عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Monday, December 9,2019 | 1441, رَبيع الثاني 11
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
2014-07 آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
عراقی انقلاب اور آیت اللہ سیستانی کا فتوائےجہاد!
:عنوان

:کیٹیگری
حامد كمال الدين :مصنف

عراقی انقلاب اور آیت اللہ سیستانی کا فتوائےجہاد!

تقی الدین منصور

عراق کے اہلِ تشیع کے امام آیت اللہ سید علی الحسینی سیستانی نے عراقی انقلاب کے خلاف فتویٰ دیا ہے انہوں نے یہ یاد دہانی بھی کروائی ہے کہ نجف اور کربلا میں اہلِ تشیع کےمقدّسات کو بچانے کے لیے ہر  اس شخص کو ہتھیار اٹھا لینے چاہییں جس میں ہتھیار اٹھانے کی استطاعت موجود ہے اور اس پر جہاد فرض ہوگیا ہے۔نہ صرف سیستانی  بلکہ کربلا میں پچھلے چند ہفتوں سے جاری تقریروں میں  شیعہ علماء جہاد فرض ہونےکے فتوے دے رہے ہیں اور انٹرنیٹ پر ان فتووں  کی دھڑا دھڑتشہیر کی جارہی ہے۔ویڈیو بلاگنگ کی ویب سائٹوں پر ان فتووں کی بھرمار  ہے۔ آیت اللہ سیستانی کوئی معمولی درجے کے عالم نہیں ہیں۔یہ عراق کے اہلِ تشیع کے مرجع ہیں۔ یہ عراق کے اہلِ تشیع کے لیے ایسے ہی ہیں جیسے ایرانیوں  کے لیے امام، خمینی   ہیں۔

ویسے تو عراقی انقلابی تحریک پر بہت سے حوالوں سے کہا  لکھا جاسکتا ہے لیکن آیت اللہ سیستانی کا یہ فتویٰ خاصا معنی خیز ہے کیونکہ آیت اللہ سیستانی  نے  ۲۰۰۳ میں عراق پر امریکا  کے حملے پربالکل مختلف موقف اختیار کیا تھا۔ اس وقت انہوں نہ تو  اہلِ تشیع عوام کو ہتھیار اٹھانے کا حکم دیا  اور نہ ہی امریکی قبضے کے بعد اس کے خلاف کوئی تحریک چلانے کا اعلان کیا بلکہ قبضے کے فوراً بعد امریکہ  کی جانب سے بغیر الیکشن کروائے جو عبوری حکومت قائم کی گئی اس حکومت کو  انہوں نے نہ صرف جائز قرار دیا بلکہ مقتدیٰ الصدر کو امریکیوں سے تعاون کرنے اور ان سے لڑائی بند کرنےپر راضی کیا ۔اس پر سی این این نے سرخی لگائی :”عراق کے نئے لیڈروں کو  مذہبی لیڈر کی جانب سے ‘ہاں’مل گئی ۔”

ویسے تو جہاد ان کفار کے خلاف فرض ہوتا ہے جو مسلمانوں کے کسی ملک پر حملہ کردیں لیکن یہ بات خاصی حیران کن ہے کہ دس سال کے لگ بھگ عراق پر   امریکی قبضے کے دوران یہ فرض نہیں ہوسکا بلکہ اس قبضےتلے عراق کے تیل اور معدنیات کو بے دھڑک لوٹا گیا  اوریہ سب دیکھنےکے باوجود سیستانی بلا جھجک امریکی قبضے کے خلاف مزاحمت کو دہشت گردی قرار دیتے رہے۔  جہاد کی اس انوکھی تعریف کو شائد ان  کے موقف کے حامی ہی واضح کرسکیں ،اس کا ویسےسمجھ میں آناخاصامشکل ہے۔

یہ تو ہوئی ایک بات۔ دوسری طرف جس چیز سے اہلِ تشیع کو ہتھیار اٹھانے پر ابھاراجارہا ہے وہ  نجف اور کربلا میں موجود مقدّسات کا تحفظ ہے۔  یہ ایک حقیقت ہے کہ اہلِ تشیع کے ائمہ اہلِ سنت کےبھی بزرگ ہیں البتہ یہ ایک افسوس ناک حقیقت ہے کہ اہلِ سنت کے بزرگوں کے بارے میں ایسا رویہ نہیں برتا جاتا۔یہ بات شام میں صحابۂ کرام  ؓ  کی قبروں کے ساتھ فرقہ وارانہ تنظیموں کی ملیشیاؤں کی بدسلوکی سے ثابت ہوچکی ہےکہ اہلِ سنت کے یہاں قابلِ احترام ہستیوں کی قبور کے ساتھ ان فرقہ پرست  ملیشیاؤں کا کیا رویہ ہے۔ یہ کیسے ممکن ہے کہ اہلِ سنت اپنے ہاتھوں اپنی ہی قابلِ احترام ہستیوں کے ساتھ بدسلوکی کریں ؟ اہلِ سنت میں سے کسے اہلِ بیت اور آلِ رسول ﷺ سے محبت نہیں !کیا کوئی سنّی العقیدہ مسلمان حضرت حسینؓ  اور حضرت علیؓ کی قبروں کو اکھاڑناچاہے گا؟یا پھر اس شور شرابےکی حقیقت یہ ہے کہ یہ عوام کو لڑائی پر ابھارنےاور نوری المالکی کی فرقہ پرست حکومت بچانے کے لیے رچایا جانے والا ایک ڈھونگ  ہے۔ حیرانی کی بات ہے کہ  امریکیوں  سے تو ان مقامات کو کوئی خظرہ لاحق نہیں ہواحالانکہ قبضے کے بعد امریکی سرپرستی میں لوٹ مار کا سلسلہ چل رہا تھا لیکن  نوری المالکی کی حکومت  کے خلاف تحریک سے  نہ صرف “جہاد “لازم ہو گیا بلکہ ناواقف عوام کو مقدّسات کے نام پر ورغلایا جانا بھی جائز ہوگیا۔

پھر اسی پر بس نہیں ۔ نیکی اور پوچھ پوچھ!امریکہ بھی کارِ ثواب سمجھتے ہوئے بحری بیڑوں کے ساتھ  جنگ میں کود پڑا ہے۔ شائد “جہاد “کے اجر سے اوباما بھی محروم نہیں رہنا چاہتا۔کوئی اس ملین ڈالر کے سوال کا جواب دے کہ امریکی فوج   نوری المالکی کی دُہائیوں پر اسلام اور مسلمانوں کی کس خدمت کے لیے ٹیکس پیئر زمنی سےبمباری کے لیے آموجود ہوئی ہے؟

اگر کہیں نہاں خانۂ دِل میں یہ کھٹکا ہو کہ ایسی باتوں سے فرقہ واریت کا عفریت مزید طاقتور ہوگا تو اس حوالے سےدو باتیں بالکل واضح ہیں۔ایک تو یہ کہ یہ وہ حقائق ہیں جو نہ جانے کن وجوہات کی بنا پر اخبارات میں جگہ نہیں بنا پاتے۔شائد اس کا ایک سبب فرقہ پرست لابی ہے۔ چنانچہ انہیں بطور ایک خبر لیجیے۔ دوسری بات یہ ہے کہ اہلِ سنت اس میں متأثرہ فریق ہیں۔ آغازاور پہل  کرنے والا گروہ نہیں ہیں۔ لہٰذا فرقہ واریت کا دوش دینے سے پہلے  اس بات کا تعین کرلینا چاہیے کہ یہ کس کےعمل کا ردِّعمل ہے ۔ ایسی صورتِ حال کا صحیح حل یہی ہوگا کہ اہلِ تشیع میں سے سمجھدار لوگ فرقہ پرست مولویوں اور حکومتوں کو disownکرکے اتحاد بین المسلمین کا ثبوت دیں ورنہ ان کی خاموشی سےمعاملہ اور زیادہ بگڑے کا اور اس کی تمام تر ذمہ داری انہیں پر عائد ہوگی۔

 

Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
ديگر آرٹیکلز
بازيافت- سلف و مشاہير
Featured-
شيخ الاسلام امام ابن تيمية
امارتِ حضرت معاویہؓ، مابین خلافت و ملوکیت نوٹ: تحریر کا عنوان ہمارا دیا ہوا ہے۔ از کلام ابن ت۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
سنت کے ساتھ بدعت کا ایک گونہ خلط... اور "فقہِ موازنات" حامد کمال الدین مغرب کے اٹھائے ہوئے ا۔۔۔
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
Featured-
حامد كمال الدين
"انسان دیوتا" کے حق میں پاپ! حامد کمال الدین دین میں طعن کر لو، جیسے مرضی دین کے ثوابت ۔۔۔
Featured-
بازيافت-
حامد كمال الدين
تاریخِ خلفاء سے متعلق نزاعات.. اور مدرسہ اہل الأثر حامد کمال الدین "تاریخِ خلفاء" کے تعلق س۔۔۔
Featured-
باطل- اديان
حامد كمال الدين
ریاستی حقوق؛ قادیانیوں کا مسئلہ فی الحال آئین کے ساتھ حامد کمال الدین اعتراض: اسلامی۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
لفظ  "شریعت" اور "فقہ" ہم استعمال interchangeable    ہو سکتے ہیں ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
ماتریدی-سلفی نزاع، یہاں کے مسلمانوں کو ایک نئی آزمائش میں ڈالنا حامد کمال الدین ایک اشع۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
منہجِ سلف کے احیاء کی تحریک میں ’مارٹن لوتھر‘ تلاش کرنا! حامد کمال الدین کیا کوئی وجہ ہے کہ۔۔۔
Featured-
احوال-
حامد كمال الدين
      کشمیر کاز، قومی استحکام، پختہ اندازِ فکر کی ضرورت حامد ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
مشكوة وحى- علوم حديث
حامد كمال الدين
اناڑی ہاتھ درایت! صحیح مسلم کی ایک حدیث پر اٹھائے گئے اشکال کے ضمن میں حامد کمال الدین ۔۔۔
راہنمائى-
حامد كمال الدين
(فقه) عشرۃ ذوالحج اور ایامِ تشریق میں کہی جانے والی تکبیرات ابن قدامہ مقدسی رحمہ اللہ کے متن سے۔۔۔
تنقیحات-
ثقافت- معاشرہ
حامد كمال الدين
کافروں سے مختلف نظر آنے کا مسئلہ، دار الکفر، ابن تیمیہ اور اپنے جدت پسند حامد کمال الدین دا۔۔۔
اصول- منہج
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
اصول- عقيدہ
حامد كمال الدين
ایک ٹھیٹ عقائدی تربیت ہماری سب سے بڑی ضرورت حامد کمال الدین اسے فی الحال آپ ایک ناقص استقر۔۔۔
ثقافت- خواتين
ثقافت-
حامد كمال الدين
"دردِ وفا".. ناول سے اقداری مسائل تک حامد کمال الدین کوئی پچیس تیس سال بعد ناول نام کی چیز ہاتھ لگی۔ وہ۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
امارات کا سعودی عرب کو یمن میں بیچ منجدھار چھوڑنے کا فیصلہ حامد کمال الدین شاہ سلمان کے شروع دنوں میں ی۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
پاک افغان معاملہ.. تماش بینی نہیں سنجیدگی حامد کمال الدین وہ طعنے جو میرے کچھ مخلص بھائی او۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
کلچرل وارداتیں اور ہماری عدم فراغت! حامد کمال الدین ظالمو! نہ صرف یہاں کا منبر و محراب ۔۔۔
احوال-
ادارہ
تحریر:   تحریم افروز یوں تو امریکا سے مسلمانوں  کے معاملے میں کبھی خیر کی توقع رہی ہی&۔۔۔
کیٹیگری
Featured
شيخ الاسلام امام ابن تيمية
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
سلف و مشاہير
شيخ الاسلام امام ابن تيمية
حامد كمال الدين
ادارہ
مزيد ۔۔۔
باطل
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
اديان
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
معاشرہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
خواتين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
جہاد
مزاحمت
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم حديث
حامد كمال الدين
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز