عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Tuesday, November 20,2018 | 1440, رَبيع الأوّل 11
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
میڈیا کے جغادریو اِس طیش کی نوبت کیوں آئی؟
:عنوان

. جہادبيدارى :کیٹیگری
ابن علی :مصنف

 میڈیا کے جغادریو اِس طیش کی نوبت کیوں آئی؟

ابن علی


ناموس رسالت کے جلوسوں میں اگر کچھ تخریب ہوئی اور مسلمانوں کے اپنے ہی جان ومال کا نقصان ہوا، تو اس کی تائید کوئی بھی نہیں کرتا۔ یہاں صرف میڈیا کا اصل تعصب دکھانا مقصود ہے جو اس موقع پر ہونے والے جان و مال کے نقصان کو بنیاد بنا کر اِس پورے ایشو کو منفی انداز میں پینٹ کررہا ہے۔ حالانکہ یہ جن ایشوز کو اٹھانے پر زور لگا رہا ہوتا ہے (جیسے افتخار چودھری کی بحالی کے وقت تھا یا بی نظیر کے قتل پہ تڑپ اٹھنے کا مسئلہ تھا، حالانکہ ڈھیروں نقصانات اُس وقت بھی ہوئے تھے) وہاں یہ نقصانات کو اتنا بڑھا چڑھا کر بیان نہیں کرتا جتنا کہ اُس ’’ایشو‘‘ کو اٹھانے اور ہائی لائٹ کرنے پر جوکہ معاملے کی اصل جان ہوتی ہے۔ مگر یہاں یہ ناموس رسالت کے ایشو کو نہیں اٹھا رہا البتہ اس سے سامنے آنے والے نقصانات کو ہائی لائٹ کرتا جارہا ہے۔ سمجھنے والے خوب سمجھتے ہیں کہ اس کے پیچھے کیا خباثت کارفرما ہے۔۔۔ ادارہ ایقاظ

میڈیا کے ظالمو!
تمہاری چیخیں آج ہی کیوں نکلیں؟
نبیﷺ کی آبرو پر حرف اٹھانے والی اس ملعون فلم کے منظرعام پر آئے کتنے دن ہوچکے؟
کتنی دیر سے دنیا بھر کی سکرینوں اور اخباری صفحات پر خیرالبشر ﷺ کا ٹھٹھہ اور مذاق ہورہا ہے؟
اس پر تمہاری چیخیں کیوں نہ نکلیں؟
یہ پریشانی جو آج تمہارے تن بدن میں نظر آرہی ہے، اتنے دن کہاں روپوش رہی؟
اتنی کوریج ’ناموسِ رسالت‘ کے مسئلے کو آج یکدم کیوں مل گئی؟
ناموسِ رسالت کے مسئلہ پرایسی توجہ؟
خدایا یہ ہمارا ہی میڈیا ہے؟
پرتشدد مظاہروں‘ کی مذمت کرنے سے پہلے ہر بار ایک آدھ جملہ ’ناموسِ رسالت‘ کے حق میں بھی!!!
خدایا۔۔۔ میڈیا اور مسئلۂ ناموسِ رسالت کا اعتراف!
خواہ یہ اعتراف ایک اچٹتے جملے میں ہی کیوں نہ ہو!
کس کے دم سے یہ سب کرشمے ہونے لگے!
تحریکِ ناموسِ رسالت کے شہیدوں کو سلام!
اِن شہداء کا گرنا یقیناً ایک بہت بڑا نقصان ہے
خدا اِن شہیدوں کو اپنے اور ان شہیدوں کے محبوب ﷺ کے ساتھ جنت الفردوس میں اکٹھا کرے، جس کی ناموس کےلیے انہوں نے اپنی جانوں کے نذرانے پیش کیے
انفرمیشن‘ پر کنڈلی مار کر بیٹھنے والے اس میڈیا نے رسولؐ کے حق میں آواز اٹھانا واقعتاً اتنا ہی مشکل کررکھا تھا
قادیانیت کی میڈیا انوسٹمنٹ نے نبیﷺ کی ناموس کے مسئلہ کو فضاؤں پر چھاجانے کو اسی قدر دشوار بنا دیا ہوا تھا
انہی ظالموں نے توہینِ رسالت کے موضوع پر کمال فنکاری کے ساتھ یہ بلیک آؤٹ کررکھا تھا۔
آبروئے محمدﷺ کو وقت کا سب سے بڑا عالمی مسئلہ بنادینا جان جوکھوں کا کام بنادیا گیا تھا۔
شاید پھر کچھ قربانیوں کا وقت آگیا تھا۔
فرعون کے جادوگروں کا طلسم توڑنے کے لیے شمعِ رسالت کے پروانوں کو ایک بار پھر امتحان درپیش تھا
نبیؐ کی ناموس سے بڑھ کر عالم اسلام کےلیے کونسا مسئلہ اہم ہوسکتا ہے؟
تو پھر اس مسئلہ کو مسئلہ کے طور پر کیسے منوایا جاتا، جہاں صبح شام ابلاغی محنت اس بات پر ہورہی ہے کہ یہ کوئی مسئلہ ہی نہیں!
اس مسئلہ کو عالمی سطح تک پہچانا کسی میڈیا کی مدد کے بغیر، بلکہ خرانٹ میڈیا کی کھڑی کی ہوئی آہنی رکاوٹوں کو ہٹاتے ہوئے، آج کہاں آسان رہ گیا تھا۔
اس کو تو ایک شہر کا مسئلہ نہیں بننے دیا جارہا تھا!
ایک ملک کا مسئلہ نہیں بننے دیا جارہا تھا؟
پھر یہ عالمی مسئلہ کیسے بنتا؟
کرائے کے میڈیا کی کھڑی کی ہوئی ان رکاوٹوں کا حصار کون توڑتا؟
یہ ہدف اس بار بےحد مشکل کردیا گیا تھا
اور اس مشکل ہدف کو اِس بار ناموسِ رسالت کے شہیدوں نے اپنا خون دے کر سر کیا۔
میڈیا انقلاب‘ کا یہ سحر توڑنا ہرگز آسان نہ رہ گیا تھا
اور وہ تو کب کے بغلیں بجا رہے تھے کہ عالم اسلام کو کرائے کے میڈیا کے ذریعے گھیر لیا گیا ہے!
مسلم سٹریٹ کو میڈیا کے ذریعے قابو کرلیا گیا ہے
دماغوں کو ان سکرینوں کے ذریعے جکڑ لیا گیا ہے
بغض سے بھرے ہوئے عالمی شیاطین نے آبروئے محمدؐ کے خلاف یہ سٹیج سجایا ہی تب تھا اور کارٹونوں سے شروع ہونے والے اس شیطانی سفر کا آغاز ہی تب کیا تھا جب اُس نے ہمارے یہاں ’انفرمیشن‘ کی انجنئرنگ مکمل کرلی تھی!
یہ کہانی بڑی خوبصورتی سے مکمل ہورہی تھی
وہ ہمیں مارتے تھے، اِدھر سے دلاسہ دیا جاتا تھا!
وہ ہمارے نبی کی توہین کرتے تھے، اِدھر سے ’صبر‘ کی تلقین کی جاتی تھی
وہ ہمارا قرآن جلاتے تھے، ادھر سے بے حسی کے انجکشن دیے جاتے تھے
وہ ہم پر اپنے ٹینک اور طیارے اور ڈیزی کٹر چڑھالاتے تھے، ادھر سے ہمیں کرکٹ کا سکور سنایا جاتا تھا اور آرٹ اور فیشن سے محظوظ ہونے کا شوق دلایا جاتا تھا
میڈیا کی سب ’ایکسائٹ منٹ‘ سب چہک ثانیہ مرزا کے لیے تھی
میڈیا کی سب غیرت آسیہ بی بی کےلیے تھی
میڈیا کی سب حمیت ممتاز قادری کو مذموم ٹھہرانے کےلیے تھی
میڈیا کی سب آنیاں جانیاں رمشا کی ناموس کےلیے تھی
میڈیا کا سب پروفیشنل ازم کوڑوں والی فلم کو اصلی کرکے دکھانے کےلیے تھا
میڈیا کی سب ’جدوجہد‘ بھارت کےلیے امن اور محبت کے سُر گانے کےلیے تھی
میڈیا کی تمام تر لگن پاکستان میں ہندؤں اور عیسائیوں پر ڈھائے جانے والے مظالم کو ہائی لائٹ کرنے کےلیے تھی
شہیدو! تمہاری عظمت کو سلام!
تم نے ناموسِ رسالت کے مسئلہ کو پھر بھی سرفہرست کردیا
اپنا خون دے کر مقدساتِ اسلام کی اہانت کے مسئلہ کو پھر ہائی لائٹ کردیا 
میڈیا جو دماغوں پر سانپ کی طرح کنڈلی مار کر بیٹھا تھا
میڈیا جو انفرمیشن کو اپنے گھر کی باندی بنا کر بیٹھا تھا
اپنی مرضی کے ایشوز کو کھڑا کرتا اور اپنی مرضی کے ایشوز کو موت کی نیند سلاتا ہے
میڈیا جو ناموسِ رسالت کے موضوع کو موت کی نیند سلانے کےلیے پچھلے سات سال سے اپنے مغربی سپانسرز کے نمک کا حق ادا کررہا ہے
آج کا پورا دن ناموسِ رسالت کے لیے وقف کرچکا ہے!
بے شک وہ ناموسِ رسالت کے اس پورے احتجاجی عمل کو انتہائی منفی انداز میں کوریج دیتا رہا ہے۔
ناموس رسالت کے مظاہروں کو ’نقصانات‘ کا پلندہ بنا کر پیش کررہا ہے
بڑی شیطنت کے ساتھ لوگوں کو اس ایشو سے ہی متنفر کررہا ہے کہ آئندہ ایسی کسی حرکت کی کوشش نہ ہو۔
چند شرپسند عناصر جو ہمیشہ ہی احتجاجات وغیرہ میں گھس کر تخریبی کارروائیوں کا موقع پالیتے ہیں، ان کو گھما گھما کر اس طرح ہائی لائٹ کیا جارہا ہے کہ لوگ اس پورے عمل سے ہی دل کھٹا کرلیں۔
بجائے اس کے کہ اس صورتحال کی ذمہ داری ان شیاطینِ مغرب پر ڈالی جاتی جنہوں نے مسلم غیرت اور حمیت کو امتحان میں ڈالا۔۔۔ بجائے اس کے کہ اس کی ذمہ داری حکمرانوں پر ڈالی جاتی جنہوں نے ڈیڑھ ہفتہ تک کچھ نہ کرکے عوامی ردعمل کو اس حد تک بپھرجانے پر مجبور کیا اور جنہوں نے کوئی ایک بھی کام ایسا نہیں کیا جس سے گستاخانِ رسول کو کوئی سبق ملتا اور جس کے نتیجے میں عوامی غیظ و غضب کا سامنے آنا قدرتی بات تھی۔۔۔ بجائے اس کے کہ اُس صورتحال کو کوسا جاتا جو مسلم پبلک کو اس حد تک اکسانے اور مایوس کرنے کی ذمہ دار ہے، میڈیا کے تجزیہ کار سارا دن مظاہرین کی ہی ایک غلط تصویر بنا کر پیش کرنے میں مصروف رہے۔
گویا اس موقع پر بھی اور ان شہادتوں پر بھی وہ اپنے ہی ایجنڈے کو فروغ دیتا رہا
آج کے احتجاجی مظاہروں کی ’بھرپور‘ کوریج دیتے ہوئے بھی اپنے ہی مقاصد پورے کرتا رہا
پھر بھی ناموسِ رسالت کا مسئلہ کوریج پا کر رہا!
خدا کے فضل سے مقدساتِ اسلام کو توجہ مل کر رہی!
دنیا کو معلوم ہوا کہ عالم اسلام کی حکومتیں غیرت اسلامی سے تہی دامن ہیں تو یہاں کی اقوام اپنے نبی کی ناموس کے سوال پر ہر حد تک چلے جانے پر تیار ہیں۔
پورے جہان کو پتہ چلا کہ مسلم حکومتوں نے اپنے عوام کو مایوس کیا۔ مگر یہ عوام اپنی حکومتوں کے مایوس کن کردار کے علی الرغم، اور اپنے ملکی میڈیا کے پردہ ڈال رکھنے کے باوجود، اس مسئلہ کو اٹھانے میں پوری طرح کامیاب رہے۔
یہاں تک کہ اب مغرب میں کسی شیطانی فلم کو اداکار ملنا مشکل ہوگئے، کوئی اداکار ایسی کسی فلم کو سائن کرنے پر تیار نہ ہوگا جس میں اداکاری کرکے وہ اپنی جان کو خطرے میں ڈال سکتا ہے!
ایسے تیور دکھائے بغیر یہ پیغام پہنچانا بھلا کب ممکن تھا؟
میڈیا کے ظالمو!
آج تمہارا سارا دن ’پرامن‘ کی ضرورت پر زور دیتے گزرا!
حالانکہ تم اپنے بارے میں خوب جانتے ہو۔۔۔ اور اسلامی ایشوز کے ساتھ اپنے بغض سے خوب واقف ہو۔۔۔
اسلام پسند قوتیں اپنے ایشوز پر کروڑوں کے اجتماعات بھی کرلیں تو وہ تمہاری توجہ سے محروم رہتی ہیں۔
اسلام پسند اپنے مظاہروں میں پوری دنیا کو اکٹھا کرلیں تو وہ تمہارے معتصب کیمرے کی نظر سے روپوش رہتی ہیں
کہو تو اسلام پسند قوتوں کا وہ ٹھاٹھیں مارتا لانگ مارچ جو انہوں نے ’’دفاعِ پاکستان‘‘ کے عنوان کے تحت تمہارے اتحادی ’’ناٹو‘‘ کی سپلائی کی بحالی کے خلاف نکالا تھا اور جو لاہور سے چل کر اسلام آباد پرامن طور پر پہنچا تھا۔۔۔ کہو تو اُس انسانی سمندر کو تم سے کتنی توجہ ملی تھی؟
اسلام پسندوں کے پرامن مظاہروں کو تم نے کوریج دی ہی کب ہے۔
اسلام پسندوں کے بعض جذباتی طبقوں میں یہ فرسٹریشن پیدا کرنے کے ذمہ دار تو تم خود ہو
اسلام پسندوں کے ایشوز کو موت کی نیند سلانے میں ہی تو آج تک تمہاری تمام تر مہارت صرف ہوئی ہے
اور اب اس صورتحال کو پیدا کرنے کے بعد تم ’پرامن‘ کی گردان کرنے لگے ہو
یعنی جب وہ ’پرامن‘ ہوتا ہے تو کسی توجہ کے قابل نہیں ہوتا
اور جب وہ ’پرامن‘ نہیں رہتا تو مذمت کے قابل ہوتا ہے۔
تمہارا خیال ہے کوئی اس خباثت کو نہیں سمجھتا۔۔۔
یاد رکھو، یہاں ایک آتش فشاں کھول رہا ہے
تمہارا وہ مغرب نواز اور قادیانیت نواز کردار بہت کھل کر سامنے آرہا ہے
اس ملک کو رخ دینے کا تمہارا یہ خواب پورا ہونے والا نہیں
ناموس رسالت کے مسئلہ سے اٹھنے والا یہ سیلاب، جو شعور اور آگہی کی منزلیں تیزی کے ساتھ طے کرنے لگا ہے، عنقریب تمہارا بہت کچھ بہا لےجانےوالا ہے۔

 

Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
کشمیر کےلیے چند کلمات
جہاد- مزاحمت
احوال- امت اسلام
حامد كمال الدين
کشمیر کےلیے چند کلمات حامد کمال الدین برصغیر پاک و ہند میں ملتِ شرک کے ساتھ ہمارا ایک سٹرٹیجک معرکہ ۔۔۔
شیعہ سنی تصادم میں ابن تیمیہؒ کو ملوث کرنا!
جہاد-
تنقیحات-
حامد كمال الدين
شیعہ سنی تصادم میں ابن تیمیہؒ کو ملوث کرنا! کل ہمارے یہاں ایک ٹویٹ ہوا تھا: شیعہ سنی تصادم&۔۔۔
ٹرمپ کی جھنجھلاہٹ آپکی کامیابی کی غماز ہے
احوال-
جہاد-
حامد كمال الدين
خاصی حیرت ہوتی ہے ہمارے بہت سے فضلاء #ٹرمپ کی حالیہ جھنجھلاہٹ کو پاکستان کی ناکامی سے تعبیر کر رہے ہیں! ۔۔۔
دشمن آپ کے صرف ’آج‘ کو نہیں دیکھتا
احوال- امت اسلام
جہاد- قتال
حامد كمال الدين
عالم اسلام کے گرد گھیرا، ’پوسٹ کولڈوار‘ سیناریو سمجھنے کی ضرورت3 تحریر: حامد کمال الدین کچھ بڑی مسلم آباد۔۔۔
کافر کی ہمارے خلاف جنگ کا پہلا محور: "مسلمان" کو کسی بڑی جغرافیائی اکائی کے طور پر روئےزمین سے ختم کر ڈالنا
جہاد- قتال
احوال- امت اسلام
حامد كمال الدين
عالم اسلام کے گرد گھیرا، ’پوسٹ کولڈوار‘ سیناریو سمجھنے کی ضرورت2 تحریر: حامد کمال الدین یہ جنگ جو عالم ۔۔۔
عالم اسلام کے گرد گھیرا، ’پوسٹ کولڈوار‘ سیناریو سمجھنے کی ضرورت
جہاد- قتال
احوال- امت اسلام
حامد كمال الدين
عالم اسلام کے گرد گھیرا، ’پوسٹ کولڈوار‘ سیناریو سمجھنے کی ضرورت تحریر: حامد کمال الدین سرد جنگ کے ۔۔۔
کمزور قوموں کے جہاد پر ’شریعت‘ کے حوالے سے شدت پسندوں کا ایک اعتراض
جہاد- مزاحمت
تنقیحات-
حامد كمال الدين
جہادِ نکایہ.. ’’جہاد‘‘ کی ایک باقاعدہ صورت ہے کمزور قوموں کے جہاد پر ’شریعت‘ کے حوالے سے شدت پسندوں کے ا۔۔۔
معاصر جہاد: افغانستان، فلسطین وکشمیر وغیرہ میں محصور
جہاد-
حامد كمال الدين
معاصر جہاد: افغانستان، فلسطین وکشمیر وغیرہ میں محصور جوابات از: مدیر ایقاظ سوال: آپ کے مجلہ میں ہم پڑھت۔۔۔
مسلم مقبوضہ خطوں میں جہاد کو حرام ٹھہرانا، مرزا قادیانی کی سنتِ خبیثہ
جہاد-
ادارہ
 مسلم مقبوضہ خطوں میں جہاد کو حرام ٹھہرانا مرزا قادیانی کی سنتِ خبیثہ ایقاظ کے فائل سے یہ فتویٰ جو 'حکم۔۔۔
ديگر آرٹیکلز
Featured-
باطل- جدال
حامد كمال الدين
کچھ ’مسلم‘ معترضینِ اسلام! تحریر: حامد کمال الدین پچھلے دنوں ایک ٹویٹ میرے یہاں سے  ہو۔۔۔
اصول- منہج
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
پراپیگنڈہ وار propaganda war میں سیگ منٹیشن segmentation (جزء کاری) ناگزیر ہوتی ہے۔ یعنی معاملے کو ای۔۔۔
بازيافت-
ادارہ
ہجرت کے پندرہ سو سال بعد! حافظ یوسف سراج کون مانے؟ کسے یقیں آئے؟ وہ چار قدم تاریخِ ان۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
میرے اسلام پسندو! پوزیشنیں بانٹ کر کھیلو؛ اور چال لمبی تحریر: حامد کمال الدین یہ درست ہے کہ۔۔۔
احوال- امت اسلام
ذيشان وڑائچ
ہمارے کچھ نوجوان طیب اردگان کے بارے میں عجیب و غریب الجھن کے شکار ہیں۔ کوئی پوچھ رہا ہے کہ۔۔۔
احوال- امت اسلام
حامد كمال الدين
’’سلفیوں‘‘ کے ساتھ تھوڑی زیادتی ہو رہی ہے!    عرب داعی محترم ابو بصیر طرطوسی کے ساتھ بہت م۔۔۔
اصول- عقيدہ
اداریہ-
حامد كمال الدين
شرکِ ’’ہیومن ازم‘‘ کی یلغار..  اور امت کا طائفہ منصورہ حالات کو سرسری انداز میں پڑھنا... واقعات م۔۔۔
احوال-
اصول- منہج
راہنمائى-
حامد كمال الدين
پاکستانی سیاست میں اسلامی سیکٹر کے آگے بڑھنے کے آپشنز تحریر: حامد کمال الدین میری نظر میں، اس۔۔۔
Featured-
ثقافت- خواتين
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
ادارہ
فیمینسٹ جاہلیت کو جھٹلاتی ایک نسوانی تحریر اجالا عثمان انٹرنیٹ سے لی گئی ایک تحریر جو ہمیں ا۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
"نبوی منہج" سے متعلق ایک مغالطہ کا ازالہ حامد کمال الدین ایک تحریکی عمل سے متعلق "نبوی منہج۔۔۔
متفرق-
ادارہ
پطرس کے ’’کتے‘‘ کے بعد! تحریر: ابو بکر قدوسی مصنف کی اجازت کے بغیر شائع کی جانے والی ای۔۔۔
باطل- فرقے
اعتزال
ادارہ
ایک فیس بکی بھائی نے غامدی صاحب کی جہاد کے موضوع پر ویڈیو کا ایک لنک دے کر درخواست کی تھی کہ میں اس ویڈیو کو ۔۔۔
باطل- فرقے
احوال- وقائع
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین ایک بڑی خلقت واضح واضح اشیاء میں بھی فرق کرنے کی روادار نہیں۔ مگر تعجب ہ۔۔۔
باطل- كشمكش
حامد كمال الدين
تحریر: حامد کمال الدین کہتا ہے میں اوپن ایئر میں کیمروں کے آگے جنازے کی اگلی صف کے اندر ۔۔۔
احوال-
باطل- شخصيات و انجمنيں
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین ’’تنگ نظری‘‘ کی ایک تعریف یہ ہو سکتی ہے کہ: ایک چیز جس کی دین میں گنجائش۔۔۔
جہاد- مزاحمت
احوال- امت اسلام
حامد كمال الدين
کشمیر کےلیے چند کلمات حامد کمال الدین برصغیر پاک و ہند میں ملتِ شرک کے ساتھ ہمارا ایک سٹرٹیجک معرکہ ۔۔۔
ثقافت- رواج و رجحانات
ذيشان وڑائچ
میرے ایک معزز دوست نے ویلینٹائن ڈے کے حوالے سے ایک پوسٹ پیش کی ہے۔ پوسٹ شروع ہوتی ہے اس جملے سے"ویلنٹائن ۔۔۔
بازيافت- تاريخ
ادارہ
علاء الدین خلجی اور رانی پدماوتی تحریر: محمد فہد  حارث دوست نے بتایا کہ بھارت نے ہندو۔۔۔
کیٹیگری
Featured
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
امت اسلام
ذيشان وڑائچ
امت اسلام
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
منہج
حامد كمال الدين
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
ادارہ
تاريخ
ادارہ
سلف و مشاہير
مہتاب عزيز
مزيد ۔۔۔
باطل
جدال
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
ادارہ
فرقےاعتزال
ادارہ
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
خواتين
ادارہ
رواج و رجحانات
ذيشان وڑائچ
معاشرہ
عرفان شكور
مزيد ۔۔۔
جہاد
مزاحمت
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ابن علی
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
ادارہ
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز