ وہ اسلام سے خارج قرار نہ دے دیے گئے ہوں،[i]  علمائے عقیدہ کے ہاں ’’اہل قبلہ‘‘ کے نام سے ذکر ہوتے ہیں۔

یہاں؛ ملت سے نسبت رکھنے والے ہر شخص کو –  ابتداءً  –   ایک درجہ کی حرمت حاصل ہے خواہ اس کی بدعت یا اس کا پاپ کتنا ہی سنگین کیوں نہ ہو۔

’’ابتداءً‘‘ سے مراد یہ کہ..: ملت سے نسبت رکھنے والے ہر شخص کی جان، مال، آبرو کی حرمت اگر کہیں ساقط ہوگی یا اُس کےلیے نصرت اور احترام کا رشتہ اگر کہیں ختم ہوگا تو وہ ’’استثناء‘‘ کے طور پر ہوگا۔ اصل یہی ہے کہ اس کی حرمت اور احترام ہو۔ احکام میں ’’اصل‘‘ اور ’’استثناء‘‘ کا یہ تعین ہوجانا  بہت اہم ہے: ’’اصل‘‘ کو دلیل کی ضرورت نہیں رہے گی؛ وہ آپ سے آپ ثابت ہوگا۔  البتہ ’’استثناء‘‘ ہمیشہ ثبوت کا محتاج ہوگا؛ مجتہد کو اس پر معتبر دلیل کی ضرورت ہوگی اور عامی کو معتبر فتویٰ کی۔ اور جہاں یہ دلیل یا فتویٰ نہ ہو، یا محل نظر ہو، وہاں معاملہ خودبخود اپنے ’’اصل‘‘ پر ہو گا؛ اور وہ ہے ملت سے نسبت رکھنے والے ہر شخص کی جان، مال، عزت، آبرو کی حرمت اور مسلمانوں سے نصرت، محبت، احترام، سلام اور استغفار پانے کا حق۔ ’’احتیاط‘‘ اصل کو لاگو کرنے میں نہیں بلکہ استثناء کو لاگو کرنے میں ہوگی۔

اِس اصطلاح کی مناسبت: یہ مشہور حدیث:

عَنْ أَنَسِ بْنِ مَالِكٍ قَالَ: قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ: مَنْ صَلَّى صَلَاتَنَا وَاسْتَقْبَلَ قِبْلَتَنَا وَأَكَلَ ذَبِيحَتَنَا فَذَلِكَ الْمُسْلِمُ الَّذِي لَهُ ذِمَّةُ اللَّهِ وَذِمَّةُ رَسُولِهِ فَلَا تُخْفِرُوا اللَّهَ فِي ذِمَّتِهِ           (صحیح البخاری: کتاب الصلوٰۃ، باب فضل استقبال القبلۃ۔ رقم 384)

انس بن مالک سے روایت ہے، کہا: فرمایا رسول اللہﷺ نے:

جو شخص ہماری نماز ایسی نماز پڑھے، ہمارے قبلے کو اپنا قبلہ بنائے، اور ہمارے ہی (ہاں کا) ذبیحہ کھائے تو وہ مسلمان ہے جس کو اللہ کا ذمہ اور اللہ کے رسول کا ذمہ حاصل ہے۔ پس اللہ کے ذمے کی حدشکنی مت کرو۔

علمائے عقیدہ کے روایتی مباحث میں اِس اصطلاح  کا سیاق: جہاں مسلمان کے بطور مسلمان حقوق زیربحث آئیں، جن میں جان، مال اور آبرو کی حرمت تو خیر سرفہرست ہے، اس کے علاوہ بھی کئی امور خصوصی بیان ہونے میں آتے ہیں، مثلاً ایک مسلمان کےلیے استغفار، جنازے میں شرکت، سلام کا جواب، حسن ظن، مسلمانوں کے قبرستان میں اس کا دفن، وغیرہ۔ اس کے ساتھ بغض، تمسخر، غیبت، لعن طعن وغیرہ سے اجتناب۔ معاشرے میں اس سے مانوس رہنا اور اس کو مانوس رکھنا،  اور بہت سے حقوق، جن کا ساقط ہونا کچھ معیّن حدود اور قیود کا پابند ہے۔

’’تکفیر‘‘ سے مانع ہونے میں لفظ ’’اہل قبلہ‘‘ ایک قوی دلالت رکھتا ہے۔

اکٹھے جمعہ، جماعت و عیدین کی ادائیگی، دکھ سکھ کا ساجھ، نیز جہاد و اقامتِ دین ایسے فرائض میں امت کے ساتھ چلنے اور امت کو ساتھ چلانےسے متعلقہ مباحث میں بھی ’’اہل قبلہ‘‘ کی اصطلاح بکثرت مستعمل ہے۔ اسی میں یہ مضمر ہے کہ مسلم معاشرے میں اگر کوئی اہل بدعت یا اہل فسق پائے جائیں تو ان سے براءت اور مقاطعہ بس ایک حد تک ہی ہے۔ بطور مسلمان، آدمی کے جو بنیادی حقوق basic rights  ہیں وہ کچھ استثنائی صورتوں کو چھوڑ تے ہوئے، بہرحال برقرار رہتے ہیں۔ پس ’’اہل قبلہ‘‘ کے ساتھ تعلقات میں آدمی کی اپنی طبیعت، موڈ اور ’جماعتی پالیسی‘ ایک حد تک ہی چلتی ہے؛ شریعت کی رِٹ بالاتر ہے؛اور گروہی نسبتیں اس کے مقابلے پر سلباً اور ایحاباً ہیچ۔

یہ انتباہ بھی ضروری ہے کہ مسلم معاشرہ خالصتاً ایک آسمانی معاشرہ ہے؛ لہٰذا ایک دوسرے کے ’’حقوق‘‘ یہاں خالصتاً ایک آسمانی حوالہ۔ ’شہری حقوق‘ یا ’سِوِل رائٹس‘ ہماری تاریخ میں کچھ اجنبی الفاظ ہیں؛ جوکہ آسمانی شریعت کو دیس نکالا دے کر تشکیل پانے والے ایک خاص (لادین) تصورِ معاشرت کے نمائندہ ہیں۔ (اس پر ہم ابن تیمیہ کی ’’خلافت و ملوکیت‘‘ کی شرح میں کچھ روشنی ڈال چکے ہیں)  ’’حقوق‘‘ کے مبحث کو ’’اہل قبلہ‘‘ کے تحت پڑھنا بلاشبہ ایک منفرد دستوری حوالہ ہے۔



[i]   مراد ہے: کسی باقاعدہ قضاء کے ذریعے سے کسی گروہ کو اسلام سے خارج قرار دے دیا جانا۔ یا پھر اسلامی قضاء کی غیرموجودگی میں علمائے امت کے کسی فتوائے عام کی رو سے، جو کہ ایک سماجی اثر  social impact رکھتا ہو۔ مثال کے طور پر قادیانیوں کی تکفیر، وغیرہ۔

حق یہ ہے کہ جب تک قادیانیوں کو کافر کا درجہ دےرکھنے سے متعلق بعض مسلم ملکوں میں ریاستی سطح پر قانون سازی نہیں ہوئی تھی تو بھی اِن مسلم معاشروں میں قادیانی گروہ کے ساتھ کفار والا برتاؤ ہی ہو رہا تھا۔ بلکہ کئی مسلم ممالک میں قادیانیوں کی تکفیر سے متعلق آج تک کوئی قانون سازی نہیں ہے، مگر اس سے معاشرے میں ان کے کافروں والے سٹیٹس میں کوئی فرق نہیں آیا۔ زیادہ سے زیادہ، یہ ہوتاہے کہ کسی خطے میں لوگ قادیانیوں کی حقیقت سے لا علم ہوں، مگر جیسے ہی ان کو مستند ذرائع سے بتایا جاتا ہے کہ علمائے اسلام اِس ٹولے کی تکفیر کرتے ہیں وہ قادیانیوں کو کافر کے طور پر ڈیل کرنا شروع کردیتے ہیں۔ یہ ہے اللہ کے فضل سے ’’علماء کی رِٹ‘‘۔

البتہ یہ چیز کہ ’ہمارے اعتماد کے چند مفتیوں نے اتنی ساری خلقت کو دائرہ اسلام سے خارج کر رکھا ہے‘ تو جن علمی حلقوں میں ’’اہلِ قبلہ‘‘ ایسی یہ اصطلاحات رائج ہیں، وہاں یہ ایک مضحکہ خیز بات جانی جائے گی۔ ہر کوئی ’’احمد بن حنبل‘‘ نہیں ہوتا! کہ وہ اکیلا کسی کو کافر کہہ دے تو یہ فتویٰ اہل سنت کے ہاں کرنسی نوٹ کی طرح چلے! (محلے کا مفتی احمد بن حنبل کی مثالیں دے تو یہ ایسا ہی ہے کہ کوئی شخص یہ کہے کہ عمر بن خطابؓ کے بیعت کرلینے سے ابوبکرؓ خلیفہ ہوگئے تھے؛ لہٰذا میرے کسی کو بیعت دے دینے سے وہ خلیفہ کیوں نہیں ہوسکتا! بات یہ ہے کہ عمر بن خطابؓ اور احمد بن حنبلؒ کچھ ایسی ہستیوں کا نام ہے جن میں پوری امت بولتی ہے؛ یہ رتبۂ بلند ملا جس کو مل گیا)۔ فتویٰ کی سماجی جہت، خاص طور پر لوگوں کو دائرۂ اسلام سے خارج قرار دے دینے ایسے خطیر مسائل میں، نہایت اہم ہے۔ ایسے فتووں سے لوگوں کو کنفیوز کرنا، خاص طور پر جب علم کا قحط ہو اور فتنوں کی پہلے سے بھرمار ہو، فتنوں میں ایک ناقابل اندازہ اضافہ کرنے کے مترادف ہوگا۔

واضح رہے، فتوائے عام قادیانیوں کو کافر اور اہل قبلہ سے خارج ٹھہرانے سے متعلق ہے نہ کہ ان کا خون مباح کرنے سے متعلق۔

’’قادیانیوں‘‘ کی مثال متفق علیہ تکفیر کے حوالے سے تھی۔ یقیناً  تکفیر کی ایک دوسری قسم بھی ہے؛ جس کو آپ ’’مختلف فیہ‘‘ کہتے ہیں۔ جیسے روافض کی تکفیر۔  مگر اس میں بھی امت کے کبار علماء کی ایک ناقابلِ اندازہ تعداد  جو عالم اسلام کے کچھ وسیع و عریض خطوں میں باقاعدہ پیشوا جانی جاتی ہو، کسی گروہ کو کافر ٹھہراتی ہے۔ اب اِسی مثال کو لے لیں: روافض کی تکفیر پر خلافتِ عثمانیہ کے اکثر یا (شاید سب) مشائخ الاسلام (بلکہ ابن عابدین﷫ نے تو اس کو مفتی دولتِ عثمانیہ ابو السعود آفندی﷫ کے حوالہ سے اجماعی مسئلہ کے طور پر بیان کیا ہے)، جزیرۂ عرب کے علماء تقریباً سارے، برصغیر کا مکتب ولی اللّٰہی صاحبِ تحفہ اثناعشریہ اور اس کی متابعت میں مشائخ دیوبند (اگر سارے نہیں تو ان کی بڑی تعداد) پائی جاتی ہے۔ اور اہلحدیث کی ایک تعداد۔ پس اس کو ہم نے مختلف فیہ مانا تو کسی اکادُکا مفتی کی وجہ سے نہیں۔ ’’تکفیر‘‘ کا مسئلہ دین میں ہے تو سہی مگر اتنا سادہ نہیں کہ کھیل بن جائے اور ہر شخص اپنااپنا فتویٰ چھاپتا پھرے۔

Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
ديگر آرٹیکلز
جہاد- دعوت
عرفان شكور
كامياب داعيوں كا منہج از :ڈاكٹرمحمد بن ابراہيم الحمد جامعہ قصيم (سعودى عرب) ضرورى نہيں۔۔۔۔ ·   ضرور۔۔۔
باطل- فرقے
Featured-
حامد كمال الدين
"المورد".. ایک متوازی دین حامد کمال الدین اصحاب المورد کے ہاں "کتاب" سے اگر عین وہ مراد نہیں۔۔۔
جہاد-
احوال-
Featured-
حامد كمال الدين
’دوحہ‘ اہل اسلام کی ’جنیوا‘ سے بڑی جیت، ان شاء اللہ حامد کمال الدین ہمیں ’’زیادہ خوش نہ ہونے۔۔۔
Featured-
حامد كمال الدين
اسلامی تحریک کا ’’مابعد تنظیمات‘‘ عہد؟ Post-organizations Era of the Islamic Movement یہ عن۔۔۔
حامد كمال الدين
باطل فرقوں کےلیے گنجائش پیدا کرواتے، دانش کے کچھ مغالطے   کچھ علمی چیزیں مانند (’’لازم المذھب لیس بمذھب‘۔۔۔
باطل- فرقے
حامد كمال الدين
شیعہ سٹوڈنٹ کے ساتھ دوستی، شادی بیاہ   سوال: السلام علیکم سر۔ یونیورسٹی میں ا۔۔۔
بازيافت- سلف و مشاہير
شيخ الاسلام امام ابن تيمية
امارتِ حضرت معاویہؓ، مابین خلافت و ملوکیت نوٹ: تحریر کا عنوان ہمارا دیا ہوا ہے۔ از کلام ابن ت۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
سنت کے ساتھ بدعت کا ایک گونہ خلط... اور "فقہِ موازنات" حامد کمال الدین مغرب کے اٹھائے ہوئے ا۔۔۔
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
"انسان دیوتا" کے حق میں پاپ! حامد کمال الدین دین میں طعن کر لو، جیسے مرضی دین کے ثوابت ۔۔۔
بازيافت-
حامد كمال الدين
تاریخِ خلفاء سے متعلق نزاعات.. اور مدرسہ اہل الأثر حامد کمال الدین "تاریخِ خلفاء" کے تعلق س۔۔۔
باطل- اديان
حامد كمال الدين
ریاستی حقوق؛ قادیانیوں کا مسئلہ فی الحال آئین کے ساتھ حامد کمال الدین اعتراض: اسلامی۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
لفظ  "شریعت" اور "فقہ" ہم استعمال interchangeable    ہو سکتے ہیں ۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
ماتریدی-سلفی نزاع، یہاں کے مسلمانوں کو ایک نئی آزمائش میں ڈالنا حامد کمال الدین ایک اشع۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
منہجِ سلف کے احیاء کی تحریک میں ’مارٹن لوتھر‘ تلاش کرنا! حامد کمال الدین کیا کوئی وجہ ہے کہ۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
      کشمیر کاز، قومی استحکام، پختہ اندازِ فکر کی ضرورت حامد ۔۔۔
تنقیحات-
مشكوة وحى- علوم حديث
حامد كمال الدين
اناڑی ہاتھ درایت! صحیح مسلم کی ایک حدیث پر اٹھائے گئے اشکال کے ضمن میں حامد کمال الدین ۔۔۔
راہنمائى-
حامد كمال الدين
(فقه) عشرۃ ذوالحج اور ایامِ تشریق میں کہی جانے والی تکبیرات ابن قدامہ مقدسی رحمہ اللہ کے متن سے۔۔۔
تنقیحات-
ثقافت- معاشرہ
حامد كمال الدين
کافروں سے مختلف نظر آنے کا مسئلہ، دار الکفر، ابن تیمیہ اور اپنے جدت پسند حامد کمال الدین دا۔۔۔
کیٹیگری
Featured
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
سلف و مشاہير
شيخ الاسلام امام ابن تيمية
حامد كمال الدين
ادارہ
مزيد ۔۔۔
باطل
فرقے
حامد كمال الدين
فرقے
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
معاشرہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
خواتين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
جہاد
دعوت
عرفان شكور
حامد كمال الدين
مزاحمت
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم حديث
حامد كمال الدين
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز