عربى |English | اردو 
Surah Fatiha :نئى آڈيو
 
Friday, June 5,2020 | 1441, شَوّال 12
رشتے رابطہ آڈيوز ويڈيوز پوسٹر ہينڈ بل پمفلٹ کتب
شماره جات
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
  
 
تازہ ترين فیچر
Skip Navigation Links
نئى تحريريں
رہنمائى
نام
اى ميل
پیغام
2015-01 آرٹیکلز
 
مقبول ترین آرٹیکلز
بی بی سی سے اخلاقی جرأت رکھنے کا تقاضا!
:عنوان

آئیے، اپنی قوم کو جگائیے۔ اپنے حریف سے گلہ کرنے کی بجائے اس کو بےنقاب کیجئے۔ اس کی اصل تصویر سامنے لائیے۔ اور اس کی اخلاقی جرأت اور اس کی ’غیرجانبداری‘ کا پول کھولئے۔ اپنے تہذیبی وجود کےلیے اٹھ کھڑے ہو جائیے؛

. باطل :کیٹیگری
ابن علی :مصنف

 بی بی سی سے اخلاقی جرأت رکھنے کا تقاضا!

ابن علی

عرصۂ دراز سے، بی بی سی ہمارے مسلم معاشروں کو ’ٹیوشن‘ پڑھانے کی کوشش کر رہا ہے۔ لیکن اتنی جرأت نہیں کہ تسلیم کرے کہ وہ یہاں ایک مخصوص الحادی مذہب کا داعی ہے اور لوگوں کا دین تبدیل کرنے کےلیے سرگرم۔

تعجب ہمیں اس بات پر نہیں کہ ابلاغ کا ایک نہایت مقبول عالمی ادارہ ہماری تہذیبی ساخت کرنے میں صبح شام مصروف ہے... جنگ ہے تو اس پر واویلا کیسا! یہاں دنیا میں ہر کسی کا ایک عقیدہ ہے۔ ہر کسی کا کوئی دین ہے، خواہ وہ اسے ’’دین‘‘ کا نام دے یا اس پر کوئی اور لیبل لگا لے۔ ہر کوئی اپنے دین کا تحفظ بھی کرتا ہے۔ اس کےلیے بےچین بھی ہوتا ہے۔ اس پر حرف آئے تو تڑپ بھی اٹھتا ہے۔ اس کو فتح دلانے کےلیے سرگرم بھی ہوتا ہے۔ ظاہر ہے جب کسی ایک دین، یا ایک طرز حیات کو غالب کیا جائے گا تو وہ کسی دوسرے دین یا دوسرے طرز حیات کے مغلوب ہونے کی قیمت پر ہوگا۔ یعنی کسی ایک طرز حیات کو اونچا کرنا ہے تو اس کے مقابلے پر کسی دوسرے طرز حیات کو نیچا بھی کرنا ہے۔

رہن سہن کی بابت کوئی ’دھرم‘ رکھنا اور اس کے مدمقابل کسی عقیدہ یا کسی تہذیب پر حملہ آور ہونا کیا بی بی سی کا حق نہیں؟ یہ چیز بی بی سی کے ہی حق میں آخر ممنوع کیوں؟ بی بی سی کے ہونہار کارندے اپنے اس عقیدے کےلیے یہ سب دوڑ دھوپ کرتے ہیں، یا ’جاب‘ کا حق ادا کرتے ہوئے، آپ کو اس سے بھی کیا غرض؟ ’’پیسہ‘‘ اور ’’اچھی تنخواہ‘‘ آج بذات خود ایک عقیدہ ہے، اس پر بھی بحث کی ضرورت؟

مگر یہ تو مانا جائے کہ یہ ایک جنگ ہے۔ اور یہاں کوئی عقیدہ بول رہا ہے!

پس بی بی سی کے اِس ’’وار‘‘ کرنے پر تو ہمیں واقعی کوئی تعجب کیسا؟ یہ ادارہ ہماری تہذیب پر، جوکہ ہمارے لیے دین ہے، بڑے کاری وار کر رہا ہے، اور جوکہ ایک کھلی حقیقت ہے، تو بھی ہم اس پر گلہ بہرحال نہیں کریں گے۔ ایسا واویلا ’کھیل‘ کے اصولوں کے منافی ہے۔ اسے مردانہ وار ہی سہنا ہوگا۔ تحمل اور بردباری مردانگی کی علامت ہے۔ بی بی سی سو بار آئے۔ ہم سے جو بن پائے وہ ہم کریں گے۔ اور اپنی قوم کو کھڑا کریں گےجس کا اگر صرف عشرِ عشیر اٹھ کھڑا ہو تو ان شاء اللہ یہ میدان ہمارا ہے۔ ہار جیت کوئی نئی بات نہیں۔ یہاں ہر کسی کو زور لگانا ہے۔  ہاں یہ کہنے میں حرج نہیں کہ بی بی سی اپنے اندر اخلاقی جرأت پیدا کرے۔ جب وہ کھل کر ہماری تہذیب کے خلاف برسر جنگ ہے تو پھر اس پر ’غیر جانبدار‘ بننے کی کوشش نہ کرے۔ ہمت سے کام لے۔ یہ ’سپورٹس مین سپرٹ‘ بہرحال نہیں ہے! کھل کر کہے کہ وہ یہاں ہمارے دین اور ہماری تہذیب کو مٹانے کے درپے اور اپنے دین اور اپنی تہذیب کے جھنڈے گاڑ جانے کے مشن پر ہے۔ دشمن میں بھی بہادری کی صفت لوگوں کے یہاں پسند کی جاتی ہے!

آپ کہیں گے، بی بی سی کا چھپ کر وار کرنا ہی تو اصل جنگ ہے!  وہ اگرچہرے سے پردہ ہٹا دے تو پھر کیا جنگ ہے! منافقت بھی تو جنگ کا ہی ایک طریقہ ہے اور بڑی دیر سے آزمودہ چلا آتا ہے۔ یہ ایسا بےفائدہ ہوتا تو دنیا میں متروک نہ ہو چکا ہوتا! پس اس پر بھی گلہ کیسا! سچ ہے، جس دشمن سے آج ہمیں واسطہ ہے، اگر ہم اس سے واقف ہیں تو واقعی اس پر گلہ کیسا!  سامنے سے آنا دل گردے کا کام ہے، جبکہ دوستی کے پردے میں وار کر جانا اور خیرخواہ کے بھیس میں واردات کہیں آسان اور مجرب! شر کے باوا ابلیس کی سنت! اپنی ایک ’سنت‘ ادا کرنے سے آخر آپ کسی کو کیسے روک سکتے ہیں! وہ یہ تسلیم کرے کہ وہ یہاں پر باقاعدہ ایک دین اور تہذیب کا داعی ہے، بلکہ ایسے دین اور ایسی تہذیب کا داعی جس کے ساتھ عالم اسلام اپنی تاریخ کی خوفناک ترین جنگ لڑ رہا ہے؟! کیا آپ کو معلوم ہے، بی بی سی کا یہ بات تسلیم کر لینا اُس کےلیے میدانِ جنگ سے باہر ہوجانے کے مترادف ہے؟ آپ اس کا اتنا بڑا نقصان کیوں کرا دینا چاہتے ہیں؟

جب ہم یہ سب مان رہے ہیں... تو پھر ہم مخاطِب کس سے ہیں؟

ویسے... کیا واقعتاً دنیا میں کوئی نہیں جس کے ساتھ یہ بات اٹھائی جائے؟؟!

ہم بھی اتنے سادہ نہیں۔ ہمارا مخاطَب دراصل ہماری اپنی قوم کے وہ لوگ ہیں، جن کا خیال ہے بی بی سی ایسے ذرائع ابلاغ کسی اخلاقی قاعدے پر کھڑے ہیں! کیا اپنی قوم کو بتانا اور جگانا تو ہمارا حق ہے یا نہیں... کہ آج اسے کس قسم کے حریف سے واسطہ ہے؟ جس کا سب سے بڑا حربہ، تاریخ کی اس بےرحم ترین جنگ میں اُس کی یہ ’’غیرجانبداری‘‘ ہی ہے۔ ہم کہتے ہیں، اُس کی اِس ’’غیرجانبداری‘‘ کا پردہ ہی چاک کردو، اِس ساری جنگ کا پانسہ خودبخود پلٹ جاتا ہے۔

تو پھر آئیے، اپنی قوم کو جگائیے۔ اپنے حریف سے گلہ کرنے کی بجائے اس کو بےنقاب کیجئے۔ اس کی اصل تصویر سامنے لائیے۔ اور اس کی اخلاقی جرأت اور اس کی ’غیرجانبداری‘ کا پول کھولئے۔ اپنے تہذیبی وجود کےلیے اٹھ کھڑے ہو جائیے؛ کوئی آپ کےلیے نہیں اٹھےگا۔ اور سب سے پہلے خود آنکھیں کھولیے، کہ آپ کس دنیا میں بس رہے ہیں، اور یہاں آپ کے ساتھ ہو کیا رہا ہے۔ کیسے کیسے بھیڑیے آج آپ کو وعظ کرنے میں لگے ہیں۔

ایسے بےشمار ادارے یقیناً بہت شروع سے ہماری تہذیبی ساخت کرنے کا ’فرض‘ پورا کرتے آ رہے ہیں۔ لیکن اب کچھ عرصے سے تو یہ بےصبرے ہو چکے۔ سیدھاسیدھا ’وعظ‘ ہی شروع کردیا ہے!

ایقاظ میں اس پر وقتاًفوقتاً توجہ دلائی جاتی ہے، اور ہماری خواہش ہوتی ہے کہ ہمارا قاری قوم کو شعور دینے کی  مہم کا علم اٹھائے۔[i]

ابھی حال ہی میں بی بی سی ایک رپورٹ لاتا ہے جس کا عنوان دیا جاتا ہے: [ii]

’’خواتین کے لیے جسم ڈھانپنا کب لازمی ہوا‘‘

’لباس‘ میں قوموں کے اطوار پر، بہت کچھ پیشہ ورانہ انداز میں ہی آیا ہے۔ اتنی سی جانبداری کسی بھی تہذیبی نظریے رکھنے والے انسان کی مجبوری ہے۔ یہ بھی تسلیم کیا گیا کہ: ہند میں ’’مسلم خواتین عام طور پر خود کو اچھی طرح ڈھانپ کر رکھتی تھیں اور منقسم کپڑے پہنتی تھیں‘‘۔ ہند میں ساڑھی وغیرہ ایسے لباس کی جگہ پر ’’منقسم لباس‘‘ کا چلن ہونا ایک طرح سے ہند میں اسلام کی آمد سے جوڑا گیا۔ یہ سب ’’وقائع‘‘ کی باتیں ہیں۔ اس پر ہمیں بات نہیں کرنی۔ لیکن آخر میں لباس پر ایک زریں ’اصول‘ جاری کر دیا جاتا ہے، نیز حیادار لباس پر زور دینے والوں کی ایک ’جہالت‘ کا ذکر بھی:

’’اور کچھ لوگ لباس اور ریپ کے درمیان تعلق جوڑنے کی کوشش کرتے ہیں۔ یہ لوگ یہ نہیں سمجھتے کہ ریپ کی وجہ عورت کا لباس نہیں بلکہ یہ بعض مردوں کی غلط سوچ کا نتیجہ ہے‘‘۔

ہر شخص جانتا ہے، اسلامی معاشرت ’’لباس‘‘ کے مسئلہ پر کن خدوخال پر کھڑی ہے۔ ’’عورت‘‘ کا حیادار لباس پہننا اور اپنی کم لباسی کے ذریعے معاشرے میں فتنہ و مفاسد کا باعث نہ بننا ہمارے دین کا ایک بہت بڑا مبحث ہے۔ یہاں، ایک جملے میں اس کو حرفِ غلط قرار دے دیا جاتا ہے۔ ظاہر ہے، یہ تسلیم نہیں کیا جائے گا کہ ایک لچر تہذیب کا نمائندہ ادارہ ہمیں اپنا دین پڑھا رہا ہے۔ صرف اپنا دین نہیں پڑھا رہا، ہمارے دین کے کچھ بنیادی ترین اسباق کو ’جہالت‘ ٹھہرا رہا ہے۔ البتہ معروضیت اور غیرجانبداری بدستور قائم ہے! اُس کے یہاں نہیں، ہماری قوم کے خیال میں!!! کتنے لوگ ہیں جو یہ جان پائیں گے کہ یہ ابلاغی عمل واضح واضح، ہمارے اذہان کی لوح پر ہمارے دین کی تحریر مٹا کر اپنے دین (جدید الحاد و بےحیائی) کی تحریر لکھ رہا ہے، اور ہزارہا طریقے سے اُس کو گہرا کر رہا ہے؟

اور ویسے ’تحقیق‘ کا بھی حق ادا کردیا ہے:

’’یہ لوگ یہ نہیں سمجھتے کہ ریپ کی وجہ عورت کا لباس نہیں بلکہ یہ بعض مردوں کی غلط سوچ کا نتیجہ ہے‘‘۔

جی ہاں بی بی سی! یہ لوگ نہیں سمجھتے، روپیہ پیسہ آپ محفوظ کر کے رکھیں یا کھلا چھوڑ دیں، چوری ہونے سے اس بات کا کوئی تعلق نہیں۔ کل مسئلہ ’چور‘ کی ذہنیت سے ہے!!!

کیا بی بی سی ایسے کسی تجربے کا مشورہ دے گا؟

ظاہر ہے، نہیں دے گا۔ کیونکہ پیسہ سنبھالنے کی چیز ہے.. اور حیاء......؟!!



[i]   بصورتِ اتفاق، انٹرنیٹ قارئین سے ہماری اِس  تحریر کو عام کرنے کی اپیل ہے۔

[ii]   بی بی سی کی اس رپورٹ کا ویب لنک:  http://goo.gl/x2n8SP

 

Print Article
Tagged
متعلقہ آرٹیکلز
شام میں حضرت عمر بن عبدالعزیزؒ کے مدفن کی بےحرمتی کا افسوسناک واقعہ اغلباً صحیح ہے
Featured-
احوال- وقائع
باطل- فرقے
حامد كمال الدين
شام میں حضرت عمر بن عبدالعزیزؒ کے مدفن کی بےحرمتی کا افسوسناک واقعہ اغلباً صحیح ہے حامد کمال الد۔۔۔
"المورد".. ایک متوازی دین
باطل- فرقے
Featured-
حامد كمال الدين
"المورد".. ایک متوازی دین حامد کمال الدین اصحاب المورد کے ہاں "کتاب" سے اگر عین وہ مراد نہیں۔۔۔
شیعہ سٹوڈنٹ کے ساتھ دوستی، شادی بیاہ
باطل- فرقے
حامد كمال الدين
شیعہ سٹوڈنٹ کے ساتھ دوستی، شادی بیاہ   سوال: السلام علیکم سر۔ یونیورسٹی میں ا۔۔۔
"انسان دیوتا" کے حق میں پاپ!
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
"انسان دیوتا" کے حق میں پاپ! حامد کمال الدین دین میں طعن کر لو، جیسے مرضی دین کے ثوابت ۔۔۔
ریاستی حقوق؛ قادیانیوں کا مسئلہ فی الحال آئین کے ساتھ
باطل- اديان
حامد كمال الدين
ریاستی حقوق؛ قادیانیوں کا مسئلہ فی الحال آئین کے ساتھ حامد کمال الدین اعتراض: اسلامی۔۔۔
ایک ٹھیٹ عقائدی تربیت ہماری سب سے بڑی ضرورت
اصول- منہج
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
اصول- عقيدہ
حامد كمال الدين
ایک ٹھیٹ عقائدی تربیت ہماری سب سے بڑی ضرورت حامد کمال الدین اسے فی الحال آپ ایک ناقص استقر۔۔۔
کچھ مسلم معترضینِ اسلام!
باطل- جدال
حامد كمال الدين
کچھ ’مسلم‘ معترضینِ اسلام! تحریر: حامد کمال الدین پچھلے دنوں ایک ٹویٹ میرے یہاں سے  ہو۔۔۔
فیمینسٹ جاہلیت کو جھٹلاتی ایک نسوانی تحریر
ثقافت- خواتين
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
ادارہ
فیمینسٹ جاہلیت کو جھٹلاتی ایک نسوانی تحریر اجالا عثمان انٹرنیٹ سے لی گئی ایک تحریر جو ہمیں ا۔۔۔
غامدى اور عصر حاضر ميں قتال
باطل- فرقے
اعتزال
ادارہ
ایک فیس بکی بھائی نے غامدی صاحب کی جہاد کے موضوع پر ویڈیو کا ایک لنک دے کر درخواست کی تھی کہ میں اس ویڈیو کو ۔۔۔
ديگر آرٹیکلز
Featured-
احوال- وقائع
باطل- فرقے
حامد كمال الدين
شام میں حضرت عمر بن عبدالعزیزؒ کے مدفن کی بےحرمتی کا افسوسناک واقعہ اغلباً صحیح ہے حامد کمال الد۔۔۔
جہاد- دعوت
عرفان شكور
كامياب داعيوں كا منہج از :ڈاكٹرمحمد بن ابراہيم الحمد جامعہ قصيم (سعودى عرب) ضرورى نہيں۔۔۔۔ ·   ضرور۔۔۔
باطل- فرقے
Featured-
حامد كمال الدين
"المورد".. ایک متوازی دین حامد کمال الدین اصحاب المورد کے ہاں "کتاب" سے اگر عین وہ مراد نہیں۔۔۔
جہاد-
احوال-
Featured-
حامد كمال الدين
’دوحہ‘ اہل اسلام کی ’جنیوا‘ سے بڑی جیت، ان شاء اللہ حامد کمال الدین ہمیں ’’زیادہ خوش نہ ہونے۔۔۔
Featured-
حامد كمال الدين
اسلامی تحریک کا ’’مابعد تنظیمات‘‘ عہد؟ Post-organizations Era of the Islamic Movement یہ عن۔۔۔
حامد كمال الدين
باطل فرقوں کےلیے گنجائش پیدا کرواتے، دانش کے کچھ مغالطے   کچھ علمی چیزیں مانند (’’لازم المذھب لیس بمذھب‘۔۔۔
باطل- فرقے
حامد كمال الدين
شیعہ سٹوڈنٹ کے ساتھ دوستی، شادی بیاہ   سوال: السلام علیکم سر۔ یونیورسٹی میں ا۔۔۔
بازيافت- سلف و مشاہير
شيخ الاسلام امام ابن تيمية
امارتِ حضرت معاویہؓ، مابین خلافت و ملوکیت نوٹ: تحریر کا عنوان ہمارا دیا ہوا ہے۔ از کلام ابن ت۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
سنت کے ساتھ بدعت کا ایک گونہ خلط... اور "فقہِ موازنات" حامد کمال الدین مغرب کے اٹھائے ہوئے ا۔۔۔
باطل- فكرى وسماجى مذاہب
حامد كمال الدين
"انسان دیوتا" کے حق میں پاپ! حامد کمال الدین دین میں طعن کر لو، جیسے مرضی دین کے ثوابت ۔۔۔
بازيافت-
حامد كمال الدين
تاریخِ خلفاء سے متعلق نزاعات.. اور مدرسہ اہل الأثر حامد کمال الدین "تاریخِ خلفاء" کے تعلق س۔۔۔
باطل- اديان
حامد كمال الدين
ریاستی حقوق؛ قادیانیوں کا مسئلہ فی الحال آئین کے ساتھ حامد کمال الدین اعتراض: اسلامی۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
لفظ  "شریعت" اور "فقہ" ہم استعمال interchangeable    ہو سکتے ہیں ۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
ماتریدی-سلفی نزاع، یہاں کے مسلمانوں کو ایک نئی آزمائش میں ڈالنا حامد کمال الدین ایک اشع۔۔۔
تنقیحات-
حامد كمال الدين
منہجِ سلف کے احیاء کی تحریک میں ’مارٹن لوتھر‘ تلاش کرنا! حامد کمال الدین کیا کوئی وجہ ہے کہ۔۔۔
احوال-
حامد كمال الدين
      کشمیر کاز، قومی استحکام، پختہ اندازِ فکر کی ضرورت حامد ۔۔۔
تنقیحات-
مشكوة وحى- علوم حديث
حامد كمال الدين
اناڑی ہاتھ درایت! صحیح مسلم کی ایک حدیث پر اٹھائے گئے اشکال کے ضمن میں حامد کمال الدین ۔۔۔
راہنمائى-
حامد كمال الدين
(فقه) عشرۃ ذوالحج اور ایامِ تشریق میں کہی جانے والی تکبیرات ابن قدامہ مقدسی رحمہ اللہ کے متن سے۔۔۔
کیٹیگری
Featured
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
Side Banner
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
احوال
وقائع
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اداریہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
اصول
عقيدہ
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
منہج
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ایقاظ ٹائم لائن
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
ذيشان وڑائچ
مزيد ۔۔۔
بازيافت
سلف و مشاہير
شيخ الاسلام امام ابن تيمية
حامد كمال الدين
ادارہ
مزيد ۔۔۔
باطل
فرقے
حامد كمال الدين
فرقے
حامد كمال الدين
فرقے
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
تنقیحات
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
ثقافت
معاشرہ
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
خواتين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
جہاد
دعوت
عرفان شكور
حامد كمال الدين
مزاحمت
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
راہنمائى
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
رقائق
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
اذكار و ادعيہ
حامد كمال الدين
مزيد ۔۔۔
فوائد
فہدؔ بن خالد
احمد شاکرؔ
تقی الدین منصور
مزيد ۔۔۔
متفرق
ادارہ
عائشہ جاوید
عائشہ جاوید
مزيد ۔۔۔
مشكوة وحى
علوم حديث
حامد كمال الدين
علوم قرآن
حامد كمال الدين
مریم عزیز
مزيد ۔۔۔
مقبول ترین کتب
مقبول ترین آڈيوز
مقبول ترین ويڈيوز