عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Friday, November 16,2018 | 1440, رَبيع الأوّل 7
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
2014-10 TaamulAhleQibla آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
فصل10: لوگوں کو بتدریج دین پر لانا
:عنوان

لوگوں کو اِس حق پر لے کر چلنے میں نرمی بھی ہوگی، شفقت بھی۔ جس رفتار سے وہ چل سکتے ہوں اُس رفتار سے ان کو چلایا جائے گا۔ اُن کی اُس حالت کا جس میں وہ ہیں، اعتبار کیا جائے گا

. اصولمنہج :کیٹیگری
شيخ ڈاكٹر سفر الحوالى :مصنف

شرح ’’تعامل اہل قبلہ‘‘ 10

لوگوں کو بتدریج دین پر لانا

(بسلسلہ حاشیہ 24، متن سفر الحوالی)

یہ ایک بدیہی حقیقت ہے کہ راتوں رات سب کچھ انجام پا جانا ممکن نہیں۔ خدا کا یہ جہان اِس نقشے پر تخلیق ہی نہیں ہوا۔ ہر چیز اپنا ایک وقت لیتی ہے۔ یوں تو ایک فرد کی بابت بھی یہ اصول درست ہے۔ تاہم جہاں قوموں اور معاشروں کو خدا کی جانب لےکر چلنا ہو، وہاں تو یہ حقیقت اور بھی جلی ہو کر آپ کے سامنے آتی ہے۔ جلدباز لوگ کچھ بڑےبڑے حادثات کروا سکتے ہیں۔ سماجی نظر سے محروم لوگ ’دلائل‘ کی بحثیں لے کر بیٹھے رہیں گے، ’’معاشروں‘‘ کو لے کر چلنا البتہ ایک اور چیز ہے۔ جبکہ ہمارے ائمۂ سنت وہ ہستیاں جو صدیوں معاشروں کو چلاتی اور راہ دکھاتی رہیں۔

’’اہل سنت‘‘ انسان کو سب سے زیادہ سمجھنے والا، انسان پر سب سے زیادہ رحمت اور شفقت کرنے والا، اور انسان کو آسودہ رکھنے اور بیک وقت خدا کی جانب لے کر  بڑھنے والا منہج ہے۔[1]  اس میں انسان کی اس حالت کا  اعتبار کیا جاتا ہے جہاں سے اس کو خدا کی جانب اپنے اس سفر کا آغاز کرنا ہوتا ہے۔  ہمارے فقہاء بیک وقت ماہرینِ سماج social scientists  بھی تھے لہٰذا ’’شریعت‘‘ سے ان کا استدلال کرنا ہمارے آج کے شدت پسندوں یا مثالیت پرستوں سے بہت مختلف رہا ہے۔ اُن کے یہاں شریعت کے ’’دلائل‘‘ کو شریعت کے ’’مقاصد‘‘ اور ’’کلیات‘‘ کے ایک بڑے فریم میں رکھ کر سمجھا جاتا رہا ہے، نیز ’’انسان‘‘کو اس کی سماجی پیچیدگیوں اور کمزوریوں سمیت سمجھنا بھی ہمارے فقہاء کے فہمِ شریعت کے پیچھے کارفرما رہا ہے... جس کے باعث ’’دلائل‘‘ کبھی اُن کے یہاں تجربوں، آزمائشوں اور حادثوں کا موجب نہیں بننے دیے گئے۔ جبکہ یہاں آئے روز مذاق ہوتے ہیں۔

یہاں؛ جناب الحوالی اِن دو امور کو بیک وقت ذہن نشین کرواتے ہیں:

1.       جہاں تک خدائی احکام کا تعلق ہے تو ان کے واجبِ اطاعت ہونے میں کوئی کلام نہیں۔ خود اِن احکام کے شریعت اور دستور ہونے پر کوئی بحث نہیں۔ یہاں؛ کسی ہستی، کسی اتھارٹی، کسی پارلیمنٹ کا کوئی اختیار نہیں۔ ’’تشریع‘‘ انجام پا چکی؛ اس میں قیامت تک اب کوئی تدریج نہیں۔ عقیدہ، عبادت، سماج، ہر معاملہ خدا کی شریعت میں طے ہوچکا؛ اور وہ قیامت تک پتھر پر لکیر ہے۔ ’’اہل سنت و اتباع‘‘ ان میں سے کسی ایک بھی چیز کو پیچھے کرنے کے روادار نہیں۔ یہ حق پورے کا پورا بیان ہوگا۔ اس میں کوئی کمی قبول نہیں؛ کیونکہ یہ اللہ کے دین سے تنازل (compromise) ہوگا۔ یہ پیراڈائم (paradigm) کو درست رکھنے کا مسئلہ ہے۔ یہاں ایک انچ پیچھے ہٹنا ’’وحی کی اتباع‘‘ سے پیچھے ہٹنا[2] ہے۔ اہل سنت کی دعوت اور ان کا مطالبہ اِسی ’’پورے حق‘‘ کا رہے گا۔

2.       البتہ لوگوں کو اِس حق پر لے کر چلنے میں نرمی بھی ہوگی، شفقت بھی۔ جس رفتار سے وہ چل سکتے ہوں اُس رفتار سے ان کو چلایا جائے گا۔ اُن کی اُس حالت کا جس میں وہ ہیں، اعتبار کیا جائے گا۔ ایک غلط حالت کو صحیح حالت میں بدلنے کےلیے جو جو  کوشش، جو جو محنت اور جو جو تیاری درکار ہےاس کا ضرور لوگوں کو پابند کیا جائے گا؛ تاہم اگر وہ اس محنت اور تیاری میں جت گئے ہوئے ہیں تو درمیانی مرحلہ میں ان کا عذر تسلیم کیا جائے گا۔  ان کی استطاعت سے بڑھ کر ان سے کچھ طلب نہیں کیا جائے گا؛ اور ’’شریعت پر آنا‘‘ لوگوں کےلیے عذاب یا مذاق نہیں بننے دیا جائے گا۔

یہاں اِس مسئلہ پر تفصیل سے بات نہ ہو سکے گی، تاہم ’’تدریج‘‘ کے جو معانی ہمیں سنت اور سیرتِ خلفاء میں واضح طور پر ملتے ہیں اور ہمارے ائمہ اور فقہاء ان کا اعتبار کرتے ہیں، اور جس سے ہماری شریعت کی وسعت، مُرونت flexibility ، انسان رحمی اور سماج فہمی نہایت خوبصورت طور پر عیاں ہوتی ہے، اس کی جانب یہاں ہم چند اشارے کریں گے:

à    لوگوں کو ایک ایک کر کے دین کے اعمال پر لانا ’’تعلیم‘‘ اور ’’تربیت‘‘ کا نبوی منہج ہے۔ معاذ﷛ کو یمن بھیجتے وقت آپﷺ نے ہدایت فرمائی کہ سب سے پہلے انہیں توحید سکھانا۔ جب وہ توحید سیکھ جائیں تو نماز اور پھر زکات۔

à    شریعت کے اصول: جو انسان کو اس کی ’’استطاعت‘‘ کے دائرے میں مکلف کرتے ہیں۔ یہ بات شریعت کے کلیات میں آتی ہے۔ اب یہ تو معلوم ہے کہ ’’استطاعت‘‘ جسمانی بھی ہوسکتی ہے، عقلی بھی اور سماجی بھی۔  لہٰذا کوئی اپنی استطاعت سے بڑھ کر مکلف نہ کیا جائے گا؛ نہ ’’چلانے‘‘ والے اور نہ ’’چلنے‘‘ والے۔

à    لوگوں کی ’’حالت‘‘ کا اعتبار کرنا، جس پر شریعت سے کئی شواہد ملتے ہیں۔  مثلاً رسول اللہﷺ کا غزوات وغیرہ کے دوران  کسی پر حد قائم کرنے سے ممانعت فرمانا۔  اور حضرت عمر﷛ کا اس کی یہ توجیہ فرمانا کہ دشمن کا علاقہ قریب ہونے کے باعث مبادا شیطان آدمی کو خراب کرے اور وہ سزا سے بھاگ کر  دشمن سے جا ملے؛ یوں معاملہ ایک چھوٹے شر سے نکل کر بڑے شر میں جا پڑے۔[3]  فقہائے اسلام نے نبیﷺ کی اس حدیث اور عمر﷛ ودیگر صحابہ﷢ کے ان آثار کی بنیاد پر کئی ایک مسائل اخذ کیے ہیں۔ سبھی میں یہی چیز پیش نظر ہے کہ ایک معمول سے ہٹی ہوئی صورتحال کا حسبِ سنگینی اعتبار کرنا  ضروری ہے۔ امام ابو حنیفہ یہاں تک گئے ہیں کہ دارالحرب میں شرعی سزائیں نہیں دی جائیں گی۔ دوسرے فقہاء بھی باعتبارِ مضمون یہی کہتے ہیں۔

à    اس کے علاوہ ’’مصالح ومفاسد‘‘ کے موازنہ کا اصول۔ نیز  رفعِ ضرر کے احکام۔ وغیرہ۔

 

 

 

 



[1]   اس موضوع پر ’’موحد تحریک‘‘ میں ہمارے مضمون ’’الحنيفية السمحة‘‘ کا مطالعہ مفید ہوگا۔

[2]    وَاحْذَرْهُمْ أَن يَفْتِنُوكَ عَن بَعْضِ مَا أَنزَلَ اللَّـهُ إِلَيْكَ (المائدۃ: 49) ’’اور ان سے بچتا رہ کہ تجھے کسی ایسے حکم سے بہکا نہ دیں جو اللہ نے تجھ پر اتارا ہے‘‘۔  (ترجمہ: احمد علی لاہوری)

وَإِن كَادُوا لَيَفْتِنُونَكَ عَنِ الَّذِي أَوْحَيْنَا إِلَيْكَ لِتَفْتَرِيَ عَلَيْنَا غَيْرَهُ ۖ وَإِذًا لَّاتَّخَذُوكَ خَلِيلًا (الاسراء: 73)’’اور بے شک وہ قریب تھے کہ تجھے اس چیز سے بہکا دیں جو ہم نے تجھ پر بذریعہ وحی بھیجی ہے تاکہ تو اس کے سوا ہم پر بہتان باندھنے لگے اور پھر تجھے اپنا دوست بنا لیں‘‘۔ (ترجمہ: احمد علی لاہوری) 

[3]    مصنف ابن ابی شیبۃ: ج 5 ص 549 http://goo.gl/qqKfAA ، واضح رہے کئی ایک فقہاء نے اس پر صحابہ کا اجماع تک نقل کیا ہے۔

البانی نے صحیح ابی داود (رقم الحدیث 3708، ص 833) میں  حدیث کو صحیح کہا، نیز ترمذی اور نسائی سے بھی اس کا حوالہ دیا: http://goo.gl/HtA5hz 

Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
شخصیات اور پارٹیوں کے ساتھ تھوک کا معاملہ نہ کرنا
اصول- منہج
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
پراپیگنڈہ وار propaganda war میں سیگ منٹیشن segmentation (جزء کاری) ناگزیر ہوتی ہے۔ یعنی معاملے کو ای۔۔۔
شرکِ ’’ہیومن ازم‘‘ کی یلغار.. اور امت کا طائفہ منصورہ
اصول- عقيدہ
اداریہ-
حامد كمال الدين
شرکِ ’’ہیومن ازم‘‘ کی یلغار..  اور امت کا طائفہ منصورہ حالات کو سرسری انداز میں پڑھنا... واقعات م۔۔۔
پاکستانی سیاست میں اسلامی سیکٹر کے آگے بڑھنے کے آپشنز
احوال-
اصول- منہج
راہنمائى-
حامد كمال الدين
پاکستانی سیاست میں اسلامی سیکٹر کے آگے بڑھنے کے آپشنز تحریر: حامد کمال الدین میری نظر میں، اس۔۔۔
رسالہ اصول سنت از امام احمد بن حنبلؒ
اصول- عقيدہ
اصول- منہج
ادارہ
رســـــــــــــــــــــالة اصولِ سنت از امام احمد بن حنبل اردو استفاده: حامد كمال الدين امام ۔۔۔
’خطاکار‘ مسلمانوں کو ساتھ چلانے کا چیلنج
اصول- منہج
تنقیحات-
حامد كمال الدين
’خطاکار‘ مسلمانوں کو ساتھ چلانے کا چیلنج سوال: ایک مسئلہ جس میں افراط و تفریط کافی ہو ر۔۔۔
واقعۂ یوسف علیہ السلام کے حوالے سے ابن تیمیہ کی تقریر
تنقیحات-
اصول- منہج
حامد كمال الدين
قارئین کے سوالات واقعۂ  یوسف علیہ السلام کے حوالے سے ابن تیمیہ کی تقریر ہمارے کچھ نہایت عزیز ۔۔۔
’’آسمانی شریعت‘‘ نہ کہ ’سوشل کونٹریکٹ‘۔۔۔ ’’جماعۃ المسلمین‘‘ بہ موازنہ ’ماڈرن سٹیٹ‘
اصول- منہج
حامد كمال الدين
تعلیق 12   [1]   (بسلسلہ: خلافت و ملوکیت، از ابن تیمیہ) ’’آسمانی شریعت‘‘ نہ کہ ’سوشل ۔۔۔
"کتاب".. "اختلاف" کو ختم اور "جماعت" کو قائم کرنے والی
اصول- منہج
حامد كمال الدين
تعلیق 11   [1]   (بسلسلہ: خلافت و ملوکیت، از ابن تیمیہ) ’’کتاب‘‘ ’’اختلاف‘‘ کو خت۔۔۔
اہل سنت کا ’’ایمان‘‘ نہ کہ معتزلہ کا! (بسلسلہ خلافت و ملوکیت
اصول- منہج
حامد كمال الدين
تعلیق 10   [1]    (بسلسلہ: خلافت و ملوکیت، از ابن تیمیہ) اہل سنت کا ’’ایمان‘‘ ن۔۔۔
ديگر آرٹیکلز
Featured-
باطل- جدال
حامد كمال الدين
کچھ ’مسلم‘ معترضینِ اسلام! تحریر: حامد کمال الدین پچھلے دنوں ایک ٹویٹ میرے یہاں سے  ہو۔۔۔
اصول- منہج
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
پراپیگنڈہ وار propaganda war میں سیگ منٹیشن segmentation (جزء کاری) ناگزیر ہوتی ہے۔ یعنی معاملے کو ای۔۔۔
بازيافت-
ادارہ
ہجرت کے پندرہ سو سال بعد! حافظ یوسف سراج کون مانے؟ کسے یقیں آئے؟ وہ چار قدم تاریخِ ان۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
میرے اسلام پسندو! پوزیشنیں بانٹ کر کھیلو؛ اور چال لمبی تحریر: حامد کمال الدین یہ درست ہے کہ۔۔۔
احوال- امت اسلام
ذيشان وڑائچ
ہمارے کچھ نوجوان طیب اردگان کے بارے میں عجیب و غریب الجھن کے شکار ہیں۔ کوئی پوچھ رہا ہے کہ۔۔۔
احوال- امت اسلام
حامد كمال الدين
’’سلفیوں‘‘ کے ساتھ تھوڑی زیادتی ہو رہی ہے!    عرب داعی محترم ابو بصیر طرطوسی کے ساتھ بہت م۔۔۔
اصول- عقيدہ
اداریہ-
حامد كمال الدين
شرکِ ’’ہیومن ازم‘‘ کی یلغار..  اور امت کا طائفہ منصورہ حالات کو سرسری انداز میں پڑھنا... واقعات م۔۔۔
احوال-
اصول- منہج
راہنمائى-
حامد كمال الدين
پاکستانی سیاست میں اسلامی سیکٹر کے آگے بڑھنے کے آپشنز تحریر: حامد کمال الدین میری نظر میں، اس۔۔۔
Featured-
ثقافت- خواتين
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
ادارہ
فیمینسٹ جاہلیت کو جھٹلاتی ایک نسوانی تحریر اجالا عثمان انٹرنیٹ سے لی گئی ایک تحریر جو ہمیں ا۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
"نبوی منہج" سے متعلق ایک مغالطہ کا ازالہ حامد کمال الدین ایک تحریکی عمل سے متعلق "نبوی منہج۔۔۔
متفرق-
ادارہ
پطرس کے ’’کتے‘‘ کے بعد! تحریر: ابو بکر قدوسی مصنف کی اجازت کے بغیر شائع کی جانے والی ای۔۔۔
باطل- فرقے
اعتزال
ادارہ
ایک فیس بکی بھائی نے غامدی صاحب کی جہاد کے موضوع پر ویڈیو کا ایک لنک دے کر درخواست کی تھی کہ میں اس ویڈیو کو ۔۔۔
باطل- فرقے
احوال- وقائع
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین ایک بڑی خلقت واضح واضح اشیاء میں بھی فرق کرنے کی روادار نہیں۔ مگر تعجب ہ۔۔۔
باطل- كشمكش
حامد كمال الدين
تحریر: حامد کمال الدین کہتا ہے میں اوپن ایئر میں کیمروں کے آگے جنازے کی اگلی صف کے اندر ۔۔۔
احوال-
باطل- شخصيات و انجمنيں
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین ’’تنگ نظری‘‘ کی ایک تعریف یہ ہو سکتی ہے کہ: ایک چیز جس کی دین میں گنجائش۔۔۔
جہاد- مزاحمت
احوال- امت اسلام
حامد كمال الدين
کشمیر کےلیے چند کلمات حامد کمال الدین برصغیر پاک و ہند میں ملتِ شرک کے ساتھ ہمارا ایک سٹرٹیجک معرکہ ۔۔۔
ثقافت- رواج و رجحانات
ذيشان وڑائچ
میرے ایک معزز دوست نے ویلینٹائن ڈے کے حوالے سے ایک پوسٹ پیش کی ہے۔ پوسٹ شروع ہوتی ہے اس جملے سے"ویلنٹائن ۔۔۔
بازيافت- تاريخ
ادارہ
علاء الدین خلجی اور رانی پدماوتی تحریر: محمد فہد  حارث دوست نے بتایا کہ بھارت نے ہندو۔۔۔
کیٹیگری
Featured
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
امت اسلام
ذيشان وڑائچ
امت اسلام
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
منہج
حامد كمال الدين
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
ادارہ
تاريخ
ادارہ
سلف و مشاہير
مہتاب عزيز
مزيد ۔۔۔
باطل
جدال
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
ادارہ
فرقےاعتزال
ادارہ
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
خواتين
ادارہ
رواج و رجحانات
ذيشان وڑائچ
معاشرہ
عرفان شكور
مزيد ۔۔۔
جہاد
مزاحمت
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ابن علی
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
ادارہ
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز