عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Tuesday, September 24,2019 | 1441, مُحَرَّم 24
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
2010-10 آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
ہندو دہشت گردی کا ظہور
:عنوان

:کیٹیگری
ادارہ :مصنف

 
اخبار وآراء

ہندو دہشت گردی کا ظہور
ابو زید

   
ذرائع ابلاغ نے اپنی دانست میں یہ طے کر رکھا تھا کہ دہشت گردی پر خالص مسلمانوں کی اجارہ داری ہے۔ لیکن بھارت میں حالات کچھ ایسے پیدا ہو گئے کہ ہندو دہشت گردی کا اعتراف میڈیا کو کرنا ہی پڑا۔ در اصل بھارت میں دہشت گردی کی بنیاد رکھی ہی ہندو انتہا پسند تنظیم ہندو مہاسبھا اور آر ایس ایس نے تھی ۔ آزادی کے تقریباً فوراً ہی بعد اسی آر ایس ایس کے ایک کارکن ناتھو رام گوڈسے نے گاندھی کو اس بنا پر قتل کر دیا کہ گاندھی نے بھارت کو اتنا ہندو نہیں بنایا جتنا کہ وہ چاہتاتھا۔ اب جبکہ بھار ت میں’ مسلم دہشت گردی‘ کا غلغلہ تھا، مسجداور درگاہ پر بھی حملے کوبھی بنا سوچے سمجھے مسلمان دہشت گردوں کے کھاتے میں ڈالا جارہا تھا، ہندو دہشت گردی کا انکشاف ہوگیا اور بھارتی میڈیا انگشت بدنداں رہ گیا۔بات کچھ اس طرح سے ظاہر ہوگئی کہ چھپانے سے نہ چھپ سکی۔ پھر بھارت کے اندر بی جے پی اور کانگریس کے درمیان مفادات کی سیاست نے ہندو دہشت گردی کو پوری طرح سے عیاں کردیا۔
فی الحال ہندو دہشت گردوں کے کھاتے میں کئی واقعات آتے ہیں جن میں 2006 مالیگاؤ بلاسٹ، 2007 میں مکہ مسجد حیدر آباد میں دھماکہ، 2007میں اجمیر درگاہ میں دھماکہ اور2007 میں بھارت پاکستان کے درمیان چلنے والی سمجھوتہ ایکسپریس ریل گاڑی میں دھماکے سے ساٹھ لوگ مارے گئے تھے۔ واضح ہو کہ ان سب واقعات کے لئے ابتدائی طور پر بھارتی حکومت اور اخبارات نے مسلم دہشت گردی کو ہی ذمہ دار ٹھہرایا تھا۔لیکن اب حقیقت کھل چکی ہے۔
ہندو دہشت گردی کا پردہ سب سے پہلے ممبئی کے اینٹی ٹیررسٹ سکواڈ کے چیف ہیمنت کرکرے نے فاش کیا تھا۔ لیکن 2008 میں ممبئی کے ہوٹل تاج محل کے محاصرے میں پراسرار حالات میں ہیمنت کرکرے مارے گئے۔ کئی دانشوروں کے خیال ہے کہ یہ کام ہندو دہشت گردی کے لئے کام کرنے والوں کی ہی کارروائی ہے۔ اس سے یہ بھی پتہ چلتا ہے کہ ہندو دہشت گردی کی جڑیں بھارت کی انتظامیہ میں کتنی گہری ہیں۔
کچھ ہی عرصے پہلے بھارت کے وزیر داخلہ نے اپنے ایک بیان میں ہندو دہشت گردی کے لئے "Saffron Terrorsim" کی اصطلاح استعمال کی تھی جس کی وجہ سے بھارتی پارلیمنٹ میں کافی ہنگامہ کھڑا ہوا تھا۔
ہندو قومیت پرستی کی تحریک ہندوتوا"Hindutva" کے علمبردار اپنے ہاتھ سے ایک زبردست ابلاغی ہتھیار کے پھسلنے سے کافی فکر مند ہیں۔ ہندوتوا کا مسئلہ صرف یہ ہے کہ وہ ہندوستان کو اتنا ہندو نہیں بنا سکے جتنا کہ وہ بنانا چاہتے تھے اگرچہ کہ ان کو بھارتی حکومت کی طرف سے ایسی کوئی خصوصی رکاوٹ کا سامنا بھی نہیں کرنا پڑا۔انہیں ابتدائی دور سے ہی نفرت کو بنیاد بناکر عوام کو ہندتوا پر اکھٹا کرنے کے بھی مواقع میسر آئے۔ ان کی سمجھ میں شاید یہ بات نہیں آئی کہ آج کے دور میں نظریاتی قوت کے بغیر گاڑی زیادہ نہیں چلتی۔
حوالہ جات
Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
ديگر آرٹیکلز
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
Featured-
حامد كمال الدين
"انسان دیوتا" کے حق میں پاپ! حامد کمال الدین دین میں طعن کر لو، جیسے مرضی دین کے ثوابت ۔۔۔
Featured-
بازيافت-
حامد كمال الدين
تاریخِ خلفاء سے متعلق نزاعات.. اور مدرسہ اہل الأثر حامد کمال الدین "تاریخِ خلفاء" کے تعلق س۔۔۔
Featured-
باطل- اديان
حامد كمال الدين
ریاستی حقوق؛ قادیانیوں کا مسئلہ فی الحال آئین کے ساتھ حامد کمال الدین اعتراض: اسلامی۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
لفظ  "شریعت" اور "فقہ" ہم استعمال interchangeable    ہو سکتے ہیں ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
ماتریدی-سلفی نزاع، یہاں کے مسلمانوں کو ایک نئی آزمائش میں ڈالنا حامد کمال الدین ایک اشع۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
حامد كمال الدين
منہجِ سلف کے احیاء کی تحریک میں ’مارٹن لوتھر‘ تلاش کرنا! حامد کمال الدین کیا کوئی وجہ ہے کہ۔۔۔
Featured-
احوال-
حامد كمال الدين
      کشمیر کاز، قومی استحکام، پختہ اندازِ فکر کی ضرورت حامد ۔۔۔
تنقیحات-
Featured-
مشكوة وحى- علوم حديث
حامد كمال الدين
اناڑی ہاتھ درایت! صحیح مسلم کی ایک حدیث پر اٹھائے گئے اشکال کے ضمن میں حامد کمال الدین ۔۔۔
راہنمائى-
حامد كمال الدين
(فقه) عشرۃ ذوالحج اور ایامِ تشریق میں کہی جانے والی تکبیرات ابن قدامہ مقدسی رحمہ اللہ کے متن سے۔۔۔
تنقیحات-
ثقافت- معاشرہ
حامد كمال الدين
کافروں سے مختلف نظر آنے کا مسئلہ، دار الکفر، ابن تیمیہ اور اپنے جدت پسند حامد کمال الدین دا۔۔۔
اصول- منہج
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
اصول- عقيدہ
حامد كمال الدين
ایک ٹھیٹ عقائدی تربیت ہماری سب سے بڑی ضرورت حامد کمال الدین اسے فی الحال آپ ایک ناقص استقر۔۔۔
ثقافت- خواتين
ثقافت-
حامد كمال الدين
"دردِ وفا".. ناول سے اقداری مسائل تک حامد کمال الدین کوئی پچیس تیس سال بعد ناول نام کی چیز ہاتھ لگی۔ وہ۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
امارات کا سعودی عرب کو یمن میں بیچ منجدھار چھوڑنے کا فیصلہ حامد کمال الدین شاہ سلمان کے شروع دنوں میں ی۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
پاک افغان معاملہ.. تماش بینی نہیں سنجیدگی حامد کمال الدین وہ طعنے جو میرے کچھ مخلص بھائی او۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
کلچرل وارداتیں اور ہماری عدم فراغت! حامد کمال الدین ظالمو! نہ صرف یہاں کا منبر و محراب ۔۔۔
احوال-
ادارہ
تحریر:   تحریم افروز یوں تو امریکا سے مسلمانوں  کے معاملے میں کبھی خیر کی توقع رہی ہی&۔۔۔
احوال-
ادارہ
تحریر: فلک شیر کچھ عرصے سے فلسطین کے مسئلے کے حل کے لیے امریکی صدر ٹرمپ کی "صدی کی ڈیل" کا شہرہ ہے۔دو سال ۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
حامد کمال الدین بعض مباحث بروقت بیان نہ ہوں تو پڑھنے پڑھانے والوں کے حق میں ایک زیادتی رہ جاتی ہے۔ جذبہ۔۔۔
کیٹیگری
Featured
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
حامد كمال الدين
ادارہ
تاريخ
ادارہ
مزيد ۔۔۔
باطل
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
اديان
حامد كمال الدين
فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
معاشرہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
خواتين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
جہاد
مزاحمت
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم حديث
حامد كمال الدين
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز