عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Friday, November 15,2019 | 1441, رَبيع الأوّل 17
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
2016-01 آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
السلام علیکم۔ جنوری 2016
:عنوان

:کیٹیگری
ابن علی :مصنف

السلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ

قارئین کرام نوٹ فرمالیں، سال 2016 کے دوران ہم لبرلزم پر کچھ خصوصی مضامین دینے کا ارادہ رکھتے ہیں۔ ہماری خواہش ہو گی، اپنے حلقے میں ان موضوعات میں دلچسپی رکھنے والے اصحاب کے ساتھ آپ یہ تحریریں شیئر کرتے رہیں۔

قارئین! اسلامی عقیدہ ایک وسیع مضمون ہے اور اس کا بیان مختلف سطحوں پر ہونا ضروری ہے۔ مگر اس عقیدے سے پھوٹنےوالی تہذیب آج ہر کسی کو متوجہ کیے ہوئے ہے۔  اسلام کا ایک عظیم شعار ’’حیاء‘‘ اور اس کا ایک عظیم مظہر ’’حجاب‘‘ براعظموں کے اندر حملوں کی زد میں ہے۔ کہیں (سوٹزرلینڈ میں) انتخابات کے اندر یہ  سوال رکھا جا رہا ہے کہ نقاب پہنے نظر آنے والی خواتین کو ساڑھے چھ ہزار پاؤنڈ تک جرمانہ کر دیا جائے یا نہیں؟ تو کہیں مملکت خداداد پاکستان میں حجاب کی داعی ایک تنظیم ’’الھدیٰ‘‘ کو لبرل تیروں کے نشانے پر رکھا جا رہا ہے۔ یہاں آدمی دم بخود رہ جاتا ہے کہ اسلامی تہذیب کے بدخواہوں کو جہاں دنیا بھر کی زبانیں، قلمیں اور چینل دستیاب ہیں وہاں اسلامی تہذیب کے حق میں بولنے والے آٹے میں نمک کے برابر بھی نہیں۔ کیا واقعتاً ہم اس پر بول تک نہیں سکتے؟

اُدھر مشرقِ وسطیٰ میں نئے میدان سجنے لگے۔ ’نئے عثمانیوں‘ نے وقت کی ایک سپرپاور جو ارض شام پر بےروک چڑھ آئی تھی، یعنی روس کا طیارہ گرا کر گویا اعلان کر دیا کہ روس کے خلاف جہاد کو جو نصرت کبھی ضیاء الحق کے زمانے میں ارض پاکستان سے ملی رہی تھی آج وہ ارضِ ترکستان سے دستیاب ہے۔  طرفین میں تیزی کے ساتھ بڑھتی ہوئی کشیدگی حد سے تجاوز بھی کر سکتی ہے۔ معاشی ہتھیار پھر قوموں اور تہذیبوں کی توجہ لینے لگے، کاش ہم اس کا اندازہ کرلیں، جوکہ ہمیں خودکفالت سے ہمکنار کر سکتا ہے۔ روس میں ترکی مصنوعات کا بائیکاٹ ہو جانے کے بعد سعودیہ اور قطر کی کمپنیوں نے اعلان کیا کہ وہ یہ مصنوعات خرید کر برما اور افریقہ کے مسلمانوں تک پہنچائیں گی اور ترکی کو اس موقع پر تنہائی کا احساس نہیں ہونے دیا جائے گا۔ عملاً اس پر کہاں تک عمل ہو گا، یہ تو وقت ہی بتائے گا، لیکن یہ بات ہو جانا ہی مسلم وحدت کے تصور کو جگا دینے میں ایک تاثیر رکھتا ہے۔

جہاں اس وحدت کا ذکر ہو گا، وہاں دشمنوں کے ساتھ گٹھ جوڑ میں اب کھل کر سامنے آنے والا ایران بھی موضوعِ بحث ہو گا۔ امریکہ کے ساتھ تعلقات کی سردی کی ساری برف پگھلتی ہم ایک عرصہ سے دیکھ چکے۔ اب روس شام پر آ چڑھا تو یہاں کے مسلمانوں کا خون کرنے میں اب یہی ایرانی لشکر روس کے ہم رکاب ہیں۔  ادھر ٹریبیون ایسے اخبارات میں چھپ چکا کہ ایران پاکستان سے بھی نوجوانوں کی بھرتی کر رہا ہے۔ اس سے پہلے عراق اور لبنان میں ایرانی سرگرمیوں کو سامنے رکھیں تو اندیشہ ہے کہ ایسی سرگرمیوں سے ایک تو ایران شام کے محاذ پر پاکستان نوجوانوں کو کام میں لائے گا اور دوسرا، اسی عمل سے خدانخواستہ پاکستان میں بھی اُس کےلیے ایک عدد ’حزب اللہ‘ تیار ہو گی۔ خدا پاکستان کو نظربد سے بچائے۔

کراچی میں ملک دشمن عناصر کے خلاف جاری آپریشن کچھ بڑے بحرانات سے گزرتا نظر آ رہا ہے۔ معاملات کو خراب کرنے کےلیے سیاست کا ہتھیار بڑی مہارت کے ساتھ آزمایا جا رہا ہے۔ سیاسی کھلاڑیوں کے نئےنئے پینتروں کے نتیجے میں خدشہ یہاں تک پیدا ہو گیا ہے کہ رینجرز کے آپریشنز سے پیدا ہونے والی ایک امیدافزا صورتحال پھر سے کسی پرانے رخ پر پلٹا کھا کر کراچی کو ان تاریکیوں میں نہ دھکیل دے جو پچھلے کئی عشروں سے یہاں ڈیرے ڈالے ہوئے ہیں۔ کراچی ہماری معیشت کی ریڑھ کی ہڈی ہے، اس کا بحال ہونا ہمارے دشمنوں کو کبھی برداشت ہونے کا نہیں۔ دشمن کی زبان بولنے والے طبقے بھی ہرگز یہاں چھپے ہوئے نہیں، مگر مسئلہ اس زبان کو پڑھنے کا ہے!

قارئین! پچھلے دنوں نئے تعینات ہونے والے اسرائیلی انٹیلی جنس کے سربراہ یوزی کوھن کی ایک تصویر منظرعام پر آئی، جس میں وہ اپنی تعیناتی کے اگلے ہی دن اپنے مرشد کی دست بوسی کو حاضر ہوا۔ اس کا مرشد اس کا بچپن کا استاد حاخام ڈورک مین ہے جو قتل کے فتوے دینے کی شہرت رکھنے والا ایک شدت پسند یہودی عالم ہے۔  یہ تصویر ذرائع ابلاغ میں على الاعلان چھپی۔ تصور کریں کسی مسلمان انٹیلی جینس کا کوئی افسر یہاں کی کسی انتہاپسند تو کیا کسی معتدل مذہبی شخصیت کو یوں على الاعلان ملا ہوتا اور ذرائع ابلاغ میں اپنی فوٹو نشر کرواتا... تو یہ دنیا کو کیسے ہضم ہوتا۔ کم از کم ہمیں اندازہ تو ہونا چاہئے کہ ہمارے مسلم ملکوں کو آج کیسی صورتحال کا سامنا ہے اور اس دنیا میں کیسے دہرے معیار چلتے ہیں۔

اسی دوران، افریقی ملک گیمبیا کے صدر یحیىٰ جامح نے ریاست کو اسلامی جمہوریہ قرار دینے کا اعلان کیا ہے۔ اس سے پہلے وہ کومن ویلتھ سے نکلنے کا اعلان بھی کر چکے ہیں۔ عمل کی دنیا میں بےشک یہ کوئی بڑا واقعہ بوجوہ نہ ہو سکے، لیکن اس موقع پر جہاں اسلام کو ہر طرف سے گھیرا اور اسلام کا نام لینا دشوار کیا جا رہا ہے، یہ اس بات کا غماز ضرور ہے کہ عالم اسلام میں برسر کار عوامل میں اسلامی فیکٹر آج بھی اپنی اہمیت رکھتا ہے اور کیا بعید، تھوڑی دیر میں یہ پھر ابھر آئے۔

Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
ديگر آرٹیکلز
بازيافت- سلف و مشاہير
Featured-
شيخ الاسلام امام ابن تيمية
امارتِ حضرت معاویہؓ، مابین خلافت و ملوکیت نوٹ: تحریر کا عنوان ہمارا دیا ہوا ہے۔ از کلام ابن ت۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
سنت کے ساتھ بدعت کا ایک گونہ خلط... اور "فقہِ موازنات" حامد کمال الدین مغرب کے اٹھائے ہوئے ا۔۔۔
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
Featured-
حامد كمال الدين
"انسان دیوتا" کے حق میں پاپ! حامد کمال الدین دین میں طعن کر لو، جیسے مرضی دین کے ثوابت ۔۔۔
Featured-
بازيافت-
حامد كمال الدين
تاریخِ خلفاء سے متعلق نزاعات.. اور مدرسہ اہل الأثر حامد کمال الدین "تاریخِ خلفاء" کے تعلق س۔۔۔
Featured-
باطل- اديان
حامد كمال الدين
ریاستی حقوق؛ قادیانیوں کا مسئلہ فی الحال آئین کے ساتھ حامد کمال الدین اعتراض: اسلامی۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
لفظ  "شریعت" اور "فقہ" ہم استعمال interchangeable    ہو سکتے ہیں ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
ماتریدی-سلفی نزاع، یہاں کے مسلمانوں کو ایک نئی آزمائش میں ڈالنا حامد کمال الدین ایک اشع۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
منہجِ سلف کے احیاء کی تحریک میں ’مارٹن لوتھر‘ تلاش کرنا! حامد کمال الدین کیا کوئی وجہ ہے کہ۔۔۔
Featured-
احوال-
حامد كمال الدين
      کشمیر کاز، قومی استحکام، پختہ اندازِ فکر کی ضرورت حامد ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
مشكوة وحى- علوم حديث
حامد كمال الدين
اناڑی ہاتھ درایت! صحیح مسلم کی ایک حدیث پر اٹھائے گئے اشکال کے ضمن میں حامد کمال الدین ۔۔۔
راہنمائى-
حامد كمال الدين
(فقه) عشرۃ ذوالحج اور ایامِ تشریق میں کہی جانے والی تکبیرات ابن قدامہ مقدسی رحمہ اللہ کے متن سے۔۔۔
تنقیحات-
ثقافت- معاشرہ
حامد كمال الدين
کافروں سے مختلف نظر آنے کا مسئلہ، دار الکفر، ابن تیمیہ اور اپنے جدت پسند حامد کمال الدین دا۔۔۔
اصول- منہج
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
اصول- عقيدہ
حامد كمال الدين
ایک ٹھیٹ عقائدی تربیت ہماری سب سے بڑی ضرورت حامد کمال الدین اسے فی الحال آپ ایک ناقص استقر۔۔۔
ثقافت- خواتين
ثقافت-
حامد كمال الدين
"دردِ وفا".. ناول سے اقداری مسائل تک حامد کمال الدین کوئی پچیس تیس سال بعد ناول نام کی چیز ہاتھ لگی۔ وہ۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
امارات کا سعودی عرب کو یمن میں بیچ منجدھار چھوڑنے کا فیصلہ حامد کمال الدین شاہ سلمان کے شروع دنوں میں ی۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
پاک افغان معاملہ.. تماش بینی نہیں سنجیدگی حامد کمال الدین وہ طعنے جو میرے کچھ مخلص بھائی او۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
کلچرل وارداتیں اور ہماری عدم فراغت! حامد کمال الدین ظالمو! نہ صرف یہاں کا منبر و محراب ۔۔۔
احوال-
ادارہ
تحریر:   تحریم افروز یوں تو امریکا سے مسلمانوں  کے معاملے میں کبھی خیر کی توقع رہی ہی&۔۔۔
کیٹیگری
Featured
شيخ الاسلام امام ابن تيمية
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
سلف و مشاہير
شيخ الاسلام امام ابن تيمية
حامد كمال الدين
ادارہ
مزيد ۔۔۔
باطل
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
اديان
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
معاشرہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
خواتين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
جہاد
مزاحمت
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم حديث
حامد كمال الدين
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز