عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Thursday, June 27,2019 | 1440, شَوّال 23
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
weekly آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
اپنے حصے کی شمع کیسے جلائی جائے؟
:عنوان

موجودہ دور کا میڈیا اصل میں بڑی کمپنیوں کی فنڈنگ سے چلتا ہے اور اب وہ خود ایک منافع بخش کاروبار ہے۔ اس اعتبار سے یہ سرمایہ داری کا ہی پھیلاؤ اور اس کا محافظ ہے۔

:کیٹیگری
ذيشان وڑائچ :مصنف

اپنے حصے کی شمع کیسے جلائی جائے؟

میں نے  اپنی ٹائم لائن پر استاد حامد کمال الدین کی تحریر"پسماندہ مسلم معاشرے.. پڑھے لکھے بھیڑیوں کے نرغے میں" کا ایک اقتباس پیش کیا تھاجس میں قوم کے گھاگ اور ہوشیار اینکروں، سیاستدانوں، دانشوروں اوربہروپ بھر کے آئے ہوئے ’ترقی‘ کی راہ دکھانے والے ٹولے کے رویے پر تنقید کی گئی تھی کہ کس طرح یہ ایک بے حیلہ و پسماندہ قوم پرنظریاتی چڑھائی کر رہے ہیں۔  ایک صاحب علم اور درد مند دوست نے اس پر اپنا تبصرہ پیش کیا کہ "کیوں نہ اپنے حصے کی شمع جلائی جائے؟"۔ان کاکہنا ہے کہ اس طرح کی مخالفت کرنے کے بجائے ہمیں مثبت کام  کر کے ان کی اصلاح کا بیڑا اٹھانا چاہئے۔

بات اچھی اور قابل فہم تھی لیکن میرے نزدیک یہ ایک طرح سے بے محل اور غیر متعلقہ بات تھی۔چونکہ ہمارے دین کا دردرکھنے والے بعض افراد  ایسے بھى ہيں جن کے نزدیک کسی کی برائی بیان نہیں کی جانى چاہے بلکہ مثبت انداز میں بس اپنے حصے کی  شمع جلاتے جانا چاہئے اس لئے خیال ہوا کہ اس ذہنیت پرایک مختصر تحریر لکھی جایے۔

ویسے تو دین کے کرنے کا بہت سارا کام ہیں، جن کے اندر جذبہ اور صلاحیت ہے وہ کرتے بھی ہیں۔ اس وقت میڈیا جیسے اژدھے کا مقابلہ کرنا کسی فرد کیا، جماعت کیا بلکہ کسی ملک کے لئے بھی انتہائی مشکل ہے۔ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ بھی اپنے آپ کو اس بارے میں بے بس پارہے ہیں قطع نظر اس سے کہ موصوف خود اپنے مؤقف میں کتنے حق بجانب ہیں۔ موجودہ دور کا میڈیا اصل میں بڑی کمپنیوں کی فنڈنگ سے چلتا ہے اور اب وہ خود ایک منافع بخش کاروبار ہے۔ اس اعتبار سے یہ سرمایہ داری کا ہی پھیلاؤ اور اس کا محافظ ہے۔ سرمایہ داری کچھ مفروضات اور مابعد الطبیعات اپنے ساتھ لے کر آتی ہے۔ اس لئے جہاں پر سرمایہ داری اور فری مارکيٹ ہوگی وہاں پر یہ میڈیا دندناتا پھرے گا۔یہ میڈیا اور دانشوروں کاٹولہ لازمی طور پر ایسے ہی نظریا ت اور آئیڈیاز کی ترویج کرے گا جو کہ سرمایہ داری کے ساتھ ہم آہنگ ہو۔

اب سوال یہ ہے کہ اس میڈیائی دانشوری  کی شرارتوں کا مقابلہ کیسے کیا جائے۔

ایک ترکیب یہ ہے کہ ایک متبادل ابلاغی نظام  پیش کیا جائے۔ اس پر کوشش کرنے والوں نے کوششیں کی ہیں، لیکن یہ مقابلہ ہاتھی اور چیونٹی کے مقابلے کی طرح ہے۔ الیکٹرانک ابلاغیات کے لئے بہت زیادہ سرمائے کی ضرورت ہوتی ہے، متبادل دینی میڈیا جو بھی ہوگا وہ اتنا سرمایہ اکھٹا نہیں کر پائے گا جو کہ وہ میڈیا کر پائے گا جو کہ سرمایہ دارانہ نظام کا محافظ ہے۔ اور اگر کر بھی لے تو اتنا منافع نہیں جمع کر پائے گا کہ وہ جاری رہ سکے۔

چونکہ میڈیا بنیادی طور پر پروپیگنڈے کا آلہ ہے اس لئے اس کا مقابلہ کرنے کا ایک اور طریقہ یہ ہے کہ سوشل میڈیا کو استعمال کر کے میڈیا کا مقابلہ کیا جائے۔ اس طرح ممکن ہے کہ سوشل میڈیا کے ٹرینڈ کے دباؤ میں آکر روایتی میڈیا محتاط رہے۔ اسی طرح سوشل میڈیا کو استعمال کر کے روایتی میڈیا کی شرارتوں اور خباثتوں کو خوب خوب آشکار کیا جائے۔ یہ گویا کہ ایک بیداری کی مہم اور عوام میں میڈیائی دانشوری کے بارے میں شعور پیدا کرنے کی ایک  کوشش ہوگی۔

ان کاموں سے بہت زیادہ فائدہ تو نہیں ہوگا، لیکن باشعور طبقے کے اندر میڈیا کی حقیقت پر آگاہی پیدا ہوگی اور ان کی شرارتوں اور خباثتوں سے بیزاری کا ماحول پیدا ہوگا۔ اس کے دور رس مثبت نتائج نکلیں گےاور اگلی نسلوں تک یہ اثرات مضبوط ہوجائیں گے۔

اپنے حصے کی شمع جلانے کا یہ مطلب نہیں ہے کہ یہ جو گندی ہواؤں کے جھکڑ، اور آندھیاں آرہی ہیں ان سے اپنے اور دوسروں کو بچانے کے بجائے شمع پر شمع جلائی جائے اور وہ بجھتی رہے۔ شاعری کرنا الگ چیز ہے لیکن ہمارے پاس اتنے وسائل نہیں ہیں کہ ہم نشیمن پر نشیمن پر تعمیرکرتے جائیں اور بجلی کا گرتے گرتے خود بیزار ہونے کا انتظار کرتے بیٹھیں۔  ہمارا کام مثبت بھی ہے اور منفی بھی۔ اگر کوئی برائی ہورہی ہے تو اس کو ہاتھ سے روکنا ہے اور نہ روک سکیں تو اس پر نکیر کرکے اپنے آس پاس کے انسانوں کو اس خبردار کرنا بھی ضروری ہے۔

موجودہ دور میں دین کے کام کے حوالے سے کچھ ذہن ایسے بنے ہوئے ہیں کہ بس ہم اپنے حصے کا تعمیری کام کرتے رہیں اور کسی کی برائی نہ کریں۔ دین کے حوالے سے انبیاء کا کام ایسا نہیں تھا۔شر اور زیادتی ہمیشہ اچھائی اور انصاف کی شکل میں اپنے آپ کو پیش کرتی ہے۔ انہیں اس التباس سے نکال کر برہنہ کرنا بھی بہت ضروری ہے، یہ بھی اپنے حصے کی شمع جلانا ہی ہے۔ کسی کی نفی کئے بغیر "اچھا کام" کرنا نہ علمی اعتبار سے ممکن ہے اور نہ عملی۔ پتہ نہیں کیوں "کسی کی برائی" بیان کرنے پر کچھ "اچھوں" کا ذہن احتجاج کرنے لگتا ہے۔ کلام پاک میں منافقین اوراہل کتاب کی خباثتوں اور بدنیتی کوخوب خوب واضح کیا گیا ہے۔ منافقین کانام تو نہیں لیا گیا ہے لیکن منافقین کے رویے کو ایسے بیان کیا گیا ہے کہ خوب واضح تھا کہ کون منافق تھا اور کون نہیں۔ شمع جلانا ہے تو پھر خوب جلائی جائے، ایسی روشنی پھیلائی جائے کہ ملت پرپل پڑے یہ دانشور اپنے آپ کو چھپا نہ پائیں۔ پوری ملت کے سامنے ایسے برہنہ ہوکر سامنے آئیں کہ ان کاایک ایک عیب سب پر عیاں ہوجائے۔ وہ کونسی شمع ہے جس کی روشنی میں بھی یہ شریر اپنی عزت باقی رکھ سکیں؟

رہی دعوت و اصلاح کی بات ، اگرچہ یہ ایک مثبت اور اچھی سوچ ہے، لیکن سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ ہم کیاکبھی یہ طے کرپائیں گے کہ ان کی اصلاح کی کوشش ہوچکی ہے؟ اور کیاجب تک ان کی اصلاح کا کام کر کے ان پر اتمام حجت نہ ہوجائے انہیں اپنی خباثت اور شرارتوں کا نشانہ بننے کے لئے اس بھولی بھالی امت کو تھالی میں رکھ کر پیش کیا جائے؟ ہم کسی کی اصلاح کے بارے میں ناامید تو نہیں ہیں، لیکن یہ خبیث طبقے دین کو ہم سے زیادہ جان کر ہوائے نفس کو اپنا معبودبنائے ہوئے ہیں۔ یہ چھٹے ہوئے طبقے ہوتے ہیں اوران کوتنبیہ کرنے کاایک طریقہ  ہی یہ ہے کہ ان کو ان کے التباس سے نکال کربرہنہ کر کے عوام کے سامنے لایا جائے۔ کیا پتہ عوام کے سامنے اس طرح حقیقت کو آشکار ہوتے دیکھ کر ہی کسی کو تنبیہ ہوجائے۔ کبھی کبھی ذہنی جھٹکے لوگوں کی توبہ کا باعث بنتے ہیں۔

Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
ديگر آرٹیکلز
Featured-
احوال-
ادارہ
کچھ عرصے سے فلسطین کے مسئلے کے حل کے لیے امریکی صدر ٹرمپ کی "صدی کی ڈیل" کا شہرہ ہے۔دو سال بل جب ٹرمپ نے اق۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین بعض مباحث بروقت بیان نہ ہوں تو پڑھنے پڑھانے والوں کے حق میں ایک زیادتی رہ جاتی ہے۔ جذبہ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
https://twitter.com/Hamidkamaluddin کچھ چیزوں کے ساتھ ’’تعامل‘‘ کا ایک مناسب تر انداز انہیں نظر۔۔۔
Featured-
باطل- جدال
حامد كمال الدين
کچھ ’مسلم‘ معترضینِ اسلام! تحریر: حامد کمال الدین پچھلے دنوں ایک ٹویٹ میرے یہاں سے  ہو۔۔۔
اصول- منہج
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
پراپیگنڈہ وار propaganda war میں سیگ منٹیشن segmentation (جزء کاری) ناگزیر ہوتی ہے۔ یعنی معاملے کو ای۔۔۔
بازيافت-
ادارہ
ہجرت کے پندرہ سو سال بعد! حافظ یوسف سراج کون مانے؟ کسے یقیں آئے؟ وہ چار قدم تاریخِ ان۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
میرے اسلام پسندو! پوزیشنیں بانٹ کر کھیلو؛ اور چال لمبی تحریر: حامد کمال الدین یہ درست ہے کہ۔۔۔
احوال- امت اسلام
ذيشان وڑائچ
ہمارے کچھ نوجوان طیب اردگان کے بارے میں عجیب و غریب الجھن کے شکار ہیں۔ کوئی پوچھ رہا ہے کہ۔۔۔
احوال- امت اسلام
حامد كمال الدين
’’سلفیوں‘‘ کے ساتھ تھوڑی زیادتی ہو رہی ہے!    عرب داعی محترم ابو بصیر طرطوسی کے ساتھ بہت م۔۔۔
اصول- عقيدہ
اداریہ-
حامد كمال الدين
شرکِ ’’ہیومن ازم‘‘ کی یلغار..  اور امت کا طائفہ منصورہ حالات کو سرسری انداز میں پڑھنا... واقعات م۔۔۔
احوال-
اصول- منہج
راہنمائى-
حامد كمال الدين
پاکستانی سیاست میں اسلامی سیکٹر کے آگے بڑھنے کے آپشنز تحریر: حامد کمال الدین میری نظر میں، اس۔۔۔
Featured-
ثقافت- خواتين
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
ادارہ
فیمینسٹ جاہلیت کو جھٹلاتی ایک نسوانی تحریر اجالا عثمان انٹرنیٹ سے لی گئی ایک تحریر جو ہمیں ا۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
"نبوی منہج" سے متعلق ایک مغالطہ کا ازالہ حامد کمال الدین ایک تحریکی عمل سے متعلق "نبوی منہج۔۔۔
متفرق-
ادارہ
پطرس کے ’’کتے‘‘ کے بعد! تحریر: ابو بکر قدوسی مصنف کی اجازت کے بغیر شائع کی جانے والی ای۔۔۔
باطل- فرقے
اعتزال
ادارہ
ایک فیس بکی بھائی نے غامدی صاحب کی جہاد کے موضوع پر ویڈیو کا ایک لنک دے کر درخواست کی تھی کہ میں اس ویڈیو کو ۔۔۔
باطل- فرقے
احوال- وقائع
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین ایک بڑی خلقت واضح واضح اشیاء میں بھی فرق کرنے کی روادار نہیں۔ مگر تعجب ہ۔۔۔
باطل- كشمكش
حامد كمال الدين
تحریر: حامد کمال الدین کہتا ہے میں اوپن ایئر میں کیمروں کے آگے جنازے کی اگلی صف کے اندر ۔۔۔
احوال-
باطل- شخصيات و انجمنيں
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین ’’تنگ نظری‘‘ کی ایک تعریف یہ ہو سکتی ہے کہ: ایک چیز جس کی دین میں گنجائش۔۔۔
کیٹیگری
Featured
ادارہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
ادارہ
امت اسلام
ذيشان وڑائچ
امت اسلام
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
منہج
حامد كمال الدين
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
ادارہ
تاريخ
ادارہ
سلف و مشاہير
مہتاب عزيز
مزيد ۔۔۔
باطل
جدال
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
ادارہ
فرقےاعتزال
ادارہ
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
خواتين
ادارہ
رواج و رجحانات
ذيشان وڑائچ
معاشرہ
عرفان شكور
مزيد ۔۔۔
جہاد
مزاحمت
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ابن علی
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
ادارہ
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز